پاکستان میں اپوزیشن خوف زدہ ہے, اس لئے وہ الزامات کا سہارا لے کر ملک میں سیاسی بے یقینی پیدا کر رہی ہے: احسن اقبال

پاکستان میں اپوزیشن خوف زدہ ہے, اس لئے وہ الزامات کا سہارا لے کر ملک میں ...
 پاکستان میں اپوزیشن خوف زدہ ہے, اس لئے وہ الزامات کا سہارا لے کر ملک میں سیاسی بے یقینی پیدا کر رہی ہے: احسن اقبال

  

لندن(عرفان الحق) لندن سکول آف اکنامکس میں فیوچر آف پاکستان کانفرنس میں شرکت سے قبل پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر برائے پلاننگ اینڈ ڈویلپمینٹ احسن اقبال کا کہنا تھا کہ پاکستان میں اپوزیشن خوف زدہ ہے اگر موجودہ حکومت اپنی مدت پوری کرگئی اور اس کے شروع کئے منصوبے مکمل کر گئی تو اگلے الیکشن میں بھی ان کے لئے مشکلات ہوں گئیں اس لئے وہ الزامات کا سہارا لے کر ملک میں سیاسی بے یقینی پیدا کر رہی ہے۔ 

ان کا کہنا تھا کہ تحریک انصاف سپریم کو رٹ میں کوئی خاص شواہد پیش نہیں کرسکی جبکہ نواز شریف اور ان کی فیملی نے اپنے سارے ثبوت واضع کردئیے ہیں۔ احسن اقبال کا کہنا تھا کہ ملک ترقی کررہا ہے۔ دہشت گردی کی کمر توڑ دی گئی ہے۔ جبکہ انرجی کے مسائل پر بھی قابو پالیا جائے .حامد خان کے کیس لڑنے سے معذرت پر ان کا کہنا تھا کہ عمران خان نے اپنے وکلاء سے بھی جھوٹ بولا ہے۔ اب جب کیس شروع ہوا ئے تو معلوم ہواہے کہ ان کا کیس اخباری تراشوں پر انحصار کررہا تھا۔

 وفاقی وزیر پلاننگ اینڈ ڈویلپمینٹ احسن اقبال کا کہنا ہے کہ پاکستان کی تمام سیاسی پارٹیاں ملک میں جمہوریت یت کو پھلتا پُھولتا دیکھنا چاہتی ہیں۔ چند سال پہلے پاکستان کو دنیا کا خطر ناک ترین ملک قرار دینے والے ایشاء کا اقتصادی حب قرار دے رہے ہیں۔ وہ لندن سکول آف اکنامکس میں فیوچر آف پاکستان کے نام سے ہونیوالے کانفرنس سے طور کی سپیکر خطاب کررہے تھے۔ کانفرنس کا انعقاد پاکستانی طلباء کی تمطیموں لندن سکول آف اکنامکس سٹوڈنٹس یونین پاکستان سوسائٹی اور پاکستان ڈویلپمینٹ سوسائٹی نے کیا تھا

جس میں وفاقی وزیر پلاننگ اینڈ ڈویلپمینٹ احسن اقبال۔ منسٹر آف سٹیٹ اور وزیر اعظم کے مشیر مفتاح اسماعیل۔ چیئرمین پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ پروفیسر عمر سیف کے علاوہ ڈاکٹر سمبل خان۔ نبیل گوہر۔ مہوش شامی۔ عدنان قادر خان اور سید اکبر زیدی نے شرکت کی۔

تقریب کے میزبان پاکستان ڈویلپمٹ سوسائٹی کے صدر عمر بھٹی اور رضا نظرنے مہمانوں کو خوش آمدید کہا جبکہ لندن میں پاکستانی ہائی کمشنر سید ابن عباس بے کانفرنس کا باقاعدہ آغاز کیا اور پاکستانی طالبعلوں کی طرف سے یہ اقدام اٹھانے پر انہیں مبارک باد پیش کی۔فیوچر آف پاکستان کے نام سے ہونیوالی یہ کانفرنس اپنی نوعیت کی پہلی کانفرنس ہے جو لندن سکول آف اکنامکس میں منعقد ہوئی جس میں مختلف سکالرز نے پینل ڈسکیشن کے ذریعے پاکستان کو درپیش مسائل پر گفتگو کی۔ اور اپنے خیالات طالبعلموں کے سامنے پیش کئے۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر پلاننگ اینڈ ڈویلپمینٹ احسن اقبال کا کہنا تھا کہ پاکستان کی تمام سیاسی جماعتیں ملک میں جمہوریت کا تسلسل چاہتیں ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ جب ان کی حکومت نے اقتدار سنبھالا تو پاکستان دنیا میں خطر ناک ملک قرار دیا جاُرہا تھا جبکہ اب انٹرنیشل ادارے اسے مستقبل کا اکنامک حب قرار دے رہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ تبدیلی ہے جو آ رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اٹھارویں ترمیم کے بعد صوبوں کو اختیارات کی منتقلی سے بہتری کا عمل شروع ہوا ہے۔تعلیمی نظام کے حوالہ سے ان کا کہنا تھا تعلیمی سلیبس میں میجر تبدیلیاں کرتے ہوئے جدید ٹیکنالوجی کی تعلیم اس میں شامل کیے جارہے ہیں۔ جبکہ امریکہ اور دیگر ممالک سے تجارتی اور تعلیمی معاہدے کئے جا رہے ہیں انہوں نے پاک چائینہ راہداری کو خطے کیلئے گیم چینجر قرار دیتے ہوئے کہا کہ دیگر ممالک بھی اس منصوبے میں سرمایہ کاری کرنے کےلئے دلچسپی لے رہے ہیں۔

فیوچر آف پاکستان کانفرنس میں مختلف ماہرین اقتصادیات کو بھی بلایا گیا تھا جنہوں نے پینل ڈیسکشن کے ذریعے پاکستان کے مسائل اور ان کے حل کے بارے میں اپنی اپنی آرا دی۔ تمام پینلسٹس نے پاکستان میں جمہوریت عمل کے تسلسل کو بہترین قرار دیتے ہوئے اسے ملک کی ترقی کے لئے اہم قرار دیا۔ پینلسٹس کا یہ بھی کہنا تھا کہ پاکستان میں جمہوریت کے تسلسل کے علاوہ مضبوط اپوزیشن کا بھی بڑا کردار ہے۔ جس کا ہونا کسی بھی ملک کے لئے ضروری ہوتا ہے۔ تقریب سے وزیر اعظم کے مشیر مفتاح اسماعیل کا کہنا تھا کہ پاکستان میں ٹیکس کا نظام بہتر ہوا ہے اور اسے مزید بہتر کیا جارہا ہے۔ تاکہ زیادہ سے زیادہ لوگوں کو ٹیکس کے دھارے میں لایا جاسکے .

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ پروفیسر عمر سیف کا کہنا تھا کہ حکومت پاکستان اور بالخصوص پنجاب حکومت انفارمیشن ٹیکنالوجی پر زور دے رہی ہے۔ تاکہ نئی نسل کو جدید علوم سے بحر ور کیا جاسکے.لندن سکول آف اکنامکس کے طلبا و طالبات نے پینلسٹس سے کراس سوالات بھی کئے۔ اور آپنے اپنے خیالات اور آرا سے آگاہ کیا .روزنامہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے احسن اقبال۔ ہائی کمیشنر سید ابن عباس۔ مفتاح اسماعیل۔ پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ پروفیسر عمر سیف تقریب کے میزبان۔ عمر بھٹی۔ رضا نظر۔ طوبیٰ مشتاق اوردیگر کا کہنا تھا کہ ایل ایس ای میں پکستان کانفرنس کروانے ان کے کیے اعزاز کی بات ہے یہاں پر پاکستانی انٹرنیشنل طلباء و طالبات اور پاکستانی وزراء آمنے سامنے بیٹھ کر پاکستان کے مسائل پر بحث کررہے ہیں

مزید : قومی