فلپائنی پاشندے میں کرونا کی اطلاع پر انتظامیہ کی دوڑیں

فلپائنی پاشندے میں کرونا کی اطلاع پر انتظامیہ کی دوڑیں

  



چوک مکول(نامہ نگار) کرونا سے ڈرنا نہیں لڑنا ہے، فلپائنی باشندے کو بخار اور نزلہ ہونے پر محلہ داروں نے پولیس اور محکمہ صحت کو کرونا وائرس سے متاثر ہونے کا فون کردیا، ٹیموں کی دوڑوں لگ گئی اور کال جھوٹی نکلی، چیک اپ کرنے پر فلپائنی باشندہ تندرست نکلا، محکمہ صحت کے عملہ نے فلپائنی باشندے کے ساتھ تصاویر بنوائی اور اہل علاقہ کو مطمئن کیا۔ تفصیلات کے مطابق رجب(بقیہ نمبر8صفحہ12پر)

طیب اردگان ہسپتال مظفرگڑھ میں کرونا وائرس سے متاثرہ افراد کے لیے ائسولیشن وارڈ قائم کرکے مریضوں کے زیرعلاج ہونے کے بعد مظفرگڑھ کے مختلف علاقوں میں شہری کرونا وائرس سے خوفزدہ ہوکر پولیس اور محکمہ صحت کی ٹیموں کو بلاوجہ علاقے میں کرونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کے لیے طلب کرلیتے ہیں اور گزشتہ مظفرگڑھ شہر کے وسط میں واقع محلہ شیخوپورہ میں واقع بابری مسجد میں تبلیغی جماعت کے ساتھ آنیوالے فلپائنی باشندے مصباح الدین کو معمولی بخار اور نزلہ ہوا تو محلے والوں نے پولیس اور محکمہ صحت کو کرونا وائرس سے متاثرہ مریض کی اطلاع کے لیے فون کالیں کرنا شروع کردی جس پر تھانہ سول لائن مظفرگڑھ پولیس اور محکمہ صحت مظفرگڑھ کے سی ڈی سی آفیسر رانا جمیل اپنی ٹیم کے ہمراہ موقع پر پہنچے اور فلپائنی باشندے کا معائنہ کیا تو وہ معمولی بیمار تھا جس کو کوئی بھی کرونا وائرس کے علامات تک نہ تھے اور محکمہ صحت کے سی ڈی سی آفیسر رانا جمیل نے فلپائنی باشندے کے ساتھ اپنی تصاویر بنواکر اہل علاقہ کو مطمئن کیا اور اس طرح غیرملکی باشندے کو کرونا وائرس سے متاثر ہونے کی اطلاع جھوٹی نکلی ہے۔ عوام کی جھوٹی کال، اطلاع اور افواہوں کے باعث اداروں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔

دوڑیں

مزید : ملتان صفحہ آخر