پی آئی سی سے برطرففارماسسٹ ساتھیوں سمیت سڑکوں پر،ادویہ کمپنی کا ٹھیکہ منسوخ کرنے کا مطالبہ

پی آئی سی سے برطرففارماسسٹ ساتھیوں سمیت سڑکوں پر،ادویہ کمپنی کا ٹھیکہ منسوخ ...

لاہور(جنرل رپورٹر) عدالت عالیہ سے نظر ثانی کی اپیل مسترد ہونے کے بعد پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی سے برطرف فارماسسٹ دیگر ساتھیوں کے ہمراہ سڑکوں پر آ گئی ۔ عدالت نے اپیل کا فیصلہ دیتے ہوئے محکمہ صحت سے رجوع کرنے کا حکم جاری کیااور اپنے حکم میں کہا کہ کیس کی محکمہ صحت تحقیقات کرے جس کے خلاف فارماسسٹ نے نظر ثانی کی اپیل دائر کی جسے عدالت نے خارج کر دیا اس کے خلاف گزشتہ روز فارماسسٹ نے دیگر ساتھیوں اور فارماسسٹ ایسوسی ایشن کے ہمراہ پی آئی سی کے باہر احتجاج کیا اس موقع پر ایسوسی ایشن کے رہنما ؤں مہر نور چودھری مشتاق اور ضیا الحق نے کہا کہ پی آئی سی کو زائد قیمتوں پر مسلسل ادویات فراہم کرنے والی ٹھیکیدار فرم ڈیسنٹ کا ٹھیکہ منسوخ کر کے اسے بلیک لسٹ قرار دیا جائے ۔مظاہرین نے ڈیسنٹ نامی فرم کے خلاف بینر اٹھا رکھے تھے جن پر شرم کرو حیاکرو ،لوٹ مار بند کرو جیسے نعرے درج تھے ۔مظاہرین نے مطالبہ کیا کہ ملازمت سے برطرف فارماسسٹ کو بحال کیا جائے کیس کی آزادانہ تحقیقات کروائی جائیں اس حوالے سے پی آئی سی کے ترجمان نے کہا کہہ فریحہ مجید کی بحالی کی رٹ عدالت عالیہ مسترد کر چکی ہے ۔عدالت کے حکم پر کیس کی محکمہ صحت تحقیقات کررہا ہے اسے میں ہسپتال انتظامیہ اسے بحال کر کے توہین عدالت نہیں کر سکتی ۔اسے عارضی بنیادوں پر رکھا گیا تھا اس حوالے سے فریحہ مجید کا موقف تھا کہ ایل پی میں ادویات فراہم کرنے والی ڈیسنٹ نامی کمپنی نے لوٹ مار کا بازار گرم کر رکھا ہے اس کی اوور چارجنگ سامنے لانے پر اس کو برطرف کیا گیا اس کمپنی کو بلیک لسٹ قرار دیا جائے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1