وزیر خارجہ نے مقبوضہ جموں و کشمیر میں بھارت کے مزید غیر قانونی اقدامات سے عالمی برادری کو خبردار کر دیا

وزیر خارجہ نے مقبوضہ جموں و کشمیر میں بھارت کے مزید غیر قانونی اقدامات سے ...
وزیر خارجہ نے مقبوضہ جموں و کشمیر میں بھارت کے مزید غیر قانونی اقدامات سے عالمی برادری کو خبردار کر دیا

  

اناطولیہ (ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے غیر قانونی طور پر بھارت کے زیر قبضہ جموں و کشمیر میں بھارت کے مزید غیر قانونی اقدامات سے عالمی برادری کو خبردار کر دیا اور کہاکہ وہ مقبوضہ جموں و کشمیر میں مزید غیر قانونی اقدامات اٹھانے سے باز رہے ، پاکستان غیر قانونی طور پر بھارت کے زیر قبضہ جموں و کشمیر کی مزید تقسیم کی کسی بھی بھارتی کوشش کی شدید مخالفت کرے گا ۔

تفصیلات کے مطابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے غیر قانونی طور پر بھارت کے زیر قبضہ جموں و کشمیر میں بھارت کے مزید غیر قانونی اقدامات سے عالمی برادری کو خبردار کر دیا اور کہاکہ بھارت غیر قانونی طور پر اپنے زیر قبضہ جموں و کشمیر میں مزید غیر قانونی اقدامات اٹھانے سے باز رہے ۔

ہفتہ کو اپنے ایک بیان میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہاکہ 5 اگست 2019 کو بھارت پہلے ہی اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل اور عالمی قانون کی خلاف ورزی کرکے یک طرفہ اور غیر قانونی اقدامات کر چکا ہے۔پاکستان نے 5 اگست 2019 کے یکطرفہ اور غیر قانونی بھارتی اقدامات کی تمام عالمی فورمز میں بھرپور مخالفت کی ہے ۔پاکستان غیر قانونی طور پر بھارت کے زیر قبضہ جموں و کشمیر کی مزید تقسیم کی کسی بھی بھارتی کوشش کی شدید مخالفت کرے گا ۔بھارت غیر قانونی طور پر بھارت کے زیر قبضہ جموں و کشمیر میں آبادی کا تناسب تبدیل کر کے کشمیریوں کو ان کی منفرد شناخت سے محروم کرنا چاہتا ہے ۔

انہوں نے کہاکہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے صدر اور سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ کو بھارت کے ممکنہ اقدامات کے بارے میں پیشگی خبردار کر دیا ہے، بھارت ہر طرح کے ظلم وجبر، استبداد اور 9 لاکھ قابض فوج کے باوجود کشمیریوں کو ان کے آزادی کے مطالبے سے دستبردار کرانے میں ناکام رہا ہے،ڈومیسائل قوانین میں تبدیلی سے کشمیری اکثریت کو اقلیت میں بدلنے کی بھارتی کوششیں اقوام متحدہ کے منشور، سلامتی کونسل کی متعلقہ قراردادوں اور چوتھے جینیوا کنونشن کی خلاف ورزی ہے ۔

شاہ محمود قریشی نے کہاکہ غیر قانونی طور پر بھارت کے زیر قبضہ جموں کشمیر کے عوام ان غیر قانونی یکطرفہ بھارتی اقدامات کو مسترد کر چکے ہیں ۔جنوبی ایشیا میں پائیدار امن و سلامتی تنازعہ جموں کشمیر کا اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں اور کشمیری عوام کی امنگوں کے مطابق حل ہونے سے ہی ممکن ہے ۔

مزید :

قومی -