ٹڈی دل کا بھر پور اٹیک، فصلیں برباد کاشتکاروں کی کمر ٹوٹ گئی

  ٹڈی دل کا بھر پور اٹیک، فصلیں برباد کاشتکاروں کی کمر ٹوٹ گئی

  

ملتان، وہاڑی، لودھراں (سٹی رپورٹر، بیورو رپورٹ، نامہ نگار، نمائندہ پاکستان)ملتان ٹڈی دل کا مسئلہ پاکستان سمیت دنیا کے 26 ممالک کو درپیش ہے۔ پچھلے برس سعودیہ اور یمن میں بارشوں کی وجہ سے ایران کے راستے یہ کیڑا پاکستان میں داخل ہوا۔ پاک آرمی،محکمہ زراعت پنجاب، پی ڈی ایم اے،ضلعی انتظامیہ پر مشتمل ٹیموں کے تحت مشترکہ کنٹرول آپریشن تا حال جاری ہے۔محکمہ زراعت کی بروقت(بقیہ نمبر8صفحہ6پر)

کارروائیوں سے ٹڈی دل کے حملہ سے پنجاب میں فصلوں کوزیادہ نقصان نہیں پہنچا۔اب تک مجموعی طور پر 37لاکھ ہیکٹیرز رقبہ کی سرویلنس مکمل کی جاچکی ہے اور 1لاکھ33ہزار ہیکٹیرز رقبے پر44 ہزار لٹر سے زائد پیسٹی سائیڈز کا سپرے کیا جاچکا ہے اور ابھی 90 ہزار لٹر سے زائد پیسٹی سائیڈز کا سٹاک موجود ہے یہ بات وزیر زراعت پنجاب ملک نعمان احمد لنگڑیال نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ وزیر زراعت پنجاب نے مزید بتایا کہ حکومت پنجاب نے سپرے مشینری اور زہریں ہنگامی بنیادوں پر خرید کر فیلڈمیں فراہم کی ہیں اور محکمہ زراعت پنجاب کے3 ہزار سے زائد ورکرز اور328 گاڑیاں ٹڈی دل کے کنٹرول کیلئے اس مہم میں حصہ لے رہے ہیں۔ صوبہ سے لوکسٹ کے مکمل تدارک تک تمام متعلقہ محکموں کی سرگرمیاں جاری رہیں گی اور ان سرگرمیوں کی روزانہ کی بنیاد پر مانیٹرنگ بھی کی جارہی ہے۔ ضرورت کے مطابق ہوائی (ایریل) آپریشن بھی کر رہے ہیں۔ ٹڈی دل کا انڈوں، بچوں اور ہاپرز کی حالتوں میں تدارک یقینی بنایا جارہا ہے تاکہ آئندہ نسل پروان نہ چڑھ سکے۔ تمام متعلقہ سٹیک ہولڈزر کی باہمی کوششوں سے سرویلنس اور کنٹرول میں مزید بہتری آرہی ہے۔ اس وقت ٹڈی دل مائیگریشن کا عمل جاری رکھے ہوئے ہے اور محکمہ زراعت کی خصوصی ٹیمیں پیر محل،خانیوال،میاں چنوں،بورے والا،خیر پور ٹامیوالی کی مانیٹرنگ کا عمل جاری رکھے ہوئے ہیں۔یہ کیڑا تاحال چولستان کی طرف محوِ سفر ہے جہاں محکمہ زراعت کی خصوصی ٹیمیں موجود ہیں جو مائیکرون اور جہازوں کے ذریعے سپرے کر کے اس کا خاتمہ کریں گی۔وزیر زراعت پنجاب نے کاشتکاروں سے بھی اپیل کی ہے کہ کسی بھی علاقے میں ٹڈی دل کا مشاہدہ ہونے پر اس کی اطلاع فوری طور پر محکمہ زراعت(توسیع) کے مقامی دفاتر یا ضلعی انتظامیہ کو دی جائے تاکہ محکمہ زراعت کی ٹیمیں اس کو کنٹرول کرنے کیلئے فوری طور پر سپرے کر سکیں۔ لودھراں کی تحصیل دنیاپور کہروڑپکا اور لودھراں کے مختلف علاقوں میں ٹڈی دل نے حملہ کردیا جس سے کپاس،سورج مکھی،گھاس اور دیگر سینکٹروں ایکٹر پر کاشت کی گئی فصلیں مکمل طور پر تباہ ہوگئیں ٹڈی دل کے خاتمے کے لیے ضلعی انتظامیہ نے فوری ملتان سے پلنجری اور دیگر سامان منگوا کر محکمہ زراعت اورمقامی کاشتکاروں کی مدد سے ٹڈی دل کے خاتمے کے لیے اسپرے بھی کیا ہے جبکہ ڈھول بجاکر ٹڈی دل کو سوموار کے روز بھگانے میں کامیاب ہوگئی ڈپٹی کمشنر عمران قریشی نے کہا کہ میں خود فیلڈ میں تھا ٹڈی دل جس بھی فصل پر بیٹھی اس کو مکمل طور پر تباہ کردیا ہے کاشتکار و ں کے نقصان کاتخمینہ لگانے کے لیے محکمہ زراعت اور ریونیو کو حکم جاری کردیا جس کے بعد کاشتکاروں کے نقصان کا ازالہ کیا جائے گا انہوں نے مزید کہا کہ سوموار کے روز ٹڈی دل کو لودھراں سے بھگا دیا گیا ہے۔ جلالپور پیر والہ (بہادرپور) کے 20 سے زائد مواضعات میں ٹڈی دل (مکڑی) نے ابو سعید، بیلے والہ، کنہوں، بہادرپور، ڈیپال، موتھا، بیٹواہی کے علاوہ دیگر علاقوں میں تباہی مچا دی َ - غریب کسان تھال، ڈھول بجاتے رہے آگ جلا کر دھواں کرکے شور مچا تے رہے مگر اربوں، کروڑوں کی تعداد میں ٹڈی دل کے جھنڈ سب کچھ منٹوں میں کھا گء -دو جھنڈوں کی شکل میں ٹڈی دل دریائے ستلج سے بھاولپور اور رحیم یار خان کی طرف چلی گئی -غریب کسان روتے رہے اور شور مچا تے رہے. ان کے بچے اور خواتین گھروں سے نکل آئے اور اپنی فصلوں کو بچانے کیلئے شور مچا تے رہے مگر اللہ کا عذاب آکر رھا- ملک محمد عارف رہنما ایپکا ڈویڑن ملتان، ملک اقبال ممبر، محمد حفیط، ملک محمد نواز، محمد زاہد، محمد سلیم نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ فوری طور پر سروے کرواکر غریب کسانوں کو نقصان کا ازالہ کیا جائے تاکہ کسان دوبارہ اپنی فصلیں کاشت کر سکیں - اب غریب لوگوں کا کوئی پرسان حال کوئی نہیں ہے۔صوبہ پنجاب میں پاک آرمی، پی ڈی ایم اے،محکمہ زراعت، ضلعی انتظامیہ اور فیڈرل پلانٹ پروٹیکشن ڈیپارٹمنٹ کی بہترین کوآرڈینیشن سے ٹڈی دل کی سرویلنس اور کنٹرول آپریشن کامیابی سے سرانجام دئیے جارہے ہیں وزیر اعلیٰ پنجاب،وزیر زراعت پنجاب،چئیرمین این ڈی ایم اے،سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو ٹڈی دل کے کنٹرول آپریشنز کا جائزہ لینے کیلئے مختلف اضلاع کے دورے کرچکے ہیں سیکرٹری زراعت پنجاب واصف خورشیدباقاعدگی سے ہفتہ میں دوبار ٹڈی دل کے کنٹرول آپریشنز کا جائزہ لینے کیلئے فیلڈ زکے ہنگامی دورے کررہے ہیں ڈی جی پی ڈی ایم اے اور ڈی جی زراعت(توسیع)پنجاب بھی سرویلنس اور آپریشنل سرگرمیوں کے سلسلہ میں فیلڈز میں موجود ہیں پاک آرمی کے ہیلی کاپٹرز اور ہوائی جہاز ضرورت کے مطابق ہوائی آپریشن بھی کر رہے ہیں ٹڈی دل کے مکمل خاتمہ کے لیے پاک آرمی، محکمہ زراعت، پی۔ ڈی۔ ایم۔ اے،ضلعی انتظامیہ، فیڈرل پلانٹ پروٹیکشن ڈیپارٹمنٹ کے تحت عملی کارروائیاں جاری رہیں گی ٹڈی دل کاتمام حالتوں میں تدارک یقینی بنایا جارہا ہے محکمہ زراعت کی مرتب کردہ بہترین حکمت عملی پر عملدرآمد سے صوبہ بھر میں ٹڈی دل کے حملہ سے فصلوں کوقابل ذکر نقصان نہیں پہنچا کورونا وائرس کی وبائی صورتحال کے پیش نظر حفاظتی اقدامات اپناتے ہوئے تمام متعلقہ محکموں کی مشترکہ کاوشوں سے ٹڈی دل کے کنٹرول کے سلسلہ میں حوصلہ افزا نتائج برآمد ہو رہے ہیں محکمہ زراعت کے تحت ٹڈی دل کی پنجاب میں موجودگی اور اس سے بچاؤ کیلئے کاشتکاروں کو آگاہی فراہم کی جارہی ہیفصلات کو ٹڈی دل سے بچانا ناممکن نہیں ہے۔محکمہ زراعت دیگر متعلقہ محکموں کے تعاون سے فصلات کو محفوظ بنانے کیلئے بھرپور طریقے سے عملی کرداراداکررہا ہیفصلوں کو بچانے کیلئے محکمہ زراعت کے ساتھ کاشتکاروں اور لوکل کمیونٹی کی شرکت اور تعاون بھی ضروری ہے آپریشنل سرگرمیوں کیلئے پاک آرمی،ضلعی انتظامیہ، پی ڈی ایم اے اور محکمہ زراعت کے پاس مختلف قسم کی سپرے مشینر ی،زرعی زہریں،لاجسٹک سپورٹ،فیول، راشن،حفاظتی کٹس ودیگر سامان کی کوئی کمی نہیں صوبہ سے لوکسٹ کے مکمل تدارک تک تمام سرگرمیوں کی روزانہ کی بنیاد پر مانیٹرنگ جاری رہے گی۔

کمرٹوٹ گئی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -