پہلے ٹیسٹ میں باؤلرز چھاگئے، بیٹنگ ذمہ داری پوری نہ کرسکی

پہلے ٹیسٹ میں باؤلرز چھاگئے، بیٹنگ ذمہ داری پوری نہ کرسکی

پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان ٹیسٹ سیریز کا پہلا ٹیسٹ میچ دونوں ٹیموں کے درمیان انتہائی دلچسپ ثابت ہوا کیوی باؤلرز کی طرح پاکستانی باؤلرز نے بھی بہت اچھی باؤلنگ کا مظاہرہ کیا اور کیوی بیٹسمینوں کو مشکل میں ڈال دیا پاکستانی بیٹنگ بارش کی وجہ سے شدید مشکلات کا شکارنظر آئی اوراسی وجہ سے اس نے اپنی پہلی اننگزمیں زیادہ سکور نہیں کیا اور جس کو دیکھتے ہوئے کہا جارہا تھا کہ کیوی بیٹسمین پاکستان کے خلاف اپنی پہلی اننگز میں بڑا سکور کرنے میں کامیاب ہوجائیں گے لیکن پاکستانی باؤلرز نے بھی جواب میں بہت شاندار باؤلنگ کا مظاہرہ کیا اور کیوی ٹیم کو دو سو رنز پر محدود کردیا پاکستان کی ٹیم کی کارکردگی مجموعی طور پر بہت اچھی رہی ہے او رکھلاڑیوں حاص طور پر باؤلرز نے اپنی کارکردگی سے بہت متاثر کیا اب دیکھنا یہ ہے کہ اگلے ٹیسٹ میچ میں پاکستان کی ٹیم کیسی پرفارمنس دیتی ہے کیویز کے دیس میں کسی بھی ٹیم کیلئے اس کو شکست دینا مشکل ہوتا ہے اور پاکستان کے لئے یہ سیریز بہت اہمیت کی حامل ہے اس سیریز کے بعد قومی ٹیم نے آسٹریلیا کے دورے پرجانا ہے جو اس دورہ کی نسبت پاکستان کے لئے زیادہ مشکل دورہ ثابت ہوسکتا ہے اس لئے اس ٹیسٹ سیریز میں مجموعی طور پر پاکستان کی اچھی کارکردگی بہت ضروری ہے پاکستانی بیٹنگ کی بات کی جائے تو اس کو جم کر کھیلنے کی ضرورت ہے اور اس کیلئے کپتان مصباح الحق سمیت دیگر تمام کھلاڑیوں کو بھی اپنی ذمہ داری کو بخوبی سر انجام دینا چاہئیے نیوزی لینڈ کی تیز وکٹوں پر پاکستانی بیٹسمینوں کے لئے جم کرکھیلنا بہت مشکل ہے کیونکہ یہاں پر ایسی وکٹیں نہیں ہوتی ہیں اب دیکھنایہ ہے کہ پاکستانی ٹیم کس طرح سے اگلے ٹیسٹ میچ میں پرفارمنس دیتی ہے اور امید ہے کہ اس حوالے سے ٹیم پوری تیاری کے ساتھ میدان میں اترے گی اور پاکستانی ٹیم اچھی پرفارمنس کی بدولت نیوزی لینڈ کی ٹیم کو شکست دے گی کپتان مصباح الحق اس حوالے سے پرعزم ہیں اور اس ٹیسٹ میچ میں انہوں نے بہت اچھی کپتانی کرنے کی کوشش کی ہے اور اسی طرح امید ہے کہ وہ اگلے ٹیسٹ میچ میں بھی اسی طرح سے عمدہ کپتانی کے فرائض سر انجام دینے کی کوشش کریں گے جبکہ پاکستانی بیٹسمینوں کوچاہئیے کہ وہ اس حوالے سے اپنی ذمہ داریوں کو پوری طرح سے سمجھتے ہوئے اچھی پرفارمنس کا مظاہرہ کریں پوری ٹیم اگر جم کر اور ایک جان ہوکر کھیلے گی تو یقینی طور پر پاکستان کی ٹیم نیوزی لینڈ کے خلاف اس کی سر زمین پر عمدہ پرفارمنس دینے میں ضرور کامیاب ہوجائے گی اورپوری قوم کی نظریں اس وقت قومی کرکٹ ٹیم کی کیوی ٹیم کے خلاف دوسرے ٹیسٹ میچ پر مرکوز ہے اور ان کی دعائیں ٹیم کے ساتھ ہے اب ٹیم کیسی پرفارمنس دیتی ہے یہ تو آ نے والا وقت ہی بتائے گا،پاکستان کی بیٹنگ اور کیوی باؤلنگ کا اصل امتحان ہے کیونکہ پاکستان کے پاس اچھے باؤلر ہیں تو میزبان ٹیم کے پاس بیٹنگ لائن بہت مضبوط ہے دوسرے ٹیسٹ میچ میں اب بپوری قوم کی نظریں مرکوز ہیں اور امید ہے کہ پاکستان کی ٹیم اس حوالے سے اچھی پرفارمنس کا مظاہرہ کرنے میں کامیاب ہوجائے گی اور یہ دروہ پاکستان کے لئے اچھا ثابت ہوگا ۔

دونوں ٹیموں کے درمیان یہ سیریز بہت اہمیت کی حامل ہے اس وقت پاکستان کی کرکٹ ٹیم ٹیسٹ رینکنگ میں دوسرے نمبر پر ہے اوریہ سیریز میں کامیابی پاکستان کو پہلی پوزیشن پر لاسکتی ہے اس سیریز کے بعد پاکستان کی ٹیم نے آسٹریلیا کے دورے پر جانا ہے اس لئے اگر پاکستان کامیابی سے ہمکنار ہوتا ہے تو اس کا اس کو آسٹریلیا کے خلاف سیریز میں بھی فائدہ حاصل ہوگا پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق جن کا شمار اب پاکستان کرکٹ ٹیم کے کامیاب ترین کپتانوں میں کیا جاتا ہے اپنے کیرئیر کے پچاسویں ٹیسٹ میچ میں ٹیم کی قیادت کررہے ہیں ا ور جس طرح سے اب تک انہوں نے اپنی کپتانی میں کھیلے گئے ٹیسٹ میچوں میں ٹیم کو ساتھ لیکر چلے ہیں اس کی جتنی بھی تعریف کی جائے کم ہے اور امید ہے کہ اسی طرح سے وہ مستقبل میں بھی بطور کپتان ٹیم کے لئے اچھے ثابت ہوں گے نیوزی لینڈ کی ٹیم پاکستان کے لئے آسان حریف نہیں ہے اور نہ صرف وہ اپنی سر زمین پر بلکہ کسی بھی ملک میں جب بھی پاکستان کے مدمقابل آئی اس نے پاکستان کو بہت ٹف ٹائم دیا ہے اور اس مرتبہ بھی وہ پاکستان کے لئے آسان حریف نہیں ہے پاکستان کرکٹ ٹیم بھی جس تیاری کے ساتھ اس سیریز میں شرکت کررہی ہے اس کو دیکھتے ہوئے کہا جاسکتا ہے کہ ٹیم اپنے عمدہ کھیل سے کامیابی حاصل کریں گی نیوزی لینڈ کی سر زمین پر پاکستان کی ٹیم کی اب تک کی کارکردگی کا جائزہ لیا جائے تو اس سے قبل پاکستان کی ٹیم نے یہاں پر بہت میچ کھیلے ہیں اور اس کی مجموعی طور پر اب تک کی کارکردگی پر نظر دوڑائی جائے تو اس نے بہت اچھے کھیل کا مظاہرہ کیا ہے اور اس وقت ٹیم جب ویسٹ انڈیز سے کامیابی حاصل کئے ہوئے ہیں اس کی کارکردگی یقینی طور پر بہت اچھی ہونی چاہئیے کپتان مصباح الحق کے لئے یہ سیریز بطور کپتان بہت اہمیت کی حامل ہے اور ان کا کہنا ہے کہ کیویز کے دیس میں ہمیشہ کی طرح ہم عمدہ کھیل پیش کرنے کی کوشش کررہے ہیں اس سیریز کے بارے میں سابق کرکٹرز کا یہ کہنا ہے کہ پاکستان کی ٹیم اس سیریز میں اگر نیوزی لینڈ کو شکست دینے میں کامیاب ہوجاتی ہے تو پھر آسٹریلیا کے خلاف بھی اس کو کامیابی حاصل کرنے میں کوئی مشکل پیش نہیں آئے گی کیونکہ آسٹریلوی ٹیم کیویز سے زیادہ خطرناک ہے امید ہے کہ تمام کھلاڑی بھرپور تیاری کے ساتھ میدان میں اتررہے ہیں اور ان کو سخت محنت کی ضرورت ہے اب دیکھنا یہ ہے کہ پاکستانی ٹیم اس سیریز میں کس طرح سے مجموعی طور پر کھیل پیش کرتے ہوئے اس کے بعد کھیلی جانے والی آسٹریلیا کیخلاف سیریز میں اپنے کھیل کا مظاہرہ کرتی ہے اس میں کوئی شک نہیں ہے کہ پاکستان کی ٹیم کسی بھی ٹیم کو شکست دے سکتی ہے پاکستان کی باؤلنگ اور کیویز بیٹنگ کا اصل مقابلہ ہے پاکستان کرکٹ ٹیم کے سپنر یاسر شاہ کی اب تک بطور باؤلرکارکردگی بہت اچھی رہی ہے اور کیویز کے خلاف بھی وہ ان کو دباؤ میں رکھنے کی صلاحیت رکھتے ہیں اور اسی طرح سے وہ آسٹریلیا کے خلاف بھی ان کی بیٹنگ کو فلاپ کرنے میں اہم ثابت ہوسکتے ہیں مصباح الحق بطور کپتان اب تک پچاس میچ مکمل کرچکے ہیں او ر اس حوالے سے ان کی کارکردگی سے مستقبل میں بھی یہ امید ہے کہ پاکستان نیوزی لینڈ کے خلاف کامیابی حاصل کرنے کے بعد آسٹریلیا کے خلاف سیریز بھی اپنے نام کرنے میں کامیاب ہوجائے گی۔*

مزید : ایڈیشن 1