غداری کیس : حکومتی تبدیلی کے مراحل میں ہے، موقف مختلف بھی ہو سکتا ہے: جسٹس جواد ایس خواجہ

غداری کیس : حکومتی تبدیلی کے مراحل میں ہے، موقف مختلف بھی ہو سکتا ہے: جسٹس ...
غداری کیس : حکومتی تبدیلی کے مراحل میں ہے، موقف مختلف بھی ہو سکتا ہے: جسٹس جواد ایس خواجہ

  


اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) سپریم کورٹ نے سابق فوجی صدر پرویز مشرف کے خلاف غداری کا مقدمہ چلانے کیلئے درخواست کی سماعت 22 مئی تک ملتوی کر دی ہے۔ درخواست گزار کے وکیل اے کے ڈوگر نے کہا کہ پرویز مشرف ملزم نہیں مجرم ہیں، عدالت نے انہیں صرف قصور وار قرار دیا ہے۔ جسٹس جواد ایس خواجہ کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے سابق صدر جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کے خلاف غداری کا مقدمہ چلانے کیلئے درخواست کی سماعت کی، درخواست گزار کے وکیل اے کے ڈوگر نے دلائل دیئے کہ صدر کو آرٹیکل6 میں معافی کا اختیار نہیں، جنرل پرویز مشرف ملزم نہیں مجرم ہیں، عدالت نے انہیں صرف قصور وار قرار دیا ہے، اس پر جسٹس جواد ایس خواجہ نے ریمارکس دیئے کہ ابھی حکومت تبدیلی کے مرحلہ میں ہے ،وفاق کا موقف مختلف بھی ہو سکتا ہے۔ جسٹس اعجاز افضل نے کہا کہ وفاقی حکومت کے مجاز افسر کی طرف سے شکایت درج ہونا ہے، صحت جرم سے انکار یا اقرار کا آپشن بعد میں آئے گا، مزید سماعت 22 مئی کو ہو گی۔

مزید : اسلام آباد /اہم خبریں


loading...