زکوٰۃ کا نظام ڈیجیٹلائز کرنے کیلئے تجاویز مرتب کی جائیں، وزیر اعظم آزاد کشمیر کی ہدایت

زکوٰۃ کا نظام ڈیجیٹلائز کرنے کیلئے تجاویز مرتب کی جائیں، وزیر اعظم آزاد ...
زکوٰۃ کا نظام ڈیجیٹلائز کرنے کیلئے تجاویز مرتب کی جائیں، وزیر اعظم آزاد کشمیر کی ہدایت

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

مظفر آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) 

وزیر اعظم آزادکشمیر سردار تنویر الیاس خان نے کہا ہے کہ جہاں زکوٰۃ اسلام کا ایک اہم ستون اور ہماری سالانہ بچت کو پاک کرنے کا ذریعہ ہے وہاں اس کی شفاف تقسیم بھی ایک بڑا چیلنج ہے جسے ایک مذہبی فریضہ سمجھ کر ادا کرنے کی ضرورت ہے۔ محکمہ زکوٰٰۃ فنڈز کی تقسیم کے نظام کو ڈیجیٹلائز یشن کی طرف منتقل کرنے کے لیے قابل عمل تجاویز مرتب کرے  تاکہ شفافیت اور جوابدہی کے ساتھ ساتھ اس عمل میں سیاسی مداخلت کا خاتمہ کیا جاسکے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے سیکریٹری  زکوٰۃ و عشر سردار جاویدایوب کی جانب سے دی جانے والے محکمانہ بریفنگ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔بریفنگ میں وزیر  حکومت چوہدری علی شان سونی، پرنسپل سیکرٹری سید شاہد محی الدین ،چیف ایڈمنسٹریٹر زکوٰۃ سردار خالد محمود خان بھی موجود تھے۔

وزیر اعظم آزادکشمیر نے  کہا کہ مقامی زکوٰۃ کمیٹیوں کے ذریعے مستحقین کو سال میں ایک بار دی جانے والی 3000روپے کی رقم بہت ناکافی ہے ، اسے بڑھا کر 8 سے 10 ہزار روپے کیا  جائے،جبکہ بیوگان کے لیے اس رقم کو 15000روپے کیا جائے۔ وزیر اعظم نے غریب اور یتیم بچیوں کے لیے 12000روپے پر مشتمل جہیز فنڈ کو ایک مذاق قرار دیتے ہوئے اسے 50000تک کرنے کا حکم دیا۔اس موقع پر  فیصلہ کیا گیا کہ انتظامی اخراجات میں کمی کے لیے صوابدیدی آسامیوں کو بتدریج ختم کیا جائے گا اور 326مستقل ملازمین کو بتدریج دوسرے محکمہ جات میں منتقل کیا جائے گا۔  وزیر اعظم نے حکام کو فنی تعلیم حاصل کرنے والے نادار طلبہ کے وظیفے اور مدارس کو دوگناکرنے کی ہدایت دیتے ہوئے یہ اعلان بھی کیا کہ حکومت مستند دینی مدارس کو براہ راست 40کروڑ کی سالانہ امداد بھی مہیا کرے گی۔