قانون کی بالا دستی‘ فرقہ واریت کاخاتمہ

قانون کی بالا دستی‘ فرقہ واریت کاخاتمہ

حیدرآبادتھل ( نمائندہ پاکستان )حکمرانوں نے تعلیم کو(بقیہ نمبر19صفحہ12پر )

کمرشلائز بنادیا ہے صحت کی صورتحال بھی ابتر ہے آپریشن رد الفساد سے ملک میں امن و امان کی بہتری ہورہی ہے ملک میں قانون کی بالا دستی سے ہی فرقہ واریت اور معاشی ناہمواری کا خاتمہ ہوگا،مقدس مقامات کی توہین کرنا جرم ہے کسی کو بھی ایک دوسرے کے جذبات مجروح نہیں کرنے چائیں میں اتحاد بین المسلمین کا داعی ہوں،ان خیالات کااظہارقائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے مدرسہ جامعہ کاظمیہ حیدرآبادتھل میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے مزید کہا کہ قانون پرعمل درآمد نہیں ہورہا بلکہ چور را ستے نکال لئے گئے ہیں جس سے امیر امیر تر اورغریب غریب تر ہورہے ہیں غربت کی حد انتہائی تشویشناک حالت تک پہنچ گئی ہے آ ج بھی اگر ملک میں قانون کی بالا دستی قائم ہوجائے تو ملک میں فرقہ واریت اور معاشی نا ہمواری کاخاتمہ ہو سکتا ہے اس نا ہمواری نے ملک میں کلچرو ثقافت کو تباہ کر دیا ہے ، کانفرنس میں مولانا قلب محمد علی شہانی صد ر شیعہ علما ء کونسل بھکر ،سید سکندر رضا نقوی، نائب صدر شیعہ علماء کونسل پنجاب مولانا سید مہدی کاظمی پرنسپل جامعہ کاظمیہ مولانا عرفان حیدرنقوی، پرنسپل جامعہ علی بن ابی طالب حاجی عاشق حسین ممٹر، ماسٹر صابر حسین ممٹر، اور اس کے علاوہ بھی علماء کرام ومعززیں علاقہ نے شرکت کی ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر