کورونا کا مریض 27لوگوں کو متاثر کرتا ہے،جواد احمد

کورونا کا مریض 27لوگوں کو متاثر کرتا ہے،جواد احمد

  



لاہور(نمائندہ خصوصی)چیئرمین برابری پارٹی پاکستان جواد احمد نے کہا ہے کہ کرونا وائرس کے حوالے سے چیف جسٹس آف پاکستان کی آبزرویشن حقیقت کی عکاس ہے کیونکہ حکومت نے ابھی تک اس عفریت کو روکنے کے حوالے سے جو اقدامات کیے ہیں وہ ناکافی ہیں ؎

،عالمی اسٹینڈرڈ کے مطابق اگر کسی شہر میں کرونا وائرس میں مبتلا ایک مریض سامنے آتا ہے تو وہ اپنے ساتھ 27 لوگوں میں بھی اس وائرس کو منتقل کرتاہے،پاکستان میں اس مرض کے حوالے سے مختص کیے گئے بیڈز کی تعداد فقط 1870ہے جبکہ ابھی تک مرض سے نمٹنے کے لئے ہیلتھ پروفیشنلز کی بہت کم تعداد ٹرینڈ ہے یہاں پر ایک ہی شخص مریض کا ڈیٹا انٹر کرتا ہے اور وہی اس کو ادویات بھی فراہم کرتا ہے اور اگر وینٹی لیٹرز کی بات کی جائے تو صوبائی حکومتیں اب جاگی ہیں جبکہ وینٹی لیٹرز کی کمی کا معاملہ تو گزشتہ حکومتوں کے ادوار میں بھی تھا،کرونا وائرس پاکستان میں پیدانہیں ہوا یہ ایئرپورٹس اور بارڈز کے ذریعے ملک میں داخل ہوا جس سے حکومت کی نااہلی کا پتہ چلتا ہے کہ انھوں نے بروقت اس حوالے سے انتظامات مکمل نہیں کیے۔ ان باتوں کا اظہار انھوں نے پارٹی کی سینٹرل ورکنگ کمیٹی کے اجلاس میں گفتگو کے دوران کیا اس موقع پر ان کا مزید کہنا تھا کہ ایک طرف تو حکومت کرونا وائرس کے نام پر ملک میں تقریباًایمرجنسی نافذ کرچکی ہے جس کے باعث دیہاڑی دار طبقہ مشکلات کا شکار ہوگیا ہے اور دوسری جانب یوٹیلٹی اسٹورز پراشیائے صرف کی قیمتوں میں یک دم اضافہ کرنا سمجھ سے بالاتر ہے،برابری پارٹی پاکستان اس دکھ اور مشکل کی گھڑی میں تحریک انصاف کی حکومت کی جانب سے اشیائے صرف کی قیمتوں میں بلاجواز اضافے کو رد کرتی ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1