عید کے دنوں میں پنجاب بھر سے کتنے لاکھ ٹن آلائشیں اٹھائی گئیں اور کتنے ہزار سینٹری ورکرز مسلسل متحرک رہے۔۔۔؟ اہم تفصیلات سامنے آ گئیں

عید کے دنوں میں پنجاب بھر سے کتنے لاکھ ٹن آلائشیں اٹھائی گئیں اور کتنے ہزار ...
عید کے دنوں میں پنجاب بھر سے کتنے لاکھ ٹن آلائشیں اٹھائی گئیں اور کتنے ہزار سینٹری ورکرز مسلسل متحرک رہے۔۔۔؟ اہم تفصیلات سامنے آ گئیں

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور ( ڈیلی پاکستان آن لائن )صوبائی وزیراطلاعات و ثقافت عظمیٰ زاہد بخاری اور وزیر بلدیات ذیشان رفیق نے کہا ہے کہ عید کے تینوں ایام میں انتھک محنت اور عزم کے ساتھ کام کر کے عوام کو متعفن ماحول سے محفوظ رکھا گیا۔ وزیراعلیٰ مریم نواز  کی قیادت کا یہ کرشمہ سب نے اپنی آنکھوں کے ساتھ دیکھا۔ عید کے دنوں میں پنجاب بھر سے 18 لاکھ ٹن آلائشیں اٹھائی گئیں اور 55 ہزار سے زائد سینٹری ورکرز مسلسل متحرک رہے۔
     وہ آج ڈی جی پی آر میں عید صفائی آپریشنز کے حوالے سے مشترکہ پریس کانفرنس کر رہے تھے۔ وزیر اطلاعات عظمی زاہد بخاری نے کہا کہ  عید کے دنوں میں صرف صفائی پر توجہ نہیں دی گئی بلکہ وزیراعلیٰ کی ہدایت پر ٹرانسپورٹ کرایوں میں اوورچارجنگ کی روک تھام بھی یقینی بنائی گئی۔ محکمہ ٹرانسپورٹ کے حکام اور متعلقہ ضلعی انتظامیہ نے صوبہ بھر میں مسافروں کو اضافی وصول کئے گئے 14لاکھ 67 ہزار روپے واپس کرائے۔ اوورچارجنگ پر 27 لاکھ 85 ہزار روپے جرمانہ عائد کیا گیا۔ 1448 گاڑیوں کے چالان ہوئے اور 9 افراد کے خلاف مقدمات درج کئے گئے۔ انہوں نے یقین دلایا کہ عید کے بعد بھی یہ عمل جاری رہے گا۔ پنجاب حکومت نئے کرایہ ناموں کے حوالے سے جو نوٹیفکیشن جاری کرے گی اس پر 100فیصد عملدرآمد یقینی بنایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب بڑا صوبہ ہے اور کئی اقدامات میں اس کی تقلید کی جاتی ہے۔ پنجاب میں جب بھی  مسلم لیگ (ن)کی حکومت آتی ہے تو اسے ایسا وزیر اعلیٰ ملتا ہے جو ترقی کے ریکارڈ قائم کرتا ہے اور دیگر اس کی تقلید کرتے ہیں۔ عید کے 3 دنوں میں صفائی کے حوالے سے صوبائی وزیر بلدیات اور ان کی پوری ٹیم نے شاندار کام کیا ہے۔ محکمہ بلدیات نے پنجاب کے عوام کو تعفن زدہ ماحول سے محفوظ کیا جس پر پورا محکمہ خراج تحسین کا مستحق ہے۔ وزیر اعلیٰ مریم نوازنے ثابت کر دیا ہے کہ وہ جو اعلان کرتی ہیں اس پر عملدرآمد بھی یقینی بناتی ہیں اور مخالفین بھی اس بات کو تسلیم کرتے ہیں۔ 
    صوبائی وزیر اطلاعات و ثقافت عظمیٰ زاہد بخاری نے کہا کہ پنجاب کی وزیراعلیٰ  نے  پہلے 100دنوں میں ثابت کر دیا ہے کہ وہ عوام کی بہتری کے لئے جاری کئے گئے اپنے احکامات پر عملدرآمد کرانا بھی جانتی ہیں۔ عید پر صفائی پر زیرو ویسٹ، سستی روٹی، کرایوں میں کمی اور مہنگائی میں کمی جیسے اقدامات آج سے پہلے کبھی نہیں ہوئے۔  پنجاب میں خوشحالی اور ترقی کا سفر جاری و ساری رہے گا۔ کچھ لوگ اپنے صوبے میں ترقی تو نہیں کراسکے لیکن پنجاب کی ترقی دیکھ کر انہیں تکلیف ہو رہی ہے۔ خیبرپختونخوا کے وزیراعلیٰ کو ٹارزن یا مولا جٹ بن کر گرڈ اسٹیشن میں بجلی بند کرنے کی بجائے صوبے میں بجلی چوری کی روک تھام کے اقدامات کرنے چاہئیں۔ وہ اپنے صوبے کے عوام کا بھلا نہیں کرسکتے تو دھمکیاں بھی نہ دیں۔ جو بجلی استعمال کرے گا اسے بجلی کے بل بھی دینا ہونگے۔ گرڈ اسٹیشن بند کرنا 2014ء کے دھرنے کا پارٹ ٹو لگتا ہے۔ آپ کو تو کے پی کے لوگوں پر ترس نہیں آتا مگر ہمیں ان کا خیال ہے۔ خیبر پختونخوا میں بھی ترقی ہونی چاہیے اور مہنگائی میں کمی آنی چاہیے۔ تاہم بدقسمتی سے کے پی کے عوام کو مریم نوازشریف جیسی قیادت میسر نہیں ہے۔
     ایک سوال پر صوبائی وزیر نے کہا کہ احتجاج کرنا نرسوں کا حق ہے تاہم غلط انجکیشن سے معصوم بچوں کی ہلاکت کو بھی نظرانداز نہیں کیا جاسکتا۔ لوگ ہسپتالوں میں علاج کے لئے جاتے ہیں مرنے کے لئے نہیں۔کسی کی غفلت سے اگر کسی کی جان چلی جائے تو اسے برداشت نہیں کیا جا سکتا ہے۔ 
    پریس کانفرنس کے دوران وزیر بلدیات ذیشان رفیق نے عید آپریشنز کی تفصیل بتاتے ہوئے کہا کہ وزیراعلیٰ مریم نواز  کے ”ستھرا پنجاب“ ویژن کے مطابق پورے صوبے میں عیدالاضحیٰ کے موقع پر تاریخی کام کیا گیا۔ عید سے پہلے پنجاب بھر میں قربانی کے جانوروں کے 294 سیل پوائنٹس قائم کئے گئے جہاں محکمہ بلدیات کی جانب سے شہریوں اور بیوپاریوں کو مفت خدمات مہیا کی گئیں۔ اس کے ساتھ غیرقانونی سیل پوائنٹس کی سختی سے حوصلہ شکنی کی گئی۔ محکمہ لوکل گورنمنٹ کے صوبائی کنٹرول روم اور ایل ڈبلیو ایم سی کے کنٹرول روم میں موصول ہونے والی 38 ہزار شکایات پر سوفیصد ازالہ کیا گیا۔ حکومت کی جانب سے 32 لاکھ ماحول دوست بیگ تقسیم کئے گئے۔ 11 ہزار سے زائد گاڑیاں دن رات صفائی کے کام میں مصرف رہیں جبکہ سڑکوں کو عرق گلاب اور فینائل کے ساتھ دھویا گیا۔  وزیراعلیٰ  کے ساتھ مسلم لیگ(ن) کے قائد نواز شریف کا حکومت چلانے کا 40 سالہ تجربہ بھی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ محض چند ماہ کے اندر پنجاب کے عوام کو وہ سب کچھ دیکھنے کو مل رہا ہے جو پہلے کبھی نہیں ہوا۔
     ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ پنجاب کیٹل مارکیٹنگ کمپنی کے تحت سیل پوائنٹس پر فیس سابق حکومت میں لاگو کی گئی تھی حالانکہ وزیراعلیٰ شہباز شریف کے دور میں یہ خدمات بالکل مفت تھیں۔ ہم دوبارہ یہ فیس ختم کرنے کے اقدامات کریں گے۔ صوبہ بھر میں صفائی کا یکساں نظام رائج کیا جائے گا جس سے روزگار کے 1 لاکھ سے زائد مواقع پیدا ہوں گے۔ ایک اور سوال پر انہوں نے بتایا کہ وزیراعلیٰ مریم نواز نے حکومت سنبھالتے ہی بلدیاتی انتخابات پر کام شروع کیا۔ انہوں نے میری سربراہی میں ایک کمیٹی تشکیل دی جس نے کافی کام مکمل کر لیا ہے۔ بلدیاتی انتخابات کا جلد از جلد انعقاد یقینی بنایا جائے گا۔