صدر مملکت عارف علوی کا مولانا حنیف جالندھری سے ٹیلیفونک رابطہ

صدر مملکت عارف علوی کا مولانا حنیف جالندھری سے ٹیلیفونک رابطہ

  



ملتان (سٹی رپورٹر)صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی کا مولانا محمد حنیف جالندھری سے ٹیلی فونک رابطہ,کرونا وائرس کے حوالے سے درپیش صورت حال پر تبادلہ خیال,کرونا وائرس کی وجہ سے پیدا ہونے والی صورت حال سے نجات کے لیے مشترکہ جدوجہد پر اتفاق,صدر پاکستان نے علماء اور مدارس و مساجد کی طرف سے قوم کی رہنماء کرنے کی اپیل,مولانا (بقیہ نمبر27صفحہ12پر)

جالندھری نے حکومت کی طرف سے عوام کو رجوع الی اللہ,اجتماعی توبہ و استغفار کی طرف متوجہ کرنے کی اور منکرات و فواحش کی روک تھام کے لیے پالیسیاں تشکیل دینے کا مطالبہ,صدر پاکستان نے دورہ چین کے حوالے سے تفصیلات سے آگاہ کیا,مولانا جالندھری نے مشورہ دیا کہ حکومتی سطح پرایران سے چین کی طرز پر دوستانہ اورخیر خواہانہ طرز عمل اپنانے کی بات کی جائے تفصیلات کے مطابق صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی نے وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے جنرل سیکرٹری مولانا محمد حنیف جالندھری کو فون کیا-دونوں رہنماوں نے کرونا وائرس کے حوالے سے ملک و قوم کو درپیش صورت حال پر تبادلہ خیال کیا-اس موقع پر صدر پاکستان نے مولانا جالندھری کو اپنے حالیہ دورہ چین کے حوالے سے بتایا کہ چائنہ نے پاکستان کی طرف سے آزمائش کی اس گھڑی میں بھرپور تعاون اور مکمل اعتماد کرنے پر پاکستان کا شکریہ ادا کیا-انہوں نے کہا کہ چائنہ نے وسائل کی قلت کے باوجود ماسک اور دیگر امدادی سامان بھجوانے اور پاکستانی طلبہ اور شہریوں کے چائنہ قیام کے حوالے سے اعتماد کرنے پر پاکستان کا شکریہ ادا کیا انہوں نے بتایا کہ چائنہ نے کرونا وائرس کے حوالے سے پوری قوم بالخصوص نوجوانوں کو متحرک کیا اور پوری قوم نے متحد ہوکر کرونا وائرس سے نجات پانے کے لیے بھرپور جدوجہد کی اور بہت جلد اس مشکل پر قابو پا لیا گیا-صدر پاکستان نے مولانا جالندھری سے کہا کہ پاکستانی قوم کو متحد اور متحرک کرنے کے لیے اور قوم کامورال بلند رکھنے کے لیے علماء کرام اور منبر و محراب کا کردار اہمیت کا حامل ہے-اس لیے علماء کرام کو موجودہ صورتحال میں بھرپور کردار ادا کرنا چاہیے-مولانا جالندھری نے صدر مملکت کو بھرپور تعاون کی یقین دہانی کرواتے ہوئے کہا کہ اس سے قبل بھی ہم نے کء اقدامات اٹھائے اور آئندہ بھی مشکل کی اس گھڑی میں بھرپور کردار ادا کرنے کے عزم کا اعادہ کرتے ہیں -مولانا جالندھری نے صدر مملکت کی توجہ اس امر کی طرف مبذول کرواء کہ سرکاری سطح پر جہاں احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی مہم چلاء جا رہی ہے وہیں رجوع الی اللہ کی تلقین بھی کی جائے,قوم سے اور علماء و طلبہ سے دعاوں کی اپیل بھی کی جائے اور منکرات و فواحش کی روک تھام کے حوالے سے پالیسیاں تشکیل دی جائیں -مولانا جالندھری نے صدد مملکت سے کہا کہ اس وقت پاکستان میں کرونا وائرس کے جتنے کیس سامنے آرہے ہیں وہ سب ایران کے راستے آ رہے ہیں اس لیے ایران سے حکومتی سطح پر بات کی جائے کہ وہ چائنہ کی طرح دوستانہ اورخیر خواہانہ طرز عمل کا مظاہرہ کرے-اس موقع پر دونوں رہنماوں نے ملک و ملت کی فلاح و بہبود کے لیے مل کر آگے بڑھنے کی ضرورت پر بھی اتفاق کیا۔

صدر مملکت

مزید : ملتان صفحہ آخر