افغانستان میں مزید کچھ سال کی اجازت دینے کیلئے افغان حکومت نے امریکہ سے ”معافی“ کی شرط رکھ دی

افغانستان میں مزید کچھ سال کی اجازت دینے کیلئے افغان حکومت نے امریکہ سے ...
 افغانستان میں مزید کچھ سال کی اجازت دینے کیلئے افغان حکومت نے امریکہ سے ”معافی“ کی شرط رکھ دی

کابل(مانیٹرنگ ڈیسک) افغان حکومت نے 2014ءکے بعد ملک میں رہنے کے لیے امریکہ سے ماضی میں فورسز کی طرف سے کی گئی غلطیوں پر عوام سے معافی مانگنے کی شر ط رکھ دی ہے تاہم امریکی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ ایسا کوئی ڈرافٹ زیر غور نہیں۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق2014ءکے بعد بھی افغانستان میں امریکی فورسز کے رکنے کیلئے افغان اور امریکی حکومت کے درمیان معاہدے پرا تفاق ہوگیا ہے اور اس معاہدے کا ڈرافٹ بھی تیار کرلیا گیا ہے۔برطانوی اخبار کی رپورٹ کے مطابق امریکی صدر بارک اوباما کے نیشنل سیکیورٹی ایڈوائزر کاکہنا ہے کہ معافی مانگنا امریکہ میں سیاسی تنازعات کا سبب بنے گا۔ افغان صدارتی ترجمان ایمل فیضی کے مطابق امریکہ کا معافی مانگنا مذاکرات کا حصہ اور جنگ کی وجہ سے افغان عوام کی مشکلات کا اعتراف کرنا ہوگا اور ساتھ ہی یہ اس بات کی ضمانت بھی ہوگا کہ آئندہ ایسی غلطیاں نہیں دہرائی جائیں گی تاہم امریکی نیشنل سیکیورٹی ایڈوائزر کا کہناہے کہ ایسا کوئی خط نہ تو تیار ہوا ہے، نہ ہی انہیں پہنچایا گیا ہے اور امریکہ کو افغانستان سے معافی مانگنے کی ضرورت نہیں ہے۔سوسان رائس کا یہ بھی کہنا تھا کہ امریکہ نے افغانستان کو ایمرجنسی کی حالت سے نکلنے، القاعدہ سے مقابلہ کرنے اور جمہوری عمل کو مضبوط کرنے میں بہت مدد کی ہے اور قربانی دی ہے۔

مزید : بین الاقوامی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...