صوبائی حکومت تنہا لاک ڈاؤ ن نہیں کرسکتی،اگر ہم نے احتیاط نہ کی تو ۔۔۔سندھ حکومت نے خطرے کی گھنٹی بجا دی

صوبائی حکومت تنہا لاک ڈاؤ ن نہیں کرسکتی،اگر ہم نے احتیاط نہ کی تو ۔۔۔سندھ ...
صوبائی حکومت تنہا لاک ڈاؤ ن نہیں کرسکتی،اگر ہم نے احتیاط نہ کی تو ۔۔۔سندھ حکومت نے خطرے کی گھنٹی بجا دی

  



کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان پیپلز پارٹی کےسینئررہنمااورصوبائی وزیر تعلیم سندھ سعیدغنی نے کہا ہے کہ پورےملک میں لوگوں کوگھروں میں رہنےکیلئے مجبور کیا جائے،یہ ان کیلئے بہترہے،ایک صوبائی حکومت تنہا لاک ڈاؤ ن نہیں کرسکتی،اگر ہم نے احتیاط نہ کی تو ہماری کوششیں کام نہیں آئیں گی۔

نجی ٹی وی ’’جیو نیوز‘‘ کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے سعید غنی نے کہا کہ سندھ میں ایک خاتون کوکورونا وائرس تھا،انہوں نےنظراندازکیا، جس کے بعد متاثرہ خاتون کے خاندان کے12لوگوں کووبا لگ گئی ہے۔انہوں نے کہاکہ اگلے تین دن چھٹیوں میں لوگ مکمل طور پر اپنے آپ کو آئسولیشن میں رکھیں ،تین دنوں کے دوران شہری گھروں میں رہیں تاکہ محفوظ رہ سکیں،اگر ہم نے احتیاط نہیں کی تو ہماری کوششیں کام نہیں آئیں گی۔انہوں نے کہا کہ ایک صوبائی حکومت تنہا لاک ڈاؤ ن نہیں کر سکتی ،ہم لاک ڈاؤ ن کا اعلان کرکے وفاقی حکومت کے تعاون کے بغیراس پرعمل درآمد نہیں کراسکتے۔انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت نے جہاں اجتماعات ہوتے تھےبہت سے مقامات بندکر چکےہیں ،شہری کہیں اکٹھے ہوئےتوکوشش کریں گے کہ انہیں منتشر کریں۔انہوں نے کہا کہ ہم نے کوئی نیا فیصلہ نہیں کیا ،سندھ حکومت کا کوئی مختلف فیصلہ نہیں ہے،ہم نے بھی یہی کہا ہے کہ لوگ گھروں میں رہیں جبکہ وزیر اعظم نے بھی لوگوں سے گھروں میں رہنے کی اپیل کی ہے، آج ہمارے جتنے مریض ہیں آنے والے دنوں میں یہ مرض بڑھتا ہی جائے گا،اگر کوئی یہ سمجھتا ہے کہ کاروبار بند کرکے اپنی اکانومی کو بچا لے گا تو وہ غلط ہے،لوگوں کو گھروں میں روکنے کا مقصد وائرس کے پھیلاؤ کو روکنا ہے۔

مزید : قومی