یہ وقت تنقید کا نہیں، سیاست پھر کرلینگے، کرونا بحران پر وزیراعظم کیساتھ ہیں: بلاول

      یہ وقت تنقید کا نہیں، سیاست پھر کرلینگے، کرونا بحران پر وزیراعظم کیساتھ ...

  



کراچی(این این آئی) پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ کرونا سے ڈرنے کی نہیں بلکہ اس سے لڑنے کی ضرورت ہے،یہ وقت حکومت پر تنقید کرنے کا نہیں بلکہ اس کیساتھ کھڑے ہونے کا ہے، میں وزیراعظم عمران خان پر کوئی تنقید نہیں کروں گا، ہمارا وزیر اعظم اور پورا پاکستان اس وائرس کا مقابلہ کرسکتا ہے،امید ہے وفاقی حکومت قیادت کرتے ہوئے تمام صوبوں کو ساتھ لیکر چلے گی۔ جمعرات کی شام سندھ اسمبلی بلڈنگ میں وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ، وزیر صحت ڈاکٹر عذرا پیچوہو،وزیر محنت سعید غنی کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہا اس وبا کیخلاف ہمیں سماجی رابطوں میں فاصلہ پیداکرناہے، لوگوں کی صحت کیلئے یہ انتہائی ضروری ہے۔ ہمارا ایمان ہے اللہ تعالی انسانوں پراتنا بوجھ ڈالتاہے جتنا وہ برداشت کرسکتے ہیں۔کروناوائرس انتہائی سنگین اور جان لیوا خطرہ ہے،کروناوائرس عام فلو نہیں، یہ بیماری صرف بزرگوں کو نہیں ہر فرد کو متاثر کرسکتی ہے۔پاکستان میں دو افراد کروناوائرس سے انتقال کرچکے ہیں، یہ دونوں افراد زیادہ عمر کے بھی نہیں تھے تاہم خوف پھیلانے اور گھبرانے کی ضرورت نہیں،حکومت دن رات محنت کررہی ہے، ہم اب بھی تاخیر سے متحرک ہوئے۔ہم کروناوائرس کے کمیونٹی میں پھیلنے کے مرحلے میں داخل ہوچکے ہیں، بیرون ملک سے آنیوالے افراد سے ملنے والے لوگوں میں بھی کروناپازیٹورپورٹ ہوا،تفتان کوارنٹائن سے آنیوالے تمام افراد کو الگ رکھاگیا لیکن بدقسمتی سے ان افراد کے ٹیسٹ نہیں کئے گئے۔بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پورے ملک سے اپیل کروں گا وہ آئسولیشن کی کوشش کریں۔وفاقی حکومت تمام صوبوں کی مدد کرے،سندھ حکومت نے اپنے طور پر وائرس ٹیسٹنگ کٹس بھی خریدی ہیں،ہم پورے ملک میں ایک ساتھ اقدامات اٹھائیں تو کروناکو پھیلنے سے روکاجاسکتاہے۔برطانیہ میں وزیراعظم فرنٹ سے لیڈ کررہے ہیں،پاکستان میں بھی ہمیں ایساکرناہوگا،اس وقت تنقید کرنے یاالزامات کی ضرورت نہیں وقت آئیگا تو سیاست کرینگے۔ وفاقی حکومت اپنی حکمت عملی میں تبدیلی لائے۔ملکر کام کریں گے توپاکستان اس بیماری کا مقابلہ کرسکتاہے۔انہوں نے کہا کہ دنیا کے ترقی یافتہ ممالک جن کا بہترین میڈیکل نظام ہے وہ بھی پریشان ہیں۔ہم چاہتے ہیں کہ پورے ملک میں لاک ڈاون ہو،کوشش کریں کہ اس طرح جو کچھ کیاجاسکتاہے کریں۔ ہم کہہ رہے ہیں کہ اگلے 15 روز گھر پررہناپڑیگا۔سندھ حکومت تمام غریب عوام کے گھر وں تک راشن کھاناپہنچائے گی،سندھ حکومت یقینی بنائے کہ کوئی یومیہ اجرت پر کام کرنیوالا بیروزگارنہ ہو،قانون کے مطابق مالکان کو پوری تنخواہ ملازمین کو دیناہوگی،سندھ حکومت مالکان کوبعد میں متبادل دیگی۔انہوں نے خبردار کیا کہ کرونا کے سبب دومحاذوں پر جنگ ہونیوالی ہے،وائرس کی وجہ سے معیشت پر اثر ہوناہے،وفاق کو سوچنا ہوگاکہ معیشت بچانے کے لئے کیا کیا جاسکتا ہے۔کروناوائرس سے نکلنے کے بعد بھی اربوں روپے بحالی کے لئے درکار ہوں گے۔فرانس امریکہ میں شرح سود کم کردی گئی،کروناوائرس کے تدارک کے لئے بھرپورسرمایہ کاری کرناہوگی۔انہوں نے کہا کہ ڈاکٹرز اور نیم طبی عملے کے شکرگزار ہیں جو دن و رات کام کررہے ہیں۔اگر ہنگامی اقدامات نہ کئے تو ہسپتالوں میں جگہ نہیں رہے گی،ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ ہنگامی اقدامات کئے جائیں۔ تفتان کوارنٹائن پر کچھ کوتاہیاں تھیں،ڈر ہے کہ تفتان بارڈر سے نہ جانے کتنے لوگ ازخود نکل گئے ہوں۔ہم لاک ڈاون خوشی سے نہیں کررہے۔لوگوں کی جانیں بچانے کے لئے مجبور ہیں،ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ پورے ملک میں لاک ڈاون اور آئسولیشن کیاجائے۔اس موقع پر وزیر اعلی سندھ نے بتایا کہ ہم میڈیکل ٹریننگ کے حامل افراد کو چھ ماہ کے لئے بھرتی کررہے ہیں۔

بلاول

مزید : صفحہ اول