بدعنوانی معاشرے میں رچ بس گئی، موثر احتسابی نظام اقتصادی ترقی کے لئے ناگزیر ہے :چیئرمین نیب قمر الزمان چوہدری

بدعنوانی معاشرے میں رچ بس گئی، موثر احتسابی نظام اقتصادی ترقی کے لئے ناگزیر ...
بدعنوانی معاشرے میں رچ بس گئی، موثر احتسابی نظام اقتصادی ترقی کے لئے ناگزیر ہے :چیئرمین نیب قمر الزمان چوہدری

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) قومی احتساب بیورو کے چیئرمین قمرالزمان چوہدری نے کہا ہے کہ بدعنوانی ہمارے معاشرے میں رچ بس گئی ہے اور بدعنوانی تمام برائیوں کی جڑ ہے جس کی وجہ سے اقر باپروری اور ذاتی پسند اور ناپسند جیسے متفرق مسائل جنم لے رہے ہیں ،جس سے میرٹ ، شفافیت اور خوداحتسابی کی نفی ہوتی ہے۔

نیب کے نئے بھرتی ہونے والے 104تفتیشی افسران سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ قومی احتساب بیورو کو بدعنوان عناصر سے لوٹی ہوئی رقوم واپس کرنے اور مربوط انداز میں بدعنوانی کے خاتمے کیلئے قائم کیا گیا ہے۔ اس پس منظر میں قومی احتساب بیورو اپنے مشن کو مکمل کرنے کیلئے کوششیں کر رہا ہے تاکہ قوم کو بدعنوانی اور بدعنوان عناصر سے نجات مل سکے۔ انہوں نے کہا کہ نیب نے روز اول ہی سے بدعنوانی کے خلاف اپنی جنگ میں قوت ارادی کو اختیار کیا ، پائیدار اور طویل مدت بنیادوں پر بدعنوانی پر قابو پانے کیلئے وسیع وژن ، بصیرت اور کثیر الجہتی حکمت عملی درکار ہوتی ہے جو آگاہی اور بدعنوانی کی روک تھام کیلئے اضافی قوت کا مجموعہ ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نوجوان پاکستان کا مستقبل ہیں اس لئے نیب نے آبادی کے اس طبقے پر خصوصی توجہ مرکوز کی گئی ہے، ملک بھر کے تعلیمی اداروں میں بدعنوانی کے خلاف موثر قوت تیار کرنے کیلئے کریکٹر بلڈنگ سوسائٹی کا قیام عمل میں لایا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں امید ہے کہ نوجوان اراکین اس انسداد بدعنوانی کا پیغام اپنے گھروں، گلی محلوں اور بستیوں تک لے کر جائیں گے۔ چیئرمین نیب نے کہا کہ سرکاری دفتر صرف مذین شدہ کمرہ نہیں جہاں فائلیں رکھیں، اکٹھی کریں اور روزانہ کی ڈاک پر دستخط کریں۔ بلکہ یہ ایک ہماری ذمہ داری ہے جو ریاست نے آپ کے کندھوں پر ڈالی ہے، یہ ذمہ داری آپ سے تقاضہ کرتی ہے کہ آپ عوام کی امانت کی پاسداری کیلئے بھرپور کوششیں کریں جس کیلئے ضروری ہے کہ آپ اپنے فیصلے کے اختیار کے ذریعے ریاست کو پہنچائیں۔ یہ ذمہ داری آپ سے جوش وجذبے کا مطالبہ کرتی ہے اور ان سب سے بڑھ کر جب آپ نیب کیلئے کام کر رہے ہیں تو یہ آپ سے غیر جانبداری ، شفافیت اور منصفانہ سلوک کا تقاضا کرتی ہے اور یہی وجہ ہے کہ سات ماہ کا عرصہ آپ کی تربیت کیلئے صرف کیا گیا تاکہ آپ اپنی بہترین پیشہ وارانہ صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے اپنے فرائض سرانجام دے سکیں۔ چیئرمین نیب نے کہا کہ قومی احتساب بیورو نے نیب افسران، پراسیکیوٹر اور فیلڈ کے عملے کی کارکردگی کی موثر نگرانی کیلئے خود کام م کی نگرانی کا نظام تشکیل دے رکھا ہے۔

مزید :

قومی -