13 سال بعد سپریم کورٹ کے دوسرے جسٹس کیخلاف ریفرنس مسترد، قاضی فائز عیسیٰ سے پہلے کس جج کیخلاف کیا ریفرنس تھا جو خارج ہوا؟ وہ بات جو شاید آپ کو یاد نہیں

13 سال بعد سپریم کورٹ کے دوسرے جسٹس کیخلاف ریفرنس مسترد، قاضی فائز عیسیٰ سے ...
13 سال بعد سپریم کورٹ کے دوسرے جسٹس کیخلاف ریفرنس مسترد، قاضی فائز عیسیٰ سے پہلے کس جج کیخلاف کیا ریفرنس تھا جو خارج ہوا؟ وہ بات جو شاید آپ کو یاد نہیں

  

اسلام آباد (ویب ڈیسک) ایسا تیرہ سالوں میں دوسری مرتبہ ہوا ہے کہ سپریم کورٹ نے ایک اعلیٰ جج کے خلاف سپریم جوڈیشل کونسل (ایس جے سی) میں صدارتی ریفرنس اور کارروائیاں کالعدم قرار دے دیں۔

روزنامہ جنگ کی رپورٹ کے مطابق اس سے قبل 2007 میں جسٹس خلیل الرحمان رمدے کی سربراہی میں 14 رکنی بنچ نے اس وقت کے چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کے خلاف ریفرنس اور ایس جے سی کی کارروائی کو خارج کردیا تھا۔ افتخار چوہدری کو اس وقت کے صدر پرویز مشرف نے معطل کردیا تھا۔ عدالت عظمیٰ کے فیصلے نے انہیں بحال کرتے ہوئے فوجی آمر کو ایک بہت بڑا دھچکا لگایا تھا۔

دونوں ریفرنسزز کے ردعمل میں ایک مضبوط مماثلت یہ ہے کہ ناصرف متاثرہ جج بلکہ تمام پریمیئر بار ایسوسی ایشنز نے اس اقدام کو متنازع قرار دیتے ہوئے سپریم کورٹ میں پٹیشنز دائر کیں اور سازگار فیصلے حاصل کئے۔ تاہم اس سے قبل ایک طاقتور اسٹریٹ موومنٹ شروع کی گئی۔ اس مرتبہ وکلاءنے بھی احتجاج کیا۔ وکلاءتحریک کے بڑے رہنماﺅں میں سے ایک اور افتخار چوہدری کے وکیل منیر اے ملک نے اب جسٹس عیسیٰ کی نمائندگی کی ہے۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -