کراچی چیف نے حکومتی احکامات ہوا میں اڑادیئے، پرہجوم پریس کانفرنس

کراچی چیف نے حکومتی احکامات ہوا میں اڑادیئے، پرہجوم پریس کانفرنس

  



کرچی (کرائم رپورٹر)ایڈیشنل آئی جی کراچی غلام نبی میمن نے حکومتی احکامات ہوا میں اڑا دیئے۔کراچی میں دہشت گرد کی گرفتاری کے لیے بلائی گئی پریس کانفرنس میں 35سے زائد صحافیوں کو جمع کرلیا گیا جبکہ آئی جی سندھ کی جانب سے آج ہی جاری کیے گئے بیان میں عوام سے کہا گیا تھا کہ ایک جگہ پرچار سے زائد افراد کے جمع ہونے پر قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔تفصیلات کے مطابق جمعرات کو ایڈیشنل آئی جی کراچی غلام نبی میمن کی جانب سے ہنگامی پریس کانفرنس بلائی گئی،جس میں انہوں نے انکشاف کیا کہ پولیس نے ایم کیو ایم لندن سے تعلق رکھنے والے ایک دہشت گرد شاہد الیاس کو گرفتار کیا ہے جو شہر میں بھارتی خفیہ ایجنسی”را“ کے نیٹ ورک کا سربراہ تھا۔ گرفتاری سے قطع نظر کراچی پولیس کی جانب سے اس پریس کانفرنس کو طلب کیے جانے کا عمل ہی خود قانون کی دھجیاں اڑانے کے مترادف بن گیا ہے کیونکہ جمعرات کو ہی آئی جی سندھ کی جانب سے ایک اعلامیہ جاری کیا گیا تھا،جس میں شہریوں سے کہا گیا تھا کہ اگر ایک مقام پر چار سے زائد افراد جمع ہوں گے تو ان کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی جبکہ حکومت سندھ کی جانب سے جاری کی گئی ہیلتھ ایڈوائزری میں کہا گیا ہے کہ شہری ایک جگہ پر جمع ہونے سے گریز کریں تاہم کراچی پولیس چیف کی پریس کانفرنس میں ایک ہی مقام میں 35 سے زائد صحافی موجود تھے جو کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے خدشے کے باعث انتہائی خطرناک تھا۔واضح رہے کہ ایڈیشنل آئی جی کے علاوہ آج ہی پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے بھی پریس کانفرنس سے خطاب کیا اس کے علاوہ دیگر حکومتی شخصیات بھی باقاعدگی کے ساتھ پریس کانفرنس کررہی ہیں،جن میں صحافیوں کی ایک بڑی تعداد موجود ہوتی ہے۔اس ضمن میں شہری حلقوں کا کہنا ہے کہ ایک جانب تو حکومت کورونا وائرس کے حوالے سے عوام کے لیے ایڈوائزری جاری کررہی ہے تو دوسری جانب خود حکومتی شخصیات ان ہدایات کی خلاف ورزی کررہے ہیں جو کہ تشویشناک امر ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر