مراد علی شاہ وفاقی حکومت کو پسند کیوں نہیں؟ مرتضیٰ وہاب نے بڑا دعویٰ کردیا

مراد علی شاہ وفاقی حکومت کو پسند کیوں نہیں؟ مرتضیٰ وہاب نے بڑا دعویٰ کردیا
مراد علی شاہ وفاقی حکومت کو پسند کیوں نہیں؟ مرتضیٰ وہاب نے بڑا دعویٰ کردیا

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن ) پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما اور ترجمان سندھ حکومت مرتضیٰ وہا ب نے کہا ہے کہ وفاقی حکومت صرف وزیر اعلیٰ مراد علی شاہ پر ہی تنقید کرتی رہتی ہے ، انہیں وزیرا علیٰ سندھ اس لئے برے لگتے ہیں کیوں کہ وہ سندھ کی بات کرتے ہیں اور صوبے کا حق مانگتے ہیں جبکہ حکومت کو وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزداراوروزیر اعلیٰ خیبر پختونخوامحمودخان اس لیے پسندہیں کیونکہ وہ خاموش رہتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مرتضیٰ وہا ب کا کہنا تھا کہ سندھ کوپیسے این ایف سی کے تحت ملتے ہیں،پی ٹی آئی کااحسان نہیں ،یہ نہیں ہوسکتاکہ سندھ کوآپ کونظراندازکریں اورباقی صوبوں کوترجیح دیں،ایم کیوایم اورجی ڈی اے نے سندھ کے عوام کاساتھ نہیں دیاہے۔

 ان کا کہنا تھا کہ فوادچودھری نے کہاسندھ میں آرٹیکل140اے کانفاذ ہوناچاہیے،پہلاوفاقی وزیرہے جس کافوکس صرف ایک صوبے پرہے،کراچی میں بلڈنگزکوکمرشلائزکرنےکافیصلہ2003اور2006میں ہواتھا،کیاآرٹیکل 140اے کانفاذصرف سندھ میں ہوناچاہیے باقی صوبوں میں نہیں؟؟۔

ترجمان سندھ حکومت کا کہنا تھا کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی )نے ایک وعدہ بھی پورانہیں کیا،ہروعدے پریوٹرن لیاہے،آئی ایم ایف نہ جانے کااعلان کیاگیاتھا مگر پھربھی یہ حکومت گئی،پی ٹی آئی نے اقتدارسے پہلے ایک کروڑنوکریوں اور50لاکھ گھروں کاخواب دکھایاتھا،پاکستان کی تاریخ میں پہلی بارہواہے کہ حکومتی اراکین نے بجٹ اجلاس میں احتجاج کیا،پچھلے ایک سال میں صرف گدھوں کی پیداوارمیں اضافہ ہواہے۔

مزید :

قومی -سیاست -علاقائی -سندھ -کراچی -