چارسدہ ،ویڈیو تنازعہ ،دو چچا زاد بھائیوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا گیا :2زخمی

چارسدہ ،ویڈیو تنازعہ ،دو چچا زاد بھائیوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا گیا :2زخمی

چارسدہ (بیورورپورٹ)گل آباد میں مستورات کے ویڈیوز بنانے کے تنازعہ پر چچا زاد اور ماموں زاد بھائی خونی دشمن بن گئے ۔ جرگہ میں راضی نامہ کے چند گھنٹے بعد فریقین ایک دوسرے کے خون کے پیاسے بن گئے ۔ دو چچا زاد بھائی قتل جبکہ ماموں زاد سمیت دو افراد شدید زخمی ۔جان بحق ہونے والوں میں عبد العلی خان کالج چارسدہ کے پروفیسر سیف اللہ خان بھی شامل ہے ۔ ترخہ میں چار بہنوں کا اکلوتا بھائی بہن کی شادی کی تاریخ طے کرکے اندھی گولی کا نشانہ بن گئے ۔خوشیوں بھرا گھر ماتم کدہ بن گیا ۔ تفصیلات کے مطابق تھانہ سرڈھیری کے حدود گل آباد میں مستورات کے ویڈیوز کے تنازعہ پر گزشتہ شب چچا زاد بھائیوں سیف اللہ ولد سید جمال اور موسی جان ولد تماش گل کے مابین راضی نامہ ہو گیا مگر راضی نامہ کے چند گھنٹے بعد فریقین ایک دوسرے کے خون کے پیاسے بن گئے اور ایک دوسرے کے گھروں میں داخل ہو کر خون کی ندیا ں بہا دی ۔ فائرنگ کے نتیجے فریق اول سے عبد العلی خان کالج چارسدہ کے پروفیسر سیف اللہ ولد سید جمال جان بحق جبکہ اس کا بھائی سیار احمد ولد سید جمال شدید زخمی ہوگئے جبکہ فریق دوم سے موسی خان ولد تماش گل جان بحق جبکہ اعجاز احمد ولد شہزاد گل شدید زخمی ہوئے ۔ زخمیوں اور جان بحق ہونے والے افراد کی نعشوں کو چارسدہ ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں ابتدائی طبی امداد کے بعد دونوں مجروحین کو تشویش ناک حالت کے پیش نظر لیڈی ریڈنگ ہسپتال منتقل کیا گیا ۔ سرڈھیری پولیس نے مجروح سیار احمد ولد سید جمال کی رپورٹ پر مبینہ ملزم مجروح اعجاز ولد شہزادہ کے خلاف قتل و اقدام قتل جبکہ فریق دو م کے مجروح اعجاز احمد ولد شہزادہ کی رپورٹ پر مبینہ ملزم مجروح سیار احمد ، مقتول سیف اللہ اور فہیم پسران سید جمال کے خلاف قتل و اقدام قتل کے مقدمات درج کرکے تفتیش شروع کر دی ۔ دلچسپ امر یہ ہے کہ ایک دوسرے کے خون کے پیاسے چچا زاد بھائیوں کی نماز جنازہ اکھٹے ادا کی گئی جبکہ دونوں کی تدفین بھی ایک ہی جگہ کی گئی ۔ دوسرے واقعہ میں تھانہ سٹی کے حدود ترخہ میں چار بہنوں کا اکلوتا بھائی سولہ سالہ عالمگیر ولد جان عالم اپنی بہن کی شادی کی تاریخ طے کرکے رکشے میں بیٹھ کر ضروری کام سے کہیں جا رہے تھے کہ نامعلوم سمت سے رکشے پر فائرنگ ہوئی جس کے نتیجے میں عالمگیر موقع پر جان بحق ہو گئے جبکہ رکشے میں سوار ابرار ولد زیر عالم زخمی ہوگئے ۔واقعہ کے بعد خوشیوں بھر گھر ماتم کدہ بن گیا ۔پولیس نے مقدمہ درج کرکے تفتیش شروع کر دی ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر