کرونا وائرس کا شبہ‘ ڈاکٹر اور نرس میں بھی نشتر داخل

کرونا وائرس کا شبہ‘ ڈاکٹر اور نرس میں بھی نشتر داخل

  



ملتان‘بہاولپور‘رحیم یار خان (نیوز رپورٹر‘ کورٹ رپورٹر‘ سٹاف رپورٹر‘ س ٹی رپورٹر‘ ڈسٹرکٹ رپورٹر‘ بیورو رپورٹ) کرونا وائرس کے شبہ میں مزید 2مریض نشتر داخل کردئیے گئے، ملتان میں قائم قرنطینہ میں آنیوالے 1247زائرین کی میزبانی کے انتظامات مکمل کرلیے گئے۔ حکومت کی ہدایت پر شہریوں کو سہولت کیلئے سرکاری دفاتر میں فوکل پرسن مقرر کردئیے گئے تعلیمی (بقیہ نمبر6صفحہ12پر)

اداروں میں چھٹیاں بڑھنے کاہوٹل، ریزارٹ اورتفریحٰ مقامات کو 31مارچ تک بند کرنے کا فیصلہ، اسلامی یونیورسٹی ہاسٹل پر زائرین کی منتقلی پر طلبا کے والدین کا احتجاجی مظاہرہ‘ تفصیل کے مطابق کورونا وائرس کے شبہ میں نشتر ہسپتال کے ڈاکٹر اور نرس سمیت دو اور مریض نشتر ہسپتال داخل،شبہ میں زیر علاج مریضوں کی تعداد چار ہو گئی،ڈاکٹروں کی جانب سے نشتر ہسپتال انتظامیہ پر عدم اعتماد کا اظہار،تفصیل کے مطابق نشتر ہسپتال شعبہ امراض سینہ کے پوسٹ گریجویٹ ڈاکٹر عمران حیدر جو خود کورونا کے شبہ میں آنے والے مریضوں کی دیکھ بھال کے دوران بیمار ہوئے بعد میں خود کو گھر میں آئی سو لیٹ کر لیا تاہم گزشتہ روز انہیں نشتر ہسپتال کے آئی سو لیشن وارڈ منتقل کیا گیا جبکہ نشتر ہسپتال کے 27 نمبر وارڈ کی نرس رضیہ کو بھی کورونا کے شبہ میں نشتر ہسپتال کے آئی سو لیشن وارڈ میں داخل کیا گیا ہے،ادھر رحیم یار خان کے 32 سالہ محمد علی، اور جرمنی سے واپس آئے ملتان کے 33 سالہ سلیم کو آئی سو لیشن وارڈ منتقل کر کے تمام مشتبہ مریضوں کے نمونے لیبارٹری بھجوا دئیے گئے ہیں،بتایا جا رہا ہے اس سے قبل نشتر ہسپتال میں زیر علاج رہنے والے کورونا میں مبتلا امیر عباس کو جب نشتر ہسپتال لایا گیا تو امیر عباس بغیر کسی ماسک اور حفاظتی کٹ کے نشتر ہسپتال میں ادھر ادھر پھرتا رہا جبکہ دوسری جانب ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن پنجاب نے نشتر ہسپتال اور ضلعی انتظامیہ کی جانب سے کورونا وائرس سے حفاظت کے لئے اٹھائے جانے والے اقدامات پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ انتظامیہ کورونا وائرس جیسے موذی مرض کو غیر سنجیدہ لے رہی ہے نشتر ہسپتال کا پورا عملہ اس وقت خوف میں مبتلا ہے۔ جبکہ ملتان میں قائم قرنطینہ میں آنے والے 1247زائرین کی میزبانی کے انتظامات کو حتمی شکل دے دی گئی ہے۔ڈپٹی کمشنر عامر خٹک کی ہدایت پر قرنطینہ کے ائریا میں 100 سی سی ٹی وی کیمرے بھی نصب کر دیئے گئے ہیں ں۔ڈپٹی کمشنر عامر خٹک نے قرنطینہ میں گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ آنے والے زائرین کی رجسٹریشن کے لئے 10 کاؤنٹر قائم کئے گئے ہیں تاکہ زائرین کو انتظار نہ کرنا پڑے۔ہر بس میں آنیوالے زائرین کی رجسٹریشن ہو گی جس کے بعد انہیں قرنطینہ میں شفٹ کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ تمام محکموں نے اپناسٹاف تعینات کردیا ہے۔قرنطینہ میں محکمہ صحت،میٹرو پولیٹن کارپوریشن،تحصیل کونسل،ویسٹ مینجمنٹ کمپنی،میپکو اور ایمرجنسی ریسکیو کا سٹاف تعینات کیا گیا ہے۔محکمہ صحت کے سٹاف کو 24 گھنٹے موجود رہنے کے لیے بوائز کیمپس کی بلڈنگ کو رہائش گاہ میں بدل کر دیا گیا ہے جبکہ تمام محکموں نے 50 سال سے کم عمر کا سٹاف تعینات کیا ہے۔ویسٹ مینجمنٹ کمپنی نے پورے قرنطینہ کے ایریا کی دھلائی کر دی ہے۔علاوہ ازیں حکومت پنجاب کی ہدایت پر پبلک دفاتر میں عوامی داخلے پر پابندی عائد کردی گئی۔کمشنر ملتان ڈویثرن شان الحق نے شہریوں کی سہولت کیلئے نمبر مختص اور فوکل پرسنز مقرر کرنے کا حکم دے دیا۔اس سلسلے میں ڈویثرن نکے تمام متعلقہ ڈپٹی کمشنرز نے فوکل پرسنز نامزد کرکے رابطہ نمبر بھی جاری کر دیے گئے۔کمشنر آفس ملتان میں اسسٹنٹ کمشنر جنرل خواجہ عمیر محمود کو عوامی رابطہ فوکل پرسن مقرر کرکے رابطہ نمبر 9201028، 03436092240 جاری کر دیا گیا۔ڈپٹی کمشنر ملتان آفس کا 061,4500963,9200042 جاری کر دیا گیا جبکہ ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر قمر الزماں قیصرانی فوکل پرسن بھی مقرر کرکے انکا رابطہ نمبر 03008911939 بھی جاری کردیا گیا۔ڈپٹی کمشنر خانیوال آفس کا عوامی رابطہ نمبر 065,9200147,9200032 مختص کردیا گیا۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو اکرام ملک کو فوکل پرسن نامزد جبکہ انکا رابطہ نمبر 03004392414 جاری کردیا گیا۔ڈپٹی کمشنر وہاڑی افس کا رابطہ نمبر 067,3365508,3362195 مختص،ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر عبد الطیف خان کو فوکل پرسن مقرر جبکہ انکا رابطہ نمبربرائے عوامی مسائل03317375255 بھی جاری کر دیا گیا۔ڈپٹی کمشنر لودھراں آفس کا رابطہ نمبر 0608,9200181,9200100 مختص،ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر مشتاق حسین فوکل پرسن مقرر، جبکہ رابطہ نمبر 03468632974 جاری کردیا گیا۔ترجمان ڈویثرنل انتظامیہ کے مطابق شہری جاری رابطہ نمبروں پر 24 گھنٹے رابطہ کر سکتے ہیں۔ادھر کرونا وائر س کے پیش نظر تعلیمی اداروں کی بندش کے دورانیہ میں اضافے کا امکان ہے۔ بتایا گیا ہے کہ حکومت کی جانب سے تمام سرکاری اور پرائیویٹ تعلیمی ادارے 5اپریل تک بند کر دئیے گئے ہیں۔ذرائع کے مطابق تعلیمی اداروں کی بندش کے دورانیے میں اضافے کا امکان ہے۔5اپریل کو اس حوالے سے نیا نوٹیفکیشن جاری کیاجاسکتا ہے کیونکہ حکومت نے کرونا وائرس کی مصیبت سے نمٹنے کے لئے تمام ضروری اقدامات کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔دریں اثنا ٹور ازم ڈویلپمنٹ کارپوریشن آف پنجاب (ٹی ڈی سی پی) کے زیر انتظام پنجاب بھر میں کام کرنے والے ہوٹلز اور ریزارٹس اور تفریحی مقامات کو فوری طور پر 31ماچ تک بند کر دیا گیا ہے۔ ٹی ڈی سی پی کے مطابق سخی سرور ریزارٹ کا کنٹرول متعلقہ ڈپٹی کمشنر اور ضلعی انتظامیہ نے سنبھال کر وہاں کنٹرول روم بنا لیا ہے۔جب کہ فورٹ منرو اپ گریڈیشن کی وجہ سے بند ہے۔ بہاول پور کے قریب نیشنل پارک،لال سہانرا کو بھی بند کر دیا گیا ہے۔ اس کو لیز پر لینے والوں کو سختی سے ہدایات جاری کر دی گئی ہیں کہ نیشنل پارک اور یہاں موجود ہوٹل میں کوئی بھی شخص داخل نہ ہو۔ چھانگامانگا کے علاوہ کلر کہار کھجوٹ اور پتریاٹہ چیر لفٹ بھی بند کر دی گئی ہیں۔ جبکہ مری میں چلنے والی سوفٹ ویل ٹرین (سفاری ٹرین) بند کرنے کے علاوہ کوٹ مٹھن ریزارٹ اور ننکانہ صاحب میں قائم ہوٹل اور قلعہ دراوڑ بھی بند کر دیا گیا ہے۔ تاہم قلعہ دراوڑ کے قریب پانچ ایکڑ رقبہ پر قائم ہونے والے ہو ٹل کی تعمیر کا کام جاری ہے۔ یہ ہوٹل جون 2020ء میں ٹی ڈی سی پی کے حوالے کر دیا جائے گا اور اس سے چولستان میں منعقد ہونے والی چولستان جیپ ریلی کے شائقین اور شرکت کندگان کو بڑی رہائشی سہولت دستیاب ہونے کے علاوہ چولستان اور قلعہ دراوڑ کی سیر کرنے والوں کو بہت بڑی سہولت دستیاب ہو جائے گی۔ادھر پنجاب میں کرونا وائرس سے بچاو? کیلئے حکومتی اقدامات کے پیش نظر ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل پنجاب لینڈ ریکارڈز اتھارٹی کی طرف سے ضروری سٹاف کے ذریعے اراضی ریکارڈ سنٹرز سے محدود خدمات کی فراہمی جاری رکھنے کا اعلان کیا گیا ہے۔حکام کے مطابق فرد برائے ضمانت، انتقال اور عدالتی احکامات پر عملدرا?مد کیلئے 2 سروس سنٹر ا?فیشلز موجود رہیں گے جبکہ بقایا سروس سنٹر ا?فیشلز متبادل دنوں میں کام کریں گے۔ فرد برائے ریکارڈ کی فراہمی تمام اراضی ریکارڈ سنٹرز سے معطل رہے گی۔ سروس سنٹر انچارجز، اسٹنٹ ڈائریکٹر لینڈ ریکارڈ، لینڈ ریکارڈ ا?فیسرز اپنی خدمات روٹین کے مطابق فراہم کریں گے۔ سروس سنٹر انچارجز کو سٹاف کیلئے ڈیوٹی روسٹر تربیت دینے اور احکامات پر سختی سے عملدرآمد کروانے کی ہدایات جاری کی گئی ہیں۔ پاکستان ریلوے نے کرونا وائرس کے خدشات کے پیش نظربڑے شہروں سے اضافی رش کو کم کرنے کے لیے شہروں کے اندر اور باہر مختلف اسٹیشنو ں پر سٹاپ دینے کا فیصلہ کیاہے۔ کراچی کی تمام اپ اینڈ ڈا?ن ٹرینوں کو لانڈھی، ڈرگ روڈ، ملیرسٹی ریلوے اسٹیشن پر دو منٹ کے سٹاپ کی اجازت دی ہے۔ اسی طرح لاہور سے چلنے والی تمام اپ ٹرینوں کو لاہور کینٹ، والٹن اور کوٹ لکھپت ریلوے اسٹیشن پر جبکہ راولپنڈی کی تمام اپ ٹرینوں کو چکلالہ ریلوے اسٹیشن پر 2منٹ کے لیے رْکنے کی اجازت دی ہے۔ اس فیصلے پر فوراً عملدرآمدہوگا۔ سوئی ناردرن گیس آفس پیراں غائب عام سائلین کے لئے بند کر دیا گیا۔ بتایا گیا ہے کہ کرونا آفس پھیلنے کے خدشے کے تحت سوئی ناردرن گیس آفس کے سکیورٹی گارڈز عام سائلین کو گیٹ پر ہی روک رہے ہیں اور ان کو کہہ رہے ہیں کہ 5اپریل کے بعد آنا‘ صرف ان سائلین اور افراد کو داخلے کی اجازت دی جاتی ہے جبکہ کرونا وائرس ایمرجنسی اور ملازمین کے لیے حفاظتی اقدامات کے پیش نظر واسا ہیڈ آفس شمس آباد میں عوام الناس کا داخلہ عارضی طورپر ممنوع کر دیا گیا ہے فراہمی و نکاسی آب کی شکایات کے حوالے سے ڈائریکٹر انجینئرنگ، ڈائریکٹر ورکس برانچز اور آن لائن کمپلینٹ سیل میں خصوصی کاؤنٹر قائم کر دیئے گئے ہیں شہری واٹر سپلائی سے متعلق شکایات کی صورت میں ڈائریکٹر انجینئرنگ مشتاق احمد خان کے موبائل نمبر 0300-2265251 اور لینڈ لائن نمبر 061-9330793 پر اور سیوریج سے متعلق شکایات کی صورت میں ڈائریکٹر ورکس شہزاد منیر کے موبائل نمبر 0301-8789977 اور لینڈ لائن نمبر 061-9330056 پر رابطہ یا واٹس ایپ کے ذریعے یا واسا کے مرکزی کمپلینٹ سیل کے ٹال فری نمبر 1334 پر کال کرکے اپنی شکایات درج کروا سکتے ہیں۔ قرنطینہ میں وائرس سے بچاو کے لیے مکمل میکانزم تیار کر لیا گیا ہے۔سی ای او ہیلتھ ڈاکٹر منور عباس نے فول پروف میکانزم کے حوالے سے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ قرنطینہ میں خدمات سرانجام دینے والے ویسٹ منیجمنٹ کمپنی کے سینٹری ورکرز بھی پی پی ایز پہنیں گے،پی پی ای(پرسنل پروٹیکٹیوایکوپمنٹ) دنیا میں کوروناوائرس سے بچاو کا سٹینڈرڈ لباس ہے،سینٹری ورکرز پی پی ایزپہن کر کمروں میں جائیں گے،ہر کمرے کا ویسٹ تین شاپرز میں پیک کیا جائے گا اور اسے مخصوص گاڑی کے ڈریعے انسنی ریٹر تک پہنچایا جائے گا۔انسنی ریٹر کے ذریعے و

مزید : ملتان صفحہ آخر