کرونا کا شکار بھارتی گلوکارہ کانیکا کپور نے سیاستدانوں اور بیوروکریٹس سمیت 300 انتہائی بااثر لوگوں کی پارٹی میں چلی گئیں، یہ سب پارٹی ختم ہونے کے بعد کیا کچھ کرتے رہے اور اب کیا ہو رہا ہے؟ تشویشناک خبر آ گئی

کرونا کا شکار بھارتی گلوکارہ کانیکا کپور نے سیاستدانوں اور بیوروکریٹس سمیت ...
کرونا کا شکار بھارتی گلوکارہ کانیکا کپور نے سیاستدانوں اور بیوروکریٹس سمیت 300 انتہائی بااثر لوگوں کی پارٹی میں چلی گئیں، یہ سب پارٹی ختم ہونے کے بعد کیا کچھ کرتے رہے اور اب کیا ہو رہا ہے؟ تشویشناک خبر آ گئی

  



ممئی (ڈیلی پاکستان آن لائن) معروف بھارتی گلوکارہ کانیکا کپور کی کرونا ٹیسٹ کی رپورٹ تو مثبت آ چکی ہے مگر اب ان کی جانب سے 300 افراد کیساتھ پارٹی کرنے کا انکشاف ہوا جن میں شوبز انڈسٹری کے علاوہ، کئی سیاستدان اور بیورو کریٹس بھی شامل ہیں۔

تفصیلات کے مطابق حال ہی میں برطانیہ سے بھارت واپس آنے والی معروف گلوکارہ کے کرونا ٹیسٹ کی رپورٹ مثبت آئی جنہوں نے وباءکی علامات ظاہر ہونے کے بعد سنگین غلطی کی جس کی وجہ سے 300 لوگوں کی زندگی خطرے میں پڑ گئی۔ کانیکا کپور چند روز قبل لندن سے لکھنو پہنچیں، انہیں وبا کی علامات ظاہر ہونا شروع بھی ہوئیں مگر انہوں نے خود کو قرنطینہ نہیں کیا اور اور ایک دعوت میں شرکت کیلئے پہنچ گئیں۔

View this post on Instagram

Even if the report comes negative still you need to isolate for 14 days that is very important. Everyone from maids, drivers and all the guests #KanikaKapoor met will need to be quarantined for 14 days. One of the guests as seen in this picture is also #vasundhararaje has also gone for self quarantine #besafe #covid2019 #CoronaVirus

A post shared by Viral Bhayani (@viralbhayani) on

میڈیا رپورٹ کے مطابق کانیکا نے نزلے اور بخار کی شکایت پر ڈاکٹر سے رجوع کیا جنہوں نے کرونا کی تشخیص کا ٹیسٹ کروانے کی تجویز دی جس پر دو روز قبل انہوں نے ٹیسٹ کرایا جس کی رپورٹ بھی مثبت آ گئی اور گلوکارہ نے خود ہی انسٹاگرام پوسٹ کے ذریعے اس کی تصدیق بھی کر دی۔ انہوں نے لکھا کہ ”جب میں واپس بھارت پہنچی تو زکام اور بخار کی شکایت تھی، جس کے بعد میں نے ڈاکٹر سے رجوع کیا اور کرونا کا ٹیسٹ کروانے کا فیصلہ کیا۔ میں نے وائرس کی تصدیق ہونے کے بعد خود کو قرنطینہ کرلیا جبکہ گھر والے بھی سماجی علیحدگی اختیار کرچکے ہیں۔“

View this post on Instagram

Hello everyone, For the past 4 days I have had signs of flu, I got myself tested and it came positive for Covid-19. My family and I are in complete quarantine now and following medical advice on how to move forward. Contact mapping of people I have been in touch with is underway aswell. I was scanned at the airport as per normal procedure 10days ago when I came back home, the symptoms have developed only 4 days ago. At this stage I would like to urge you all to practice self isolation and get tested if you have the signs. I am feeling ok, like a normal flu and a mild fever, however we need to be sensible citizens at this time and think of all around us. We can get through this without panic only if we listen to the experts and our local, state and central government directives. Wishing everyone good health. Jai Hind ! Take care, KK

A post shared by Kanika Kapoor (@kanik4kapoor) on

گلوکارہ کی پوسٹ کے بعد انکشاف ہوا کہ کانیکا 15 مارچ کو بھارت کے شہر لکھنو واپس پہنچیں جس کے بعد انہوں نے ایک تقریب میں شرکت کی جس میں سیاسی رہنماؤں اور ججوں سمیت 300 افراد نے شرکت کی۔ پارٹی میں شرکت کرنے والے بھارتیہ جنتا پارٹی کی رکن اسمبلی وشندھارا راجی اور ان کے صاحبزادے دشیانت نے بھی خود کو قرنطینہ کرلیا۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر رکن اسمبلی نے بتایا کہ ”ہم نے رات کے کھانے کی دعوت میں شرکت کی اور اس میں کانیکا بھی موجود تھیں، انہیں وائرس کی تشخیص ہونے کے بعد ہم نے خود کو گھر تک محدود کر لیا ہے۔“

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق ان کے بیٹے دشیانت ’ایم پی‘ ہیں جنہوں نے اس پارٹی میں شرکت کرنے کے بعد پارلیمینٹ کے اجلاسوں میں بھی شرکت کی اور سینٹرل ہال میں وہ سوریندرا ناگر، نیشی کانت اور منوج تیاواری کیساتھ بیٹھتے رہے۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ بھارتی ریاست اترپردیش کے وزیر صحت جے پرتاپ سنگھ بھی اس پارٹی میں شریک تھے جبکہ اترپردیش کے محکمہ صحت کی جانب سے پارٹی میں شریک ہونے والے تمام افراد سے رابطوں کا سلسلہ شروع کر کے انہیں الگ تھلگ رہنے اور کرونا کی علامات ظاہر ہونے پر آگاہ کرنے کی ہدایات جاری کی جا رہی ہیں۔

گلوکارہ کی جانب سے ٹویٹ کرنے کے بعد ان کے مداحوں اور شہریوں نے کانیکا کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور بولا کہ جب وہ برطانیہ سے واپس لوٹیں اور انہیں علامات ظاہر ہوگئیں تو پھر تقریب میں شرکت کیوں کی۔یاد رہے کہ بھارت میں کرونا وائرس کے مریضوں کی تعداد 223 تک پہنچ گئی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /تفریح