2افراد کی موت کے بعد مردان میں یونین کو نسل لاک ڈاون پشاور کی ایک گلی قرنطینہ قرار

2افراد کی موت کے بعد مردان میں یونین کو نسل لاک ڈاون پشاور کی ایک گلی قرنطینہ ...

  



پشاور(مانیٹرنگ ڈیسک) خیبر پختونخوا میں کرونا سے2 افراد کی موت کے بعد حکومت نے مزید اقدامات شروع کر دئیے ہیں،انتقال کرنے والوں میں سے ایک شخص کا تعلق پشاور جب کہ دوسرے کا تعلق مردان سے ہے، پشاورمیں ضلعی انتظامیہ نے کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے کینال ٹاؤن کی ایک گلی کو قرنطینہ قرار دے دیا ہے،جاں بحق ہونے والے شخص نے اس گلی میں واقع ایک گھر میں قیام کیا تھا،ضلعی انتظامیہ نے پولیس کو احکامات جاری کرتے ہوئے کہا کہ گلی کے داخلی و خارجی راستوں کو بند کیا جائے،دوسری جانب مردان میں کرونا وائرس کے مریض کے انتقال کے بعد یونین کونسل منگاہ کو لاک ڈاؤن کر دیا گیا ہے اوریونین کونسل کے داخلی راستوں پر پولیس تعینات کر دی گئی ہے،مردان کی ضلعی انتظامیہ کے حکام کے مطابق علاقے سے کسی کو باہر جانے اور باہر سے آنے کی اجازت نہیں ہو گی،ڈپٹی کمشنر مردان کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ کرونا وائرس کے باعث انتقال کرنے والے کے اہل خانہ سمیت 25 افراد قرنطینہ مرکز منتقل کر دیا گیا ہے،کرونا وائرس سے بچاؤ کے لیے شہر میں 3 قرنطینہ مراکز قائم کردیے گئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ عبدالولی خان یونیورسٹی کا گارڈن کیمپس اور مین کیمپس سمیت گورنمنٹ پوسٹ گریجویٹ کالج کو قرنطینہ مرکز قرار دیا گیا ہے۔

لاک ڈاؤن

مزید : صفحہ آخر