بڑے اسلامی ملک پر اسرائیلی فوج کے پے در پے حملے، انتہائی خطرناک صورتحال پیدا ہوگئی

بڑے اسلامی ملک پر اسرائیلی فوج کے پے در پے حملے، انتہائی خطرناک صورتحال پیدا ...
بڑے اسلامی ملک پر اسرائیلی فوج کے پے در پے حملے، انتہائی خطرناک صورتحال پیدا ہوگئی

  

دمشق(مانیٹرنگ ڈیسک) شام کا محاذ دنیا بھر کی افواج کا اکھاڑہ بنا ہوا ہے جس میں اب اسرائیل نے بھی حصہ لینا شروع کر دیا ہے، جس سے خطے میں نئی جنگ کا خطرہ منڈلانے لگا ہے۔ ٹائمز آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق اسرائیل، جواپنے ہمسائے میں ہونے والی شام کی جنگ سے اب تک لاتعلق نظر آر ہا تھا، نے گزشتہ 24گھنٹوں میں شامی سرزمین پر دو حملے کر دیئے ہیں۔تین دن میں وہ شام پر تین حملے کر چکا ہے۔ شامی میڈیا کی رپوٹس میں بتایا گیا ہے کہ ’پیر کے روز اسرائیلی جنگی طیاروں نے لبنان کے بارڈر کے قریب شام کی حدود میں کئی ٹارگٹس کو نشانہ بنایا۔ اس دوران انہوں نے حزب اللہ کے ہتھیار لیجانے والے قافلے اور شامی فوجی اڈوں پر بھی بم برسائے۔ ‘

اسرائیل کے حوالے سے صدر ٹرمپ کا ایسا فیصلہ کہ خود امریکی عوام بھی غش کھا کر گر جائیں گے، صہیونی یہودی خوشی سے نہال

رپورٹس کے مطابق دوسرے حملے میں ڈرون طیارے کے ذریعے مختلف جگہوں کو نشانہ بنایا گیا جبکہ تیسرے حملے میں شام کی گولان کی پہاڑیوں میں میزائل پھینکے گئے۔جواب میں شام کی فوج نے بھی اسرائیل حملہ کیا۔ اقوام متحدہ میں شامی مندوب بشار الجعفری کا کہنا تھا کہ ”شامی فوج کی طرف سے اسرائیلی حملوں کے جواب میں کیا جانے والا حملہ گیم چینجر تھا۔ شامی فوج نے اسرائیل کے دہشت گردانہ آپریشن کاانہی کے انداز میں، مناسب جواب دیا ہے۔ اب اسرائیل شام پر حملہ کرنے سے قبل 10لاکھ بار سوچے گا۔“

واضح رہے کہ بشارالجعفری کا یہ بیان اسرائیلی وزیردفاع کے اس بیان کے چند گھنٹے بعد سامنے آیا جس میں انہوں نے شام کو دھمکی دی تھی کہ ”اسرائیل شام کے ایئرڈیفنس سسٹمز کو تباہ کر دے گا کیونکہ وہ اسرائیلی جنگی طیاروں کو نشانہ بنانے میں استعمال ہو رہے ہیں۔آئندہ شام نے ان سسٹمز کو اسرائیل کے خلاف استعمال کیا تو ہم انہیں تباہ کرنے میں بالکل نہیں ہچکچائیں گے۔“

مزید : بین الاقوامی