خیبر پختونخوا، بلوچستان میں دہشتگردی کے واقعات، نائب صوبیدار سمیت پاک فوج کے 8جوان شہید

خیبر پختونخوا، بلوچستان میں دہشتگردی کے واقعات، نائب صوبیدار سمیت پاک فوج ...

  

راولپنڈی(سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) بلوچستان میں بارودی سرنگ دھماکے اور دہشت گردوں کے ساتھ فائرنگ کے تبادلے میں پاک فوج کے نائب صوبیدار سمیت 7 جوان شہید ہو گئے۔ آئی ایس پی آر کے مطابق گزشتہ رات مچھ کے علاقے پیر غائب میں پٹرولنگ پر مامور گاڑی بیس کیمپ واپس جاتے ہوئے بارودی سرنگ سے ٹکرا گئی، واقعے میں جونیئر کمیشنڈ آفیسر سمیت 6 جوان شہید ہوگئے۔شہداء میں نائب صوبیدار احسان اللہ خان، نائیک زبیر خان، نائیک اعجاز احمد، مولا بخش، نور محمد، گاڑی کا سویلین ڈرائیور عبدالجبار شامل ہیں۔ دوسری جانب کیچ کے علاقے میں امن دشمنوں سے لڑتے ہوئے پاک فوج کے سپاہی امداد علی نے جام شہادت نوش کیا۔ منگل کو پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق بلوچستان میں دہشتگردی کے دو مختلف واقعات مچھ اور کیچ کے علاقے میں پیش آئے۔آئی ایس پی آر کے مطابق مچھ میں گزشتہ رات دہشتگردوں نے ایف سی کی گاڑی پر آئی ای ڈی سے حملہ کیا گیا۔آئی ایس پی آر کے مطابق دہشتگردی کے ان واقعات میں 7 جوان شہید ہوگئے۔آئی ایس پی آر کے مطابق کیچ میں دہشتگردوں سے فائرنگ کے تبادلے میں سپاہی امداد علی شہید ہوگئے جب کہ مچھ واقعے میں 5 جوان اور ایک سویلین ڈرائیور شہید ہوا۔آئی ایس پی آر نے بتایا کہ مچھ میں شہید ہونے والوں میں نائب صوبیدار احسان اللہ، نائک زبیر خان، نائک اعجاز احمد، نائک مولا بخش، نائک نور محمد اور ڈرائیور عبدالجبار شامل ہیں۔دوسری طرف شمالی وزیرستان کے علاقے میرعلی کے قریب ایک پر ہجوم بازار میں ریموٹ کنٹرول بم دھماکے سے ایک فوجی جوان شہید جبکہ دیگر 3 زخمی ہوگئے۔ سکیورٹی فورسز بازار میں گشت کررہی تھی کہ عیدیک بازار میں نظامیہ مسجد کے نزدیک ان کی گاڑی کے نزدیک دہشت گردوں نے ریموٹ کنٹرول ڈیوائس کے ذریعے گاڑی کو نشانہ بنایا جس سے فوجی اہلکار عامر شہید ہوگئے جبکہ حوالدار ارشد، سپاہی عبد المنان اور اسلام نبی زخمی ہوئے جنہیں علاقے کے ہسپتال منتقل کردیا گیا۔دھماکے کے بعد میرعلی تا میرامشاہ شاہراہ ٹریفک کی آمدورفت کے لیے بند کردی گئی اور فورسز نے سرچ آپریشن کیا۔پولیس کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ دھماکے کے نتیجے میں بازار میں کھڑی کم از کم 14 گاڑیوں کو نقصان پہنچا۔فورسز نے ملزمان کی تلاش کیلئے سرچ آپریشن شروع کر دیا جبکہ علاقے کے داخلی و خارجی راستوں پر سکیورٹی کو بڑھا دیا گیا ہے۔وزیر اعظم عمران خان، اپوزیشن لیڈ شہباز شریف، پیپلز پارٹی کے چیرمین بلاول بھٹو، جماعت اسلامی کے رہنما سراج الحق ڈپٹی سپیکر قومی اسمبلی قاسم خان سوری اور دوسرے رہنماؤں نے دہشت گردی کے ان واقعات پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہا ر کیا ہے بلاول بھٹو زرداری نے بلوچستان میں سکیورٹی فورسز پر دہشت گرد حملوں کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔اپنے بیان میں بلاول بھٹو زرداری دہشت گردی کے واقعات میں 7سکیورٹی اہلکاروں کی شہادت پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے شہید اہلکاروں کے خاندانوں سے سے یکجہتی کا اظہار بھی کیا ۔ شہدا کی عظیم قربانیاں تاریخ میں سنہری حروف سے لکھی جائیں گی، شہباز شریف کا بیانپاکستان مسلم لیگ (ن)کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہبازشریف نے بلوچستان کے علاقے مچھ اور کیچ میں دہشت گردوں کے حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے جو نئیر کمیشنڈ آفسیر،چھ جوانوں اور ایک ڈرائیور کی شہادت پر رنج وغم اور افسوس کا اظہار کیا ہے اپنے ایک تعزیتی بیان میں شہباز شریف نے شہداکے اہلخانہ سے تعزیت اور ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ شہدا کی عظیم قربانیاں تاریخ میں سنہری حروف سے لکھی جائیں گی، اللہ تعالی شہداکو جنت الفردوس میں اعلی درجات سے سرفراز فرمائے اللہ تعالی شہداکے اہلخانہ کو صبر جمیل دیامیرجماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق،سیکرٹری جنرل امیر العظیم اور نائب امیر لیاقت بلوچ نے مچھ میں سیکورٹی فورسز کی گاڑی پر دہشتگردی کے واقعہ کی شدید مذمت کرتے ہوئے جوانوں کی شہادت پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیاہے، ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی قاسم خان سوری نے بلوچستان کے علاقے بولان اور کیچ میں سیکیورٹی فورسز پر حملوں کی مذمت کی ہے۔اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کی بزدلانہ کارروائی میں شہید اور زخمی جوانوں کو خراج تحسین کرتا ہوں۔قاسم خان سوری نے شہید اہلکاروں کے خاندانوں سے اظہار تعزیت کرتے ہوئے کہا کہ پوری قوم سوگوار خاندانوں کے غم میں شریک ہے۔

دہشت گردی واقعات

مزید :

صفحہ اول -