لاہور سمیت پنجاب بھر کی عدالتوں میں کرونا وائرس پھیلاؤ کا خطرہ بڑھنے لگا

لاہور سمیت پنجاب بھر کی عدالتوں میں کرونا وائرس پھیلاؤ کا خطرہ بڑھنے لگا

  



لاہور(نامہ نگار)لاہورسمیت پنجاب بھر کی ماتحت عدالتوں میں کرونا وائرس کے پھیلاؤ کاخطرہ بڑھنے لگا،کروناوائرس سے بچاؤ کے لئے لاہور ہائیکورٹ کی گائیڈلائنز پر مکمل عمل درآمد نہیں ہورہا تفصیلات کے مطابق لاہورسمیت پنجاب کی ماتحت عدالتوں میں وائرس روکنے کے لئے احتیاطی اقدامات نہ ہونے کے برابرہیں،سیکڑوں وکلاء، سائلین اورعدالتی ملازمین کی مبینہ طور پربغیر سکریننگ عدالتوں میں آمد و رفت جاری ہے جس سے کرونا وائرس پھیلنے کا خدشہ بڑھ گیاہے جبکہ عدالتوں میں کھانسی، نزلہ زکام کے مریض سائلین، وکلاء عدالتی افسروں کی تعداد بھی نظرآرہی ہے،ماتحت عدالتوں میں وکلاء اور سائلین کا رش بڑھنے سے کرونا کے پھیلاؤ کے خطرات منڈلانے لگے ہیں،لاہورہائی کورٹ بار کی جانب سے ایک بارپھر چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ سے ریگولر مقدمات 2 ہفتوں کے لئے ملتوی کرنے کا مطالبہ کردیاگیا،وکلاء کا کہناہے کہ عدالتوں کو لاک ڈاؤن نہ کیا گیا تو وائرس تیزی سے پھیلنے کا خدشہ برقرار رہے گا،عدالتیں بند نہیں کرنی تو پھر حکومت تمام حفاظتی انتظامات فراہم کرے،اس حوالے سے لاہور بار کے وکلاء میاں داؤد،مدثر چودھری، مرتضیٰ چودھری اورمرزا حسیب اسامہ کا کہناہے کہ کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے سب کواحکامات پرعمل درآمد کو یقینی بناناچاہیے اوراس میں کوتاہی نہیں برتنی چاہیے،انہوں نے مزیدکہا کہ وکلاء کوصرف اہم نوعیت کے مقدمات میں ہی پیش ہونا چاہیے، جو حکومت کی جانب سے 5اپریل تک ہدایات جاری کی گئی ہیں اس پر عمل درآمد کیاجائے۔

عدالتوں میں کرونا وائرس

مزید : صفحہ اول