ملالہ یوسفزئی نے یورپ کا سب سے بڑا”سخاروف ایوارڈ“حاصل کرلیا

ملالہ یوسفزئی نے یورپ کا سب سے بڑا”سخاروف ایوارڈ“حاصل کرلیا
  • ملالہ یوسفزئی نے یورپ کا سب سے بڑا”سخاروف ایوارڈ“حاصل کرلیا
  • ملالہ یوسفزئی نے یورپ کا سب سے بڑا”سخاروف ایوارڈ“حاصل کرلیا
  • ملالہ یوسفزئی نے یورپ کا سب سے بڑا”سخاروف ایوارڈ“حاصل کرلیا

سٹروس برگ (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستانی طالبہ ملالہ یوسفزئی نے یورپ کا سب سے بڑا’سخاروف ایوارڈ‘حاصل کرلیاہے اور وہ سخاروف ایوارڈ حاصل کرنے والی پہلی پاکستانی ہیں ۔روس کے سائنسدان اور انسانی حقوق کے علمبردار کے نام پر ملالہ یوسفزئی کو یہ ایوارڈ عدم برداشت کے خلاف جدوجہد، انتہاپسندی اور ظلم کے خلاف آوازاُٹھانے پر دیاگیا۔ یہ ایوارڈمیانمار کی جمہوریت پسند رہنماءآنگ سانگ سوچی اور صدرنیلسن منڈیلاکو بھی دیاجاچکاہے ۔ایوارڈدینے کی تقریب میں یورپی نمائندوں نے ملالہ یوسفزئی کو خراج تحسین پیش کیا۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ملالہ یوسفزئی کاکہناتھاکہ ایسے ایوارڈاُن کی حوصلہ افزائی کرتے ہیں ، جب وہ ماضی میں نیلسن منڈیلا جیسے حقداران کو دیکھتی ہے تو اُن کے نزدیک اہمیت اوربڑھ جاتی ہے ، ایوارڈملنے پر خوش ہوں ۔اُن کاکہناتھاکہ بہت سارے بچے بھوکے ہیں جن کے پاس پینے کے لیے پانی بھی نہیں ، 57ملین بچے سکول نہیں جاسکتے جس کے بارے میں تصور کرناہی مشکل ہے ۔ملالہ کاکہناتھاکہ بہت ساری لڑکیاں جلد شادی کی وجہ سے سکول نہیں جاسکتی ،بچوں کی سمگلنگ ہوتی ہے ،جنسی ہراساں کیاجاتاہے اور لڑکیاں چاردیواریوں تک محدود ہیں لیکن امید باقی ہے ۔ملالہ کاکہناتھاکہ سینکڑوں سکول دہشتگردی کی وجہ سے تباہ ہوگئے اور بچے سکول جانے سے قاصر ہیں لیکن پھر بھی امیدہے کیونکہ آپ لوگ متحدہیں اور عملی اقدامات کرسکتے ہیں ۔ہمیں اپنے خیالات میں تبدیلی کی ضرورت ہے ، ہمیں طاقتورہونے کے لیے اپنی سوچ بدلناہوگی ، طاقتورملک نیوی اورفوجیوں کی تعداد سے نہیں ہوتابلکہ شرح خواندگی اور شہریوں کے حقوق سے ہوتاہے ۔ ہمیں دیکھناہوگاکہ کونساملک ہے جو مرداور عورتوں کو برابرحقوق دیتاہے ، ذہین لوگ ملک کی اصل طاقت ہوتے ہیں ،ہمیں اپنے خیالات اورسوچ تبدیل کرنے چاہیں ، یورپی ممالک کو مددکرنی چاہیے ، پاکستان کو تعلیم اور ٹریڈ میں مددکی ضرورت ہے،ہم چاکلیٹ نہیں چاہتے ، صرف ایک قلم اور کتاب چاہیے۔ہائیڈروجن بم بنانے والے آندرے سخاروف بعدمیں خودہی اثرات سے خوفزدہ ہوگئے تھے اور پھراُنہوں نے انسانی حقوق کے لیے کام شروع کردیاجن کی یادمیں یورپی پارلیمنٹ 1988ءسے ہرسال ’سخاروف ایوارڈ‘ دیتی ہے اور سال 2013ءکا ایوارڈطالبان کی گولی کا نشانہ بننے والی پاکستانی طالبہ ملالہ یوسفزئی کو دیاگیا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...