گورنر پنجاب کا کرونا متاثرہ غریب افراد کے خاندانوں کو فری راشن فراہمی کا اعلان

گورنر پنجاب کا کرونا متاثرہ غریب افراد کے خاندانوں کو فری راشن فراہمی کا ...

  



لاہور(نمائندہ خصوصی)گور نر پنجاب چودھری سرورنے صوبے میں کرونا وائرس سے متاثرہ غریب افراد کی فیملیز کیلئے فری راشن کی فراہمی کا اعلان کردیا۔وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار سے ملاقات میں بھی گور نر پنجاب کا کوروناکیخلاف جنگ جیتنے کے عزم کا اظہار جبکہ فلاحی تنظیم لاہور انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ سائنسز کے میاں احسن،انوار غنی اور گوہر اعجاز نے ”کرونا ایمر جنسی فنڈز“ کیلئے گور نر پنجاب کو 50ملین روپے کا عطیہ دیدیا۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز گور نر ہاؤس میں چیف سیکرٹر ی پنجاب نے کرونا کے خلاف پنجاب بھر میں محکمہ صحت سمیت دیگر اداروں کی جانب سے کیے جانیوالے اقدامات اور مارکیٹوں کی بندش سمیت دیگر معاملات کے حوالے سے بر یفنگ دی۔ اس موقع پر گور نر پنجاب نے کرونا ٹیلی میڈیسن ویب پورٹل 'موبائل ایپ اور کرونا ایمرجنسی فنڈز کے حوالے سے بتایا کہ اب تک 70ملین روپے سے زائد کے عطیات جمع ہو چکے ہیں جبکہ کرونا ٹیلی میڈیس ویب پورٹل میں اس وقت 200سے زائد ڈاکٹر زکام کر رہے ہیں اور میں روزانہ کی بنیادوں پر تمام معاملات کی خود نگرانی کر رہا ہوں،انہوں نے کہا کہ فیصلہ کیا ہے کہ لاہور سمیت پنجاب بھر میں کرونا سے متاثرہ غریب افراد کے خاندانوں کو مفت راش فراہم کر یں گے۔ راشن میں 20 کلو آ ٹا، 10 کلو چاول، 20لٹر دودھ، 10 کلو چینی 5کلو دالیں، چائے کے 5 ڈبے اور 2درجن صابن بھی شامل ہیں اور جب تک کرونا کے مر ض کے شکار افراد زیر علاج رہیں گے، ان کے خاندانوں کو فری راشن کی فر اہمی کا سلسلہ جاری رکھا جائیگا اس نیک مقصد کیلئے فلاحی تنظیموں کے پنجاب ڈویلپمنٹ نیٹ ورک میں 40سے زائد این جی اوز مل کر کام کررہی ہیں اور ہم کرونا کے مر یضوں اور ان کے اہل خا نہ کو زیادہ سے زیادہ مفت سہولتوں کی فراہمی کیساتھ ساتھ طبی سہولتیں اور عوام کو کرونا کے بارے میں آگا ہی بھی فراہم کر رہے ہیں۔

گور نر پنجاب

اسلام آباد (این این آئی) گورنر پنجاب چودھری محمد سرور نے کہا ہے کہ دنیا میں اس وقت سب سے بڑا چیلنج کرونا وباء ہے۔ اس وباکے آگے دنیا بھرمیں معیشت نے گھٹنے ٹیک دئیے ہیں۔عوام گھر بیٹھ کر تھوڑی تکلیف برداشت کر لیں،مستقبل میں بہتری آجائیگی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے چیئرمین ہلال احمر ابرار الحق کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس میں کیا۔گورنر پنجاب چودھری سرور نے کہا کہ کرونا وائرس کا مقابلہ پاکستان کی وفاقی اور صوبائی حکومتوں کو مل کر کرنا ہے۔ بائیس کروڑ عوام پر کڑا وقت ہے ہمیں مل کر لڑنا ہے۔ اس جنگ کا مقابلہ پارکوں اور میدانوں میں نہیں بلکہ گھروں میں رہ کر کرنا ہے،جن ممالک نے شروع میں احتیاطی تدابیر پر عمل نہیں کیا وہ مزید مشکل میں پھنس گئے،سب سے زیادہ قربانی ڈاکٹرز اور ہسپتال کے عملے کی ہے۔انہوں نے کہا کہ تمام سیاسی و مذہبی جماعتوں کو تمام اختلافات بھلا کر ایک قوم بن کر مقابلہ کرنا ہے۔تھوڑی تکلیف گھر بیٹھ کر برداشت کر لیں مستقبل میں بہتری آجائے گی۔انہوں نے کہاکہ میں التجا کرتا ہوں چار پانچ اختیاطی تدابیر کو اختیار کیا جائے،تمام دنیا کے مسلمانوں کے لیے مشکل وقت ہے۔ علماء اکرام کا بھی اس جنگ میں اہم کردار ہے۔اجتماعات میں اکٹھے ہونے سے وباء مزید پھیلنے کا خدشہ ہے۔ ڈیلی ویجز والوں کے لیے مشکل وقت ہے۔اس موقع پر چیئرمین پاکستان ہلال احمر نے کہا کہ آئندہ دس روز میں کرونا وائرس کے حوالے سے سپیشل ہسپتال بنایا جائے گا، راولپنڈی میں سکستھ روڈ پر تیار پناہ گاہ کو ہسپتال میں منتقل کیا جائیگا،دوسو پچاس بستروں پر مشتمل کرونا ہسپتال بنایا جائے گا، ہسپتال میں دس وینٹی لیٹر بھی فراہم کیے جائیں گے، باحیثیت قوم ملکر کام کرنا ہو گا عوام کا تحفظ اولین ترجیحی ہے، وفاقی اور صوبائی حکومتوں کو مل کر کرنا ہے۔ابرار الحق نے کہاکہ اسکرینگ اور ائسولیشن وارڈز کا قیام عمل میں لایا جا چکا ہے۔ابرار الحق نے کہاکہ پچیس ہزار اسکرینگ کر چکے ہیں،ائسولیشن سنٹر گوادر میں بنا دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ چین سے بات ہوئی ہے،2800 روپے میں ہونے والا ٹیسٹ پانچ سومیں کیا جائیگا۔

گورنر،ہلال احمر

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر