جھوٹے وعدے سے شادی کرنے والا زنا ءکا مرتکب ہوگا: سپریم کورٹ

جھوٹے وعدے سے شادی کرنے والا زنا ءکا مرتکب ہوگا: سپریم کورٹ
جھوٹے وعدے سے شادی کرنے والا زنا ءکا مرتکب ہوگا: سپریم کورٹ

  


نئی دہلی (مانیٹر نگ ڈیسک)بھارتی سپریم کورٹ نے سہانے سپنے دکھا کر اور جھوٹا وعدہ کر کے شادی کرنے کو ریپ قرار دیا ہے ۔ عدالت نے واضح کیا ہے کہ اہلِ خانہ سے مخالفت مول لیکر سہانے سپنوں اور وعدوں کی بناءپر مرضی کی شادی کرنے والی لڑکی سے اگر وعدہ پورا نہیں کیا جاتا اور یہ معاملہ عدالت کے سامنے آتا ہے تو ایسے شخص کو زنا کامرتکب قراردے کر اس جرم کے تحت سزا دی جائے گی تاہم ایسے مقدمات میں عدلیہ کو انتہائی احتیاط سے کام لینا ہوگا ۔عدالت کا باریک بینی سے یہ جائزہ بھی لینا ہوگا کہ آیا جھو ٹے وعدے کرکے کسی لڑکی سے شادی کرنے وال شخص واقعی شادی کرنے میں مخلص تھا یا صر ف اس نے اپنی جنسی خواہشات کی تکمیل کیلئے ایساکیا۔ اگر یہ ثابت ہوجائے کہ اس نے محض جنسی خواہشات کیلئے جھوٹے وعدوں سے ورغلا کر شادی کی تو ایسے شخص کو زناءکے جرم کے تحت سزا دی جانا چاہئے ۔

مزید : انسانی حقوق


loading...