انحراف کرنے والے 25 ارکان فیصلے کوچیلنج کرنے کاحق رکھتے ہیں، الیکشن کمیشن کے فیصلے کے بعد مریم اورنگزیب کا رد عمل آگیا

انحراف کرنے والے 25 ارکان فیصلے کوچیلنج کرنے کاحق رکھتے ہیں، الیکشن کمیشن کے ...
انحراف کرنے والے 25 ارکان فیصلے کوچیلنج کرنے کاحق رکھتے ہیں، الیکشن کمیشن کے فیصلے کے بعد مریم اورنگزیب کا رد عمل آگیا

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) الیکشن کمیشن کی جانب سے پنجاب اسمبلی کے منحرف ارکان کو ڈی سیٹ کرنے کے فیصلے پر رد عمل دیتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب نے کہا کہ انحراف کرنے والے 25 ارکان فیصلے کوچیلنج کرنے کاحق رکھتے ہیں،25لوگوں کےڈی سیٹ ہونےسےپنجاب حکومت کوفرق نہیں پڑے گا۔

اسلام آباد میں  نیوز کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات نے کہا کہ عمران خان ایک ہفتہ پہلےالیکشن کمشنرسےاستعفیٰ مانگ رہے تھے، آج  الیکشن کمیشن کے فیصلے پرشادیانے بجائے جارہے ہیں،الیکشن کمیشن کا 25منحرف ارکان سےمتعلق فیصلہ آیا ہے  مگر  پنجاب اسمبلی میں مسلم لیگ(ن)اوراتحادیوں کی تعدادپوری ہے، اس فیصلے سے حمزہ شہباز کی حکومت کو کوئی فرق نہیں پڑے گا۔

مریم  اورنگزیب نے کہا کہ ان  25 افراد نے دن کی روشنی میں عمران خان کی مہنگائی کی پالیسی سے انحراف کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کو ووٹ دیا ہے ۔مریم اورنگزیب نے کہا کہ اس کیس کا فیصلہ تو ایک ماہ میں آگیا ہے  مگر  فارن فنڈنگ کا فیصلہ 8 سال سے زیر التواء ہے  اس کا فیصلہ بھی کیا جائے ، اس کیس میں نا اہلی عمران خان سمیت پوری پی ٹی آئی کی بنتی ہے ۔

چارسال ملک کی معیشت کی اینٹ سے اینٹ بجا دی گئی،یہ لوگ اقتدار سے چمٹے رہنا چاہتے ہیں چاہے اس سے ملک کو نقصان ہی کیوں نہ ہو،عمران خان نے4سال اقتدار میں بیٹھ کر عوام کو لوٹا،ایک ہفتہ قبل عمران خان الیکشن کمیشن پر حملہ آور تھے، آئین کے وقار کیلئے عدالتیں کھلیں توانہیں دھمکیاں دی جاتی ہیں،یہ25لوگ نتائج سے متعلق جانتے تھے،آج25ڈی سیٹ نہیں ہوئے بلکہ عمران خان کے منہ پر25طمانچے پڑے ہیں، منحرف ارکان نے عمران خان کی پالیسی سے عدم اعتماد کا اظہار کیا۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -