جواہر لعل یونیورسٹی کیس:نئی دہلی کی عدالت نے پروفیسر گیلانی کوضمانت پر رہا کر دیا،کنہیا کمار پر غداری کا دوسرا مقدمہ

جواہر لعل یونیورسٹی کیس:نئی دہلی کی عدالت نے پروفیسر گیلانی کوضمانت پر رہا ...
جواہر لعل یونیورسٹی کیس:نئی دہلی کی عدالت نے پروفیسر گیلانی کوضمانت پر رہا کر دیا،کنہیا کمار پر غداری کا دوسرا مقدمہ

  

نئی دہلی (ویب ڈیسک) نئی دہلی کی عدالت نے غداری کیس میں گرفتار جواہر لعل یونیورسٹی کے سابق پروفیسر ایس ا ے آر گیلانی کو بھی بالاخر ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دیدیا۔

روزنامہ پاکستان کی خبریں اپنے ای میل آئی ڈی پر حاصل کرنے اور سبسکرپشن کیلئے یہاں کلک کریں۔

نوائے وقت کے مطابق واضح رہے کہ پروفیسر گیلانی کیخلاف نئی دہلی کے انڈیا پریس کلب میں کشمیری حریت پسند افضل گورو کی تیسری برسی پر تقریب منعقد کرانے اور بھارت مخالف تقاریر پر 2 ماہ قبل مقدمہ درج کیا تھا، انکے ساتھ ساتھ پولیس نے دہلی یونیورسٹی کے پروفیسر اور پریس کلب کے رکن پروفیسر علی جاوید سے بھی اس تقریب کے انعقاد پر پوچھ گچھ کی تھی تاہم 2 ماہ کے دوران پولیس حکام غداری کے الزامات ثابت نہ کر پائے جس کی وجہ سے میٹروپولیٹن مجسٹریٹ نے پروفیسر گیلانی کی ضمانت منظور کرلی۔ رات گئے انہیں جیل سے رہا کردیا گیا جبکہ گزشتہ رات جواہر لعل نہرو یونیورسٹی کے 2 طلبہ عمر خالد اور انریان بھٹا چاریہ کو بھی ضمانت پر رہا کر دیا گیا تھا، ان کیخلاف بھی غداری کا مقدمہ درج ہے۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائڈ موبائل ایپ ڈاو¿ن لوڈ کرنے کیلئے یہاں کلک کریں۔

دریں اثنا انتہا پسند ہندو تنظیم بجرنگ دل ”بلندشہر“ اترپردیش کے رہنما ہمینت کی درخواست پر پولیس ن صدر طلبا یونین جواہر لعل یونیورسٹی نئی دہلی کہنیا کمار کیخلاف بھارتی افواج کی توہین کرنے کے الزام میں غداری کا مقدمہ درج کرلیا۔

کہیں کا نہیں چھوڑا، قندیل بلوچ نے ’ٹریلر‘ جاری کرنے کی وجہ بتادی

ہمینت نے درخواست میں الزام لگایا کہ کنہیا کمار نے عالمی یوم خواتین کے موقع پر جواہر لعل یونیورسٹی میں طالبات سے خطاب کرتے ہوئے بھارتی فوج پر مقبوضہ کشمیر میں خواتین سے ریپ کا بے بنیاد الزام لگایا جو فوجیوں کی توہین ہے اور یہ ملک دشمنی کے مترادف ہے اس لئے غداری کا مقدمہ درج کیا جائے۔

اولاد کے بد ترین تشدد سے تنگ آئی ماں نے دارالامان میں پناہ لے لی

بلند شہر کی سیشن عدالت اس مقدمے کی سماعت 28 مارچ سے شروع کریگی۔ واضح رہے کہ کہنیا کمار کو کچھ عرصہ پہلے غداری کے مقدمے میں ضمانت پر رہا کیا تھا۔

مزید : بین الاقوامی