داعش کا باغی نوجوان امریکی مسلم عراق سے گرفتار

داعش کا باغی نوجوان امریکی مسلم عراق سے گرفتار
داعش کا باغی نوجوان امریکی مسلم عراق سے گرفتار

  

واشنگٹن (اظہر زمان، بیورو چیف) داعش سے تعلق رکھنے والے نوجوان امریکی مسلمان نے تسلیم کیا ہے کہ اس نے ایک نوجوان لڑکی کے پیچھے لگ کر اس دہشت گرد تنظیم میں شمولیت کا ایک غلط فیصلہ کیا۔ فلسطینی نژاد جمال خواص کو عراق میں کرد جنگجوؤں نے گرفتار کیا جس کے بعد اس نے کرد ریڈیو سٹیشن پر انٹرویو دیتے ہوئے اپنی اس غلطی پر معذرت کی تھی۔ 26 سالہ جمال کا تعلق امریکی ریاست ورجینیا کے شہر الیگزینڈیا سے ہے جو ترکی میں ایک نوجوان لڑکی سے ملا جس کی ترغیب پر وہ داعش میں شامل ہوکر اس دہشت گرد تنظیم کے قبضے والے عراقی شہر موصل چلا گیا جہاں ایک جھڑپ کے دوران کردوں نے اسے پکڑلیا۔ امریکی ٹیلی ویژن این بی سی نے یہ خبر دیتے ہوے بتایا کہ اس امریکی نوجوان کو ریکروٹ کرنے کے بعد اس خاتون نے اسے شام بھجوانے کا بندوبست کیا۔ اس کے بعد وہ عراق میں داعش کے مقبوضہ شہر منتقل ہوگیا۔ خواص نے انٹرویو میں بتایا کہ اس خاتون کی بہن نے داعش کے ایک دہشت گرد سے شادی کر رکھی ہے۔ وہ خاتون ایک بس کے ذریعے اسے ترکی کی سرحد سے پار کرکے شام میں لے گئی۔ وہاں انہوں نے جس گھر میں قیام کیا وہاں ایشیائی اور روسی باشندے بھی ٹھہرے ہوئے تھے۔ امریکی حکام نے این بی سی ٹیلی ویژن کو بتایا ہے کہ داعش نے نئی بھرتی کیلئے نوجوان لڑکیوں کی خدمات حاصل کر رکھی ہیں۔ داعش کو جلد اپنی غلطی کا احساس ہوگیا تھا اور وہ فرار کے موقع کا متلاشی رہا جو کردوں نے اسے فراہم کردیا۔ خواص کا کہنا ہے کہ یہ دہشت گرد اس کے خیال میں اچھے مسلمان نہیں ہیں۔

مزید :

صفحہ آخر -