"ایک دن میں کورونا کے ڈیڑھ لاکھ کیسز،دنیا ایک خطرناک مرحلے میں داخل "

"ایک دن میں کورونا کے ڈیڑھ لاکھ کیسز،دنیا ایک خطرناک مرحلے میں داخل "

  

جنیوا(ڈیلی پاکستان آ ن لائن) عالمی ادارہ صحت  نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کے کیسز میں تیزی سے ہونے والے اضافے نے دنیا کو ایک خطرناک مرحلے میں داخل کردیاہے۔

عالمی ادارے کے سربراہ ڈاکٹر ٹیڈروس ادھانوم کاکہنا ہے کہ 18جون کو دنیا بھرمیں ڈیڑھ لاکھ کیسز سامنے آئے۔ ان کیسز میں نصف تعداد صرف امریکی براعظم کے ممالک میں سامنے آئی جب کہ ایشیا اور مشرق وسطیٰ میں بھی متاثرین کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔

جیو نیوز کے مطابق لاک ڈاون میں نرمی کے خطرات سے آگاہ کرتے ہوئے ٹیڈروس نے کہا کہ لوگ گھروں میں بیٹھ کر بیزار ہوگئے ہیں اور ممالک چاہتے ہیں کہ معاشرہ اور معیشت کھولیں مگر وہ یاد رکھیں کہ مہلک وائرس اب بھی تیزی سے پھیل رہا ہے۔

عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر جنرل نے کہا کہ یہی وجہ ہے کہ سماجی فاصلے کی ضرورت ہے۔

خیال رہے دنیا بھر میں اب تک 84 لاکھ سے زائد افراد کورونا سے متاثر ہو چکے ہیں جبکہ ہلاکتوں کی تعداد چار لاکھ 53 ہزار سے تجاوز کر چکی ہے۔

دنیا کا سب سے زیادہ متاثرہ ملک امریکہ ہے جہاں متاثرین کی تعداد 22 لاکھ کے لگ بھگ ہے جبکہ ایک لاکھ 18 ہزار سے زائد ہلاکتیں ہو چکی ہیں۔

برازیل دنیا میں متاثرین کی تعداد کے اعتبار کے بعد اب برطانیہ کو پیچھے چھوڑتے ہوئے اموات کی تعداد میں بھی دوسرے نمبر پر آ چکا ہے۔

چین کے دارالحکومت بیجنگ میں کورونا کی دوسری لہر کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔ یہاں ایک مارکیٹ اور دیگر علاقوں کو عارضی طور پر سیل کر دیا گیا ہے جہاں سے وائرس پھیلنے کا خطرہ ہے۔

یورپ میں بڑے پیمانے پر سماجی پابندیوں کا خاتمہ ہو چکا ہے جبکہ آسٹریلیا کے لاک ڈاؤن میں بھی مزید نرمی لائی گئی ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -