ایڈمن افسران آپریشن پولیس کی معاونت کریں،امین وینس

ایڈمن افسران آپریشن پولیس کی معاونت کریں،امین وینس

لاہور( کرائم رپورٹر)سی سی پی او لاہور کیپٹن (ر)محمد امین وینس نے کہا ہے کہ تھانوں میں تعینات تمام ایڈمن افسرقتل ، اغوا ، ڈکیتی سمیت دیگر سنگین مقدمات میں ملوث اشتہاری ملزموں کی گرفتاری کے لئے آپریشنز اور انویسٹی گیشن کے تھانیداروں اور کانسٹیبلوں کی بھرپور معاونت کریں اور جن اشتہاریوں کے شناختی کارڈز اور موبائل نمبرز دستیاب ہیں جیو فینسنگ اور سی ڈی آرکے ذریعے ان کے ٹھکانوں کے حوالے سے معلومات حاصل کرکے نہ صرف ریڈنگ ٹیمز کو دیں بلکہ ریڈ پلان میں بھی ان کی ہر ممکن معاونت کریں ۔ انہوں نے کہا کہ جس تھانے کا ایڈمن افسر A کیٹگری یعنی سنگین مقدمات میں ملوث اشتہاری کو گرفتار کرائے گا اسے تعریفی سند کے ساتھ ساتھ نقد انعام بھی دیا جائے گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس بات پر خاص توجہ رکھی جائے کہ ایڈمن افسر جو اشتہاری گرفتار کروائیں متعلقہ ایس پی کے علم میں لا کر اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ اس کی تفتیش درست انداز میں ہو۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پولیس لائنز قلعہ گجر سنگھ میں ایڈمن افسران کی ہفتہ وار میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ایس ایس پی انویسٹی گیشن حسن مشتاق سکھیرا،ایس ایس پی سی آئی اے محمد عمر ورک اور ایس پی سی آر او بھی موجود تھے ۔سی سی پی او نے کہا کہ کرائے داروں کی رجسٹریشن کے لئے استعمال ہونے والے فارم میں کرایہ دار فیملی کے تمام مرد اور خواتین کے نام اور شناختی کارڈنمبر کے اندراج کو یقینی بنایا جائے ۔کیونکہ اکثر اشتہاری ملزم اپنے نام کی بجائے اپنی بیوی ،بیٹے یا بھائی کے نام پر کرایہ داری کا فارم پُر کر کے باآسانی شہر میں کرایہ دار کی صورت میں روپوش ہو جاتے ہیں ۔محمد امین وینس نے اس موقع پر ایس ایس پی انویسٹی گیشن حسن مشتاق سکھیراکو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ انویسٹی گیشن کے ایڈمن افسروں کو معمولی جرائم کے مقدمات کی تفتیش دینا شروع کریں اور کچھ عرصے بعد انہیں سنگین جرائم کے مقدمات کی تفتیشیں بھی دیں جائیں اور تفتیش کا تجربہ حاصل کرنے کے بعد انہیں مختلف تھانوں میں بطور انچارج تعینات کیا جائے۔ ان کامزید کہناتھاکہ تھانوں میں شہریوں کے ساتھ شائستہ رویہ رکھنے اور شہریوں کے مسائل ذاتی دلچسپی لے کر حل کروانے پر سی سی پی او نے ایڈمن افسر غالب مارکیٹ ، ایڈمن افسر مزنگ، ایڈمن افسر سندر سمیت 7 تھانوں کے ایڈمن افسروں کو پانچ پانچ ہزار روپے نقد انعام اور تعریفی سند دینے کا بھی حکم دیا۔

مزید : علاقائی