کورونا پر سیاست نہ کی جائے، عمران خان، ٹیلی میٹری سسٹم کی تنصیب میں تاخیر پر سخت ایکشن ارسا میں وفاق، سندھ پنجاب کے نمائندے فارغ، مسعود اختر کو چیئر مین ایس ای سی پی تعینات کرنے کی منظوری، آزاد کشمیر کو آدھی قیمت پر گندم فروخت کرنے کا فیصلہ

        کورونا پر سیاست نہ کی جائے، عمران خان، ٹیلی میٹری سسٹم کی تنصیب میں ...

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) وزیراعظم عمران خان نے قومی قیادت کو پیغام دیا ہے کہ ملک بھر میں جاری کورونا وائرس کی وبائی صورتحال پر سیاست نہ کی جائے۔تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کے زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں کورونا وائرس سے متعلق سپریم کورٹ کے فیصلے کا جائزہ لیا گیا۔ مشیر پارلیمانی امور بابر اعوان نے وزیراعظم کو سپریم کورٹ کے فیصلے پر بریفنگ دی۔ اس موقع پر وزیراعظم نے کہا کہ حکومت سپریم کورٹ کے فیصلوں پر من وعن عملدرآمد یقینی بنائے گی۔وفاقی کابینہ کے اجلاس میں صوبوں میں پانی کی منصفانہ تقسیم کیلئے ٹیلی میٹرز نصب کرنے کی منظوری بھی دی گئی۔ وزیراعظم عمران خان نے وفاقی وزیر فیصل واوڈا کے اقدامات کو سراہتے ہوئے کہا کہ پانی کی منصفانہ تقسیم وقت کی اہم ضرورت ہے۔ وزارت آبی وسائل اس معاملے کو منطقی انجام تک پہنچائے۔ٹڈی دل کے بڑھتے خطرات پر بات کرتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ اس سے نمٹنے کیلئے حکومت پوری طرح مستعد ہے۔ ہم نے فوری اور بروقت اقدامات شروع کر دئیے تھے۔ انہوں نے قومی قیادت کو پیغام دیا کہ وباؤں کے معاملے پر سیاست نہ کی جائے۔ذرائع کے مطابق اجلاس میں ایس ای سی پی پالیسی بورڈ چیئرمین کی تعینات کی منظوری جبکہ فیڈرل کنسولیڈیشن فنڈ اور پبلک اکاؤنٹس کی کسٹڈی اور آپریشنز کی سمری موخر کر دی گئی۔اس کے علاوہ ہیلتھ کیئر اتھارٹی بورڈ ممبران کی نامزدگی اور ملک کے بڑے ایئرپورٹس آؤٹ سورس کرنے کے معاملے پر بحث کی گئی۔ کابینہ نے اس پر ایک کمیٹی قائم کر دی گئی۔ وفاقی کابینہ نے پانی چوری کی روک تھام کے ٹیلی میٹری سسٹم کی تعمیر میں تاخیر پر سخت ایکشن لیتے ہوئے ارسا کے تین ممبران کو عہدوں کو ہٹانے کی منظوری دے دی ہے۔وفاقی کابینہ نے سندھ، پنجاب اور وفاق کے نمائندوں کو ہٹانے کی منظوری دی۔ ارسا میں نئے ممبران کی تعیناتی کے لئے صوبوں سے نام مانگے جائیں گے جن کی تعیناتی کی منظوری دی جائے گی۔ ارسا ممبران کے لیے عمر کی بالائی حد 65 سال مقرر کرنے کی منظوری دے دی گئی ہے۔ اس سے قبل ارسا ممبران کے لئے عمر کی کوئی حد مقرر نہیں تھی۔مستقبل میں ارسا ممبران کی تقرری تین سال کی بجائے صرف ایک سال کے لیے کی جائے گی۔ عالمی بینک نے پانی چوری روکنے اور صوبوں کے درمیان پانی کی منصفانہ تقسیم کے لئے ٹیلی میٹری سسٹم کی تنصیب کے لیے 3 ملین ڈالرز سے زائد کی رقم مختص کی تھی۔تاہم ارسا کی نااہلی کے باعث بینک نے 3 ملین ڈالر کی رقم واپس لے لی۔ وفاقی حکومت نے نوید اصغر چودھری کو ممبر فنانس واپڈا تعینات کر دیا ہے۔ گریڈ 20 کے نوید اصغر چوہدری کو تین سال کیلئے ممبر فنانس تعینات کیا گیا ہے۔کابینہ اجلاس کے بعد میڈیا بریفنگ میں وزیر اطلاعات شبلی فراز نے بتایا کہ اجلاس میں بڑے ائیرپورٹس کو آؤٹ سورس کرنے کے معاملے پر بھی غور کیا گیا، ائیرپورٹس کے معامے پر لیگل فریم ورک کیلئے 30جون کی تاریخ رکھی گئی ہے۔شبلی فراز نے بتایا کہ اس عمل کو فاسٹ ٹریک پر لانے کیلئے وزیر ہوابازی غلام سرور کی سربراہی میں کمیٹی بنائی گئی ہے جس میں زلفی بخاری، رزاق داؤد بھی شامل ہیں۔انہوں نے بتایا کہ اجلاس میں سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن کے چیئرمین کی منظوری دی گئی، سابق چیئرمین خالد مرزا کو ممبر بورڈ بنایا گیا ہے۔سینیٹر شبلی فراز نے کہا کہ ملک میں پانی اور صوبوں کا شیئر اور ارسا ایک دیرینہ مسئلہ ہے،حکومت پانی کے حوالے سے ایک شفاف سسٹم لانا چاہتی ہے،سندھ پنجاب اور فیڈرل ممبران کی کارکردگی کافی کمزور رہی ہے، ان کے خلاف ا انکوائری کی جائے، ایسے لوگ لائے جائیں جو ٹیلی میٹری سسٹم کو آگے بڑھائیں، ٹیلی میٹری سسٹم میں ریکارڈ ہوتا ہے کہ کس صوبے کو کتنا پانی دیا گیا۔ وفاقی وزیر اطلاعات ونشریات سینیٹر شبلی فراز نے کہا ہے کہ چینی کے بحران پر بنائے گئے تحقیقاتی کمیشن کی رپورٹ عید سے پہلے آجائے گی،اس کے لیے کابینہ کا خصوصی اجلاس بھی بلا سکتے ہیں،غیر قانونی بھرتیوں کے معاملے پر وزیر اعظم نے کابینہ میں متعلقہ وزارتوں سے جواب طلب کیا۔ وزیر اعظم نے ڈیٹا نہ فراہم کرنے والی وزارتوں پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ایک ہفتے میں فہرست فراہم کرنے کی ہدایت کی ہے، 638 غیر قانونی بھرتیوں کی نشان دہی ہوئی،مقامی ٹریکٹر ز کیلئے ڈھائی ارب کی سبسڈی رکھی گئی ہے.انٹرسٹ شیئرنگ کیلئے 8.8 اور کپاس کی ادویات کیلئے 6 ارب روپے رکھے گئے ہیں۔زرعی شعبے کو کھاد کی مد میں 7 ارب روپے کی سبسڈی دی گی ہے۔ کابینہ نے اقتصادی رابطہ کمیٹی کے 13 مئی اجلاس کے فیصلوں کی توثیق کی،وزیر اعظم نے ارسا کے ممبران کی کارکردگی پر تحفظات کا اظہار کیا ہے اور فیصلہ کیا گیا کہ ارسا میں قابل لوگ لائے جائیں کیونکہ ایک خاص گروپ کیوجہ سے معاملات آگے نہیں بڑھ سکے۔ کابینہ کے اجلاس تے متعلق تفصیلات بتاتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ غیر قانونی بھرتیوں کا معاملہ وزیر اعظم نے کابینہ میں متعلقہ وزارتوں سے جواب طلب کیا۔ وزیر اعظم نے ڈیٹا نہ فراہم کرنے والی وزارتوں پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ایک ہفتے میں فہرست فراہم کرنے کی ہدایت کی ہے۔ 638 غیر قانونی بھرتیوں کی نشان دہی ہوئی۔ یہ ملازمتیں اگست 2016 سے آگے کی ہیں۔ 27 وزارتوں نے تفصیلات فراہم کر دی ہیں۔کابینہ کے اجلاس کے فیصلوں کے بارے میں آگاہ کرتے ہوئے ہوئے انہوں نے کہا کہ زراعت ملکی معیشت کا اہم شعبہ ہے وہ اس صورت حال سے ملک کو باہر نکال سکتا ہے۔مقامی ٹریکٹر ز کیلئے ڈھائی ارب کی سبسڈی رکھی گئی ہے.انٹرسٹ شیئرنگ کیلئے 8.8 اور کپاس کی ادویات کیلئے 6 ارب روپے رکھے گئے ہیں۔زرعی شعبے کو کھاد کی مد میں 7 ارب روپے کی سبسڈی دی گی ہے۔ کابینہ نے اقتصادی رابطہ کمیٹی کے 13 مئی اجلاس کے فیصلوں کی توثیق کی،شبلی فراز نے کہا کہ وزیر اعظم نے ارسا کے ممبران کی کارکردگی پر تحفظات کا اظہار کیا ہے اور فیصلہ کیا گیا کہ ارسا میں قابل لوگ لائے جائیں کیونکہ ایک خاص گروپ کیوجہ سے معاملات آگے نہیں بڑھ سکے.وزیر اعظم کی ہدایت پر ارسا ممبران کے بارے میں ہدایات کی کہ سندھ، پنجاب اور وفاق ممبران کی کارکردگی کی بنا پر ان کے خلاف انکوائری کا فیصلہ کیا گیا۔ ملک میں پانی کی تقسیم کے لیے ٹیلی میٹر کی تنصیب پر بھی غور کیا گیا۔ سکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن میں ایس مسعود اختر نقوی کو چیئرمین بنایا گیا، سابقہ چیئرمین خالد مرزا کو ممبر بورڈ بنایا گیا۔ان کا کہنا تھا کہ آج کے اجلاس میں ائیر پورٹ کو آوٹ سورس کرنے کا معاملہ بھی زیر غور آیا یہ اقدام پاکساتانی ہوائی اڈوں کو عالمی سطح پر لانے کے لیے کیا جارہا ہے۔اس کے لیے وفاقی وزیر سرور خان کی سربراہی میں کمیٹی بنائی گئی ہے جس میں مشیر تجارت و دیگر شامل ہیں۔ اس حوالے سے رواں سال 30 جون تک لیگل فریم ورک واضح کردیا جائے گا۔ اس فیصلے سے ہوائی اڈوں کے ملازمین کو کوئی خطرہ نہیں بلکہ مزید روزگار کے مواقع پیدا ہونے کا امکان ہے۔وزیر اطلاعات نے بتایا کہ وزیر اعظم نے جن وزارتوں کے میڈیا واجبات ہیں انھیں عید سے قبل مکمل ادائیگی کی ہدایت کی ہے۔ یہ اقدام میڈیا ورکرز کی تنخواہوں اور واجبات کو یقینی بنانے کیلئے کیا گیاہے۔وفاقی وزیر نے بتایا کہ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا لائن آف کنٹرول پر رہنے والوں کو پیکج دیا جائے گا۔ اس کے علاوہ آزاد کشمیر کو آدھی قیمت پر گندم فروخت کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ عید سے پہلے شوگر انکوائری رپورٹ آجائے گی۔ یقین دہانی کراتا ہوں آئندہ پریس کانفرنس تک شوگر انکوائری رپورٹ سامنے ہو گی۔ شوگر انکوائری رپورٹ کے لئے کابینہ کا خصوصی اجلاس بلا سکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ شہبازشریف نے سوالوں کاجواب دینے کی بجائے نئے الیکشن کامطالبہ کردیا جس پرافسوس ہے۔ وہ سوالوں کے جوابات سے گھبراکرایسی بات کررہے ہیں ایسی صورت حال میں کسی لیڈر کو ایسی باتیں زیب نہیں دیتی وہ احتساب سے بھاگ رہے ہیں جو نامناسب ہیں۔

وفاقی کابینہ

اسلام آباد، کراچی، کوئٹہ،پشاور (مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)ملک بھر میں کورونا سے مزید 33 افراد جاں بحق ہو گئے جبکہ 1198 نئے کیسز رپورٹ ہوئے،کورونا سے جاں بحق افراد کی مجموعی تعداد 969 ہو گئی ہے جبکہ نئے کیسز سامنے آنے کے بعد مریضوں کی تعداد 44996 تک پہنچ گئی ہے اب تک سب سے زیادہ اموات خیبرپختونخوا میں سامنے آئی ہیں جہاں کورونا سے 345 افراد انتقال کرچکے ہیں جبکہ سندھ میں 299 اور پنجاب میں 273 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں۔اس کے علاوہ بلوچستان میں 38، اسلام آباد 9، گلگت بلتستان میں 4 اور آزاد کشمیر میں مہلک وائرس سے ایک شخص جاں بحق ہوا ہے۔منگل کے روزسندھ سے 706 کیسز 19 ہلاکتیں، خیبر پختونخوا سے 324 کیسز 11 ہلاکتیں، بلوچستان 128 کیسز ایک ہلاکت، اسلام ااباد 37 کیسز 2 ہلاکتیں اور آزاد کشمیر سے 3 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔سندھ میں کورونا کے مزید 706 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں اور 19 افراد انتقال کرگئے جس کی تصدیق وزیراعلیٰ نے کی۔مراد علی شاہ کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں میں 3803 ٹیسٹ کیے گئے جن میں 706 نئے مریض سامنے آئے جبکہ پچھلے 24گھنٹوں میں 19 مریض انتقال کر گئے۔ اس طرح صوبے میں کورونا کے مریضوں کی کل تعداد 17947 اور ہلاکتیں 299 ہوگئی ہیں۔وزیراعلیٰ نے بتایا کہ 19 مارچ کو کورونا سے پہلی ہلاکت ہوئی اور اموات کی تعداد سب سے زیادہ ہے۔سندھ میں گزشتہ 24 گھنٹوں میں مزید 252 مزید مریض صحتیاب ہوئے جس سے صحتیاب ہونیوالوں کی تعداد 4741 ہے۔بلوچستان میں کورونا کے مزید 128 کیسز سامنے آئے ہیں اور ایک ہلاکت ہوئی ہے جو سرکاری پورٹل پر رپورٹ کیے گئے ہیں۔پورٹل کے مطابق صوبے میں کورونا کے کیسز کی کل تعداد 2820 ہوگئی ہے جب کہ 38 افراد اب تک جاں بحق ہوچکے ہیں۔بلوچستان میں کورونا سے متاثرہ 524 افراد صحت یاب بھی ہوچکے ہیں۔وفاقی دارالحکومت سے کورونا وائرس کے مزید 37 کیسز اور 2 ہلاکتیں سامنے آئی ہیں جو سرکاری پورٹل پر رپورٹ ہوئے ہیں۔سرکاری پورٹل کے مطابق نئے کیسز سامنے آنے کے بعد اسلام آباد میں کیسز کی مجموعی تعداد 1034 ہو گئی ہے جب کہ دارالحکومت میں وائرس سے جاں بحق افراد کی تعداد 9 ہے۔اس کے علاوہ اسلام آباد میں اب تک کورونا وائرس سے 113 افراد صحتیاب ہوچکے ہیں۔آزاد کشمیر سے کورنا کے مزید 3 کیسز سامنے آئے ہیں جو سرکاری پورٹل پر رپورٹ ہوئے ہیں۔پورٹل کے مطابق علاقے میں کورونا کے مریضوں کی تعداد 115 ہوگئی ہے جب کہ علاقے میں اب تک وائرس سے ایک ہلاکت ہوئی ہے۔سرکاری پورٹل کے مطابق آزاد کشمیر میں کورونا سے اب تک 77 افراد صحت یاب ہوچکے ہیں۔خیبر پختونخوا میں منگل کو کورونا وائرس سے مزید 11 افراد جان کی بازی ہار گئے جس کے بعد صوبے میں ہلاکتوں کی تعداد 345 ہوگئی ہے۔صوبائی محکمہ صحت کے مطابق پیر کو صوبے میں کورونا کے مزید 324 کیسز سامنے آئے جس کے بعد متاثرہ افراد کی کل تعداد 6554 ہوچکی ہے۔ کے پی میں 2058 افراد کورونا وائرس سے صحت یاب بھی ہو چکے ہیں۔پیر کو گلگت بلتستان میں مزید 10 افراد میں مہلک وائرس کی تشخیص ہوئی جس کے بعد متاثرہ مریضوں کی تعداد 550 ہو گئی ہے۔

پاکستان ہلاکتیں

نیویارک،لندن،میڈرڈ (مانیٹرنگ ڈیسک،نیوز ایجنسیاں)دنیا بھر میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد 48 لاکھ 94 ہزار 98 اور ہلاکتیں 3 لاکھ 20 ہزار 180 ہو گئیں۔ تفصیلات کے مطابق کورونا وائرس کے دنیا بھر میں 26 لاکھ 65 ہزار 853 مریض اب بھی ہسپتالوں میں زیرِ علاج ہیں جن میں سے 46 ہزار 767 کی حالت تشویش ناک ہے، 19 لاکھ 8 ہزار 65 مریض صحت یاب ہو چکے ہیں۔امریکا تاحال کورونا وائرس سے سب سے زیادہ متاثرہ ملک ہے جہاں ناصرف کورونا مریض بلکہ اس سے ہلاکتیں بھی اب تک دنیا کے تمام ممالک میں سب سے زیادہ ہیں۔امریکا میں کورونا وائرس سے اب تک 91 ہزار 981 افراد موت کے منہ میں پہنچ چکے ہیں، اس سے بیمار ہونے والوں کی مجموعی تعداد 15 لاکھ 50 ہزار 294 ہو چکی ہے۔امریکا کے ہسپتالوں میں 11 لاکھ 1 ہزار 930 کورونا مریض زیرِ علاج ہیں جن میں سے 16 ہزار 868 کی حالت تشویش ناک ہے جبکہ 3 لاکھ 56 ہزار 383 کورونا مریض اب تک شفایاب ہو چکے ہیں۔کورونا وائرس سے روس میں کل اموات 2 ہزار 722 ہو گئیں جبکہ اس کے مریضوں کی تعداد 2 لاکھ 90 ہزار 678 ہو چکی ہے۔اسپین میں کورونا کے اب تک 2 لاکھ 78 ہزار 188 مصدقہ متاثرین سامنے آئے ہیں، اس وباء سے اموات 27 ہزار 709 ہو چکی ہیں۔برازیل میں کورونا وائرس 16 ہزار 853 زندگیاں نگل چکا ہے جبکہ اس کے مریضوں کی تعداد 2 لاکھ 55 ہزار 368 تک جا پہنچی ہے۔برطانیہ میں کورونا سے اموات کی تعداد 34 ہزار 796 ہوگئی جبکہ کورونا کے کیسز کی تعداد 2 لاکھ 46 ہزار 406 ہو گئی۔اٹلی میں کورونا وائرس کی وباء سے مجموعی اموات 32 ہزار 7 ہو چکی ہیں، جہاں اس وائرس کے اب تک کل کیسز 2 لاکھ 25 ہزار 886 رپورٹ ہوئے ہیں۔فرانس میں کورونا وائرس کے باعث مجموعی ہلاکتیں 28 ہزار 239 ہوگئیں جبکہ کورونا کیسز 1 لاکھ 79 ہزار 927 ہو گئے۔جرمنی میں کورونا سے کْل اموات کی تعداد 8 ہزار 123 ہو گئی جبکہ کورونا کے کیسز 1 لاکھ 77 ہزار 289 ہو گئے۔ترکی میں کورونا وائرس سے جاں بحق ہونے والوں کی تعداد 4 ہزار 171 ہو گئی جبکہ کورونا کے کل کیسز 1 لاکھ 50 ہزار 593 ہو گئے۔بھارت میں کورونا وائرس متاثرین کی تعداد ایک لاکھ سے تجاوز کر گئی ہے۔مقامی میڈیا اسے دنیا کی دوسری بڑی آبادی والے ملک بھارت کیلئے بہت بڑا چیلنج قرار دے رہا ہے۔ یہ خبر حکومت کے اس اعلان کے ایک بعد سامنے آئی ہے جس میں لاک ڈاؤن میں اہم نرمیاں پیدا کیے جانے سے متعلق بتایا گیا تھا۔لاک ڈاؤن میں نرمی کے باوجود ملک میں متاثرین کی تعداد میں مسلسل اضافہ دیکھنے میں آ یا ماہرین نے اس کی وجہ بڑی تعاد میں لوگوں کا ایک دوسرے سے ملنا جلنا بتائی ہے۔

عالمی ہلاکتیں

مزید :

صفحہ اول -