جعلی دستاویزات پرمنگوائی گئی بھارتی فلموںکی نمائش پرپابندی

جعلی دستاویزات پرمنگوائی گئی بھارتی فلموںکی نمائش پرپابندی

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہورہائیکورٹ کے مسٹر جسٹس خالد محمود خان نے مبینہ طور پرجعلی دستاویزات پرمنگوائی گئی بھارتی فلموںکی نمائش پرپابندی عائد کرتے ہوئے فریقین سے 25نومبر تک تفصیلی جواب طلب کرلیاہے۔درخواست گزار مبشر لقمان کے وکیل نے عدالت کو بتایاکہ پاکستان میں غیرقانونی طورپر انڈین فلمیں منگوائی جارہی ہیں اورپاکستانی سینماﺅں میں نمائش کی جارہی ہے جس سے ملکی فلم انڈسٹری تباہ ہوگئی ہے۔عدالت کوبتایاگیاکہ جعلی دستاویزات پر منگوائی گئی فلموں سے قومی خزانے کو نقصان پہنچایاجارہا ہے سسنر بورڈ اور دیگر ذمہ دار اداے اپنی ذمہ داریاں پوری نہیں کررہے جس سے فحاشی میں اضافہ ہورہاہے انڈین فلموںکی جعلی دستاویزات پر درآمد کرکے غیر قانونی طورپر نمائش کی جارہی ہے فاضل عدالت نے قراردیاکہ پاکستان میں غیرقانونی فلموںکی نمائش کے علاوہ اور کیاکیا ہور رہا ہے۔ فاضل عدالت نے سسنر بورڈ اور دیگر فریقین سے جواب طلب کرتے ہوئے سماعت 25نومبر تک ملتوی کردی۔

جواب طلب

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...