ٹوٹی سڑکیں ، ناکارہ سیوریج اور عدم سیکیورٹی ، اشرفی ٹاؤن مسائل کا گڑھ بن گیا

ٹوٹی سڑکیں ، ناکارہ سیوریج اور عدم سیکیورٹی ، اشرفی ٹاؤن مسائل کا گڑھ بن گیا

 لاہور (اقبال بھٹی)لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی سے منظور شدہ سکیم اشرفی ٹاؤن چالیس سال بعد بھی آباد نہ ہو سکی ،رائے ونڈ روڈ پر بنائی جا نے والی یہ سکیم سب سے پہلے ایل ڈی اے سے منظور کروائی گئی تھی ،سکیم کی ٹوٹی پھوٹی سڑکیں ناکارہ سیوریج سسٹم اورغیر آبادپارکوں کے ساتھ ساتھ سکیم میں کوئی سکیورٹی کا نظام موجود نہیں جس کی وجہ سے لوگ گھر بنا نے سے گھبراتے ہیں تفصیلات کے مطا بق1985میں صرف ایک دفعہ سڑکیں بنائی گئی تھیں، سیوریج سسٹم بھی ناکارہ ہو چکا ہے کیونکہ اس پر پچھلے چالیس سال سے کو ئی توجہ نہیں دی گئی ،اشرفی ٹاؤن سکیم میں موجود کو ئی بھی پارک ڈویلپ نہیں کیا گیا ،اس کے علاوہ سکیم میں ابھی تک کوئی سکیورٹی سسٹم نہیں نہ ہی سکیورٹی دیوار بنائی گئی ہے چونکہ اشرفی ٹاؤن شہر سے دور رائے ونڈ روڈ پر واقع ہے ،اس لئے لوگ سکیورٹی خدشات کے پیش نظر مکان بنا نے سے ڈرتے ہیں ،ذرائع نے بتایا ہے کہ ایل ڈی اے جب بھی کوئی پرائیویٹ سکیم منظور کر تی ہے تو اس وقت مالکان سے جو سکیم منظور کرواتے ہیں ،سکیورٹی اورڈویلپمنٹ کے حوالے سے بیان حلفی(انڈر ٹیکنگ)لیتی ہے کہ سکیم کی سکیورٹی اور ڈویلپمنٹ مالکان کی ذمہ داری ہو گی ،اس کے علاوہ ایل ڈی اے پرائیویٹ سکیم کے پلاٹ بھی گروی رکھتی ہے جن کو انتظامات مکمل نہ ہونے کی صورت میں آکشن کر کے سہولتیں مہیا کرتی ہے ،مگر اشرفی ٹاؤن سکیم کے لئے ایل ڈی اے نے ابھی تک کچھ نہیں کیا جس کی وجہ سے سکیم کے الاٹی عدم تحفظ کا شکار ہیں اور مکان بنانے سے ڈرتے ہیں ،اس حوالے سے جب ایل ڈی اے افسران سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ اشرفی ٹاؤن کے حوالے سے ایل ڈی اے کو کوئی شکایات موصول نہیں ہوئی اب آپ نے بات کی ہے تو اشرفی ٹاؤن سکیم میں فیلڈ سٹاف بھیج کر صحیح صورت حال کا پتہ چلائیں گے اور اس پر فوری ایکشن لیا جائے گا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1