پیپلز پارٹی کو پرویز مشرف کے باہر جانے پر اعتراض نہیں ، واپسی بارے خدشات ہیں ، خورشید شاہ

پیپلز پارٹی کو پرویز مشرف کے باہر جانے پر اعتراض نہیں ، واپسی بارے خدشات ہیں ...

 سکھر(اے این این) قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے کہا ہے کہ پیپلز پارٹی کو پرویز مشرف کے باہر جانے پر اعتراض نہیں،ان کی واپسی بارے خدشات ہیں ،سابق صدر واپس نہ آئے تو ذمہ دار حکومت ہو گی،پرویز مشرف پر آرٹیکل6کے ساتھ ساتھ بے نظیر بھٹو کے قتل کا بھی الزام ہے،میں یہ نہیں کہہ سکتا کہ حکومت نے مشرف کے معاملے پر کوئی ڈیل کی ہے یا وہ دباؤ میں تھی،ہم نے پی آئی اے کے معاملے پر حکومت کے ساتھ کوئی مک مکاؤ نہیں کیا معاملے کا ایسا حل چاہتے ہیں جس سے قومی ایئر لائن کو نقصان نہ ہو۔ سکھر میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے خورشید شاہ نے کہا کہ سکھر میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ مشرف کے باہر جانے پر پیپلزپارٹی کو کوئی اعتراض نہیں لیکن اعتراض صرف یہ کہ مشرف پر آرٹیکل 6 کے ساتھ بے نظیر بھٹو شہید کے قتل کا بھی الزام ہے،ہمیں کی واپسی کے حوالے سے خدشات ہیں اور اگر سابق صدر واپس نہ آئے تو اس کی ذمہ دار موجودہ حکومت ہو گی۔انھوں نیھ کہا کہ خواجہ سعد رفیق ٹھیک کہتے ہیں کہ مشرف گلے کا کانٹا بنے ہوئے تھے کیونکہ حکومت کے گلے میں اب تک کانٹوں کے نشان نظر آرہے ہیں۔ جب ان سے پوچھا گیا کہ کیا حکومت کسی دباؤ میں تھی یا پرویز مشرف کو کسی ڈیل کے تحت جانے دیا گیا ہے ،خورشید شاہ نے کہا کہ میں کون ہوتا ہوں جو یہ کہوں کہ حکومت نے کوئی ڈیل کی ہے یا وہ کسی دباؤ میں تھی ۔ہم دعا گو ہیں کہ جمہوریت پر کوئی مک مکا نہ ہو۔ سپریم کورٹ نے کہا تھا کہ پرویز مشرف کو باہر جانے کی اجازت دینے کا فیصلہ کرنا حکومت کا کام ہے۔ عدالتی فیصلہ آتے ہی اسپتال میں آکسیجن بھی اتر گئی۔اپوزیشن لیڈر نے مزید کہا کہ پرویز مشرف نے نواز شریف کی جمہوری حکومت ختم کی تھی، سابق صدر سمیت آئین توڑنے کے تمام ذمہ داروں پر آرٹیکل سکس لگنا چاہئے۔ انہوں نے کہاکہ پی آئی اے نجکاری بل کے حوالے سے حکومت سے کوئی مک مکا نہیں ہوا،چاہتے ہیں کہ پی آئی اے کا مسئلہ ایسے حل ہو جس میں قومی ائیرلائن کو نقصان نہ ہو، دعا ہے میچ پاکستان جیتے،کرکٹ کو سیاست نہیں سمجھتے۔ میں کون ہوتا یہ کہنے والا کہ کوئی ڈیل ہوئی ہے یا حکومت دباؤ میں تھی البتہ واپس نہ آئے تو ذمہ دار حکومت ہوگی۔

مزید : صفحہ اول