کرونا وائرس کی وباء ،ملک بھر کے علماء مشائخ نے صاحب نصاب اور مخیر حضرات سے بڑی اپیل کر دی

کرونا وائرس کی وباء ،ملک بھر کے علماء مشائخ نے صاحب نصاب اور مخیر حضرات سے ...
کرونا وائرس کی وباء ،ملک بھر کے علماء مشائخ نے صاحب نصاب اور مخیر حضرات سے بڑی اپیل کر دی

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)کرونا وائرس سے پیدا ہونے والی صورتحال کے پیش نظر پاکستان علماء کونسل کی اپیل پر ملک بھر کی مساجد میں نماز جمعہ کے اجتماعات احتیاطی تدابیراوروزارت صحت کی ہدایات کی روشنی میں منظم اداکیےگئے،علماء و مشائخ نے جمعۃ المبارک کے مختصر خطبات اور تقاریرمیں مخیر حضرات پر زور دیا ہے کہ کرونا وائرس کی وجہ سے پاکستان میں کاروباری سرگرمیاں متاثر ہونے سے ہزاروں محنت کش اور دیہاڑی دار طبقہ بے روزگاری کا شکار ہے،ایسی ناگہانی صورت حال کےپیش نظرمخیرحضرات رمضان المبارک کاانتظارکیےبغیرکروناوائرس سےمتاثرہونےوالےمحنت کشوں اورحاجت مندوں کی مالی مددکیلئےزکوٰاۃ اداکریں اور صاحب نصاب صدقات کا بھی اہتمام کریں،نصاب کےمطابق سال سے قبل بھی زکوٰۃ ادا کرنے سے زکوٰۃ ادا ہو جاتی ہے،موجودہ صورتحال میں تو یہ افضل عمل ہے،مخیرحضرات اس بات کاخیال ضرور رکھیں کہ جس حاجت مند کی مدد کی جائے اس کی عزت نفس مجروح نہ ہونے دیں،کروناوائرس یا کرونا سےمشتبہ مریض کا مساجد اور عوامی مقامات پر جانا جائز نہیں ہے، اسلام خود کو اور دوسروں کو تکلیف سے بچانے کا حکم دیتاہے۔

چیئرمین پاکستان علماء کونسل و صدر وفاق المساجد و المدارس پاکستان حافظ محمد طاہر محمود اشرفی ،مولانا اسد اللہ فاروق ، مولانا اسید الرحمٰن سعید، مولانا محمد اسلم صدیقی ، مولانا زبیر عابد،مولانا عبدالحکیم اطہر نے لاہور،مولانا طاہر عقیل اعوان ، مولانا ابو بکر صابری نےاسلام آباد، مولانا نعمان حاشر ،مولانا الیاس مسلم نے راولپنڈی ، مولانا محمد رفیق جامی ، مولانا حق نواز خالد، علامہ طاہر الحسن ،قاری عصمت اللہ معاویہ ، مولانا امین الحق اشرفی ، مولانا حبیب الرحمٰن عابد نے فیصل آباد، مولانا عبد الکریم ندیم ، مولانا محمد فاروق خانپوری نےخانپور ،علامہ عبد الحق مجاہد،مولانا انوار الحق مجاہد ، شبیر یوسف گجر، مولانا عبد المالک آصف نےملتان، مولانا محمد احمد مکی، مولانا محمد اشفاق پتافی، مفتی عمران معاویہ نےمظفر گڑھ،مولانا اسعد زکریا قاسمی،مولانا عبدالمجید پتافی،مولانا قاری اعظم فاروقی نےکراچی،قاضی مطیع اللہ سعیدی،مولانا عمر عثمانی نے گجرات ، مولانا محمدشفیع قاسمی،مولانا حنیف عثمانی نےساہیوال،مولانا عثمان بیگ فاروقی،حاجی محمد طیب شادنےشاہکوٹ،پیر اسعدحبیب شاہ جمالی،مولانامحمد جابر،مولانا محمد اصغر حسینی نےڈیرہ غازی خان،مولاناا حسان احمد حسینی ڈسکہ،مولاناعبدالرؤف نےبہاولنگر،مولانا فہیم الحسن فاروقی،مولانا غلام مصطفیٰ حیدری نےشیخوپورہ،مولانا محمد یاسر علوی نےسمندری، مولانا عقیل احمد نقشبندی، مولانا عبد اللہ رشیدی ، قاری عبدالقدیر قصوری نےقصور ، مولانا منیب الرحمان حیدری نےنارووال، مولانا محمد ایوب صفدر،مولانا محمدزبیر کھٹانہ،مولانامحمدعثمان بٹ نےگوجرانوالہ،مولاناابو بکرحمزہ،مولاناعزیز الرحمٰن عثمانی نےچکوال،مولاناسعداللہ لدھیانوی،مولاناوقاض محمودسلیمی نے ٹوبہ ٹیک سنگھ ،مفتی محمد عمر فاروق نےخانیوال،مولاناتنویراحمدنےبہاولپور،مولانا کلیم اللہ معاویہ نےننکانہ،مولاناعزیزاکبر قاسمی نےراجن پور میں جمعۃ المبارک کے اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں کرونا وائرس کے کیسوں میں تیزی سے ہوتا اضافہ تشویش ناک ہے، اس ناگہانی صورتحال کا مقابلہ کرنے اور کرونا وائرس کے خاتمے کے لیے پوری قوم کو عزم و ہمت کے ساتھ آگے بڑھنا ہوگا،پوری قوم رجوع الی اللہ و توکل الی اللہ کرے، استغفار ، آیت کریمہ ، سورۃ فاتحہ و خلاص کا ذکر ہر جگہ پر کیا جائے،نماز جمعہ کے اجتماعات کےدوران مساجدمیں لوگوں کی حاضری معمول سےزیادہ ہونارجوع الی اللہ و توکل الی اللہ کی عملی تصویر ہے، کروناسے گھبرانے کی ضرورت نہیں اس عالمگیروبا کا خاتمہ عزم و ہمت اور احتیاطی تدابیر سےکیا جائے گا،ایسے وبائی امراض سے نجات کے لیے شریعت اسلامیہ اور نبی کریم ﷺ کے احکامات سے رہنمائی لی جائے، یہی ہر مسلمان کے لیے حجت ہے۔

علماء مشائخ نے کہا کہ عوام الناس افواہوں پرکان نہ دھریں،افواہیں پھیلانے والے کسی کے خیر خواہ نہیں صرف انسانیت کے دشمن ہیں،اس ناگہانی صورتحال سے خود کو اور دوسروں کو کرونا وائرس سے بچانا ہر شہری کا فرض ہے، اس کے لیے طہارت و صفائی کا خاص اہتمام کیا جائے، ہروقت وضو کی حالت میں رہیں اورہر نماز کی ادائیگی کے لیے تازہ وضو کیا جائے۔ علماء و مشائخ نے کہا کہ جب تک کرونا وائرس پر قابو نہیں پایا جاتا تب تک احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی اشد ضرورت ہے، پاکستان کے علماء و مشائخ اور عوام الناس نے ذمہ دارانہ کردار ادا کرتے ہوئے مساجد کو بند نہیں ہونے دیا اور جمعۃ المبارک ے منظم اجتماعات کاانعقاد کرکے ایک مثال قائم کردی، اس عمل سے مساجد بند کرنے کی افواہیں پھیلا کر ملک میں انتشار پیدا کرنے کی خواہش رکھنے والوں کو مایوسی کے سوا کچھ حاصل نہیں ہوا۔

انہوں نے کہا کہ مساجد اور ان میں عبادت کرنے والوں کوکرونا وائرس سے محفوظ رکھنے کے لیے ہر ممکن اقدامات کیے جائیں گے،کرونا ایسی مہلک وبا کے پھیلاؤ کو کم کرنے کے لیے سماجی رابطوں میں کمی کو بنیادی تصور کیا جارہا ہے، اسی لیے ملک بھر میں مساجد کے اندر احتیاطی تدابیر اختیار کی گئی ہے ۔علماء و مشائخ نے حکومت سے اپیل کی ہے کہ وہ اس بحرانی کیفت سے فائدہ اٹھانے والےذخیرہ اندوزوں اورناجائز منافع خوروں کےگردگھیرا تنگ کرے، انہیں گرفتار کرکے عبرت کا نشان بنایا جائے۔

مزید : قومی