نیٹوسیکرٹری جنرل کی صدرزرداری سے عین وقت پر ملاقات ملتوی ، سپلائی بحال نہ ہونے سے فرق نہیں پڑتا:جنرل جان ایلن

نیٹوسیکرٹری جنرل کی صدرزرداری سے عین وقت پر ملاقات ملتوی ، سپلائی بحال نہ ...
 نیٹوسیکرٹری جنرل کی صدرزرداری سے عین وقت پر ملاقات ملتوی ، سپلائی بحال نہ ہونے سے فرق نہیں پڑتا:جنرل جان ایلن

  



واشنگٹن، کابل(مانیٹرنگ ڈیسک)شکاگو میں نیٹو سربراہ اجلاس کے موقع پر صدر آصف علی زرداری اور نیٹو کے سیکرٹری جنرل راسموسین کے درمیان ہونے والی طے شدہ ملاقات آخری وقت پر ملتوی کردی گئی ہے جبکہ صدر مملکت کی امریکی ہم منصب سے ملاقات کا کوئی منصوبہ ہی نہیںتھا ۔دوسری طرف امریکی کمانڈر جنرل جان ایلن نے کہاہے کہ اگر نیٹو سپلائی بحال نہیں ہوتی تو بھی مسئلہ نہیں ہوگا۔امریکی حکام نے کہاہے کہ اُنہیں یقین ہے کہ نیٹو سپلائی کا معاملہ جلد حل ہوجائے گی اورآج صدر پاکستان اُس کا اعلان بھی کرسکتے ہیں ۔نیٹو کے سیکرٹری جنرل راسموسین سے صدر مملکت کی ہونے والی ملاقات ایک مرتبہ پھر آخری وقت پر ملتوی کردی گئی جس کا اعلان نیٹو نے صدر زرداری کے پہنچنے کے دوگھنٹے بعد کیا۔ذرائع کے مطابق نیٹو سپلائی کے معاملات طے نہ ہونے کی وجہ سے ملاقات ملتوی کردی گئی تاہم صدارتی ترجمان کاکہناہے کہ صدرزرداری کے تاخیر سے پہنچنے کی وجہ سے ملاقات ملتوی ہوئی ہے اور اگر ممکن ہوا تو ملاقات کا وقت دوبارہ طے کیاجائے گا۔ دوسری طرف صدر اوباما کے ساتھ نیٹو سربراہی اجلاس میں شرکت کے لیے شکاگو روانگی سے قبل میڈیا سے گفتگو کرتے امریکی قومی سلامتی کے نائب مشیر بین رہوڈز نے کہا کہ امریکہ کو یقین ہے کہ نیٹو سپلائی کی بحالی کا معاملہ حل ہو جائے گا تاہم اس پر ابھی بہت سا کام کرنا باقی ہے۔ انہوں نے کہا کہ صدر اوباما اور صدر زرداری کی نیٹو کانفرنس کے موقع پر ملاقات کا کوئی منصوبہ نہیں ہے۔ افغانستان میں موجود امریکی فوج کے کمانڈر جنرل جان ایلن نے غیر ملکی خبررساں ایجنسی سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ وہ جلد نیٹوسپلائی کی بحالی کے لیے پرامید ہیں اور یہ نہیں جانتے کہ مزید کتناوقت لگ سکتاہے۔جنرل جان ایلن نے کہاکہ اگر نیٹو سپلائی بحال نہیں ہوتی تو بھی اُنہیں کوئی مسئلہ نہیں ہوگا۔واضح رہے کہ صدر مملکت سے نیٹو سیکرٹری جنرل کی ملاقات 19مئی کو شیڈول تھی جو تاخیر کے بعد آج ہونی تھی لیکن بالآخرآج بھی نہ ہوسکی ۔

مزید : قومی /اہم خبریں