بالاآخر وہ خوشخبری آگئی جس کا انتظار تھا، سعودی حکومت نے وعدہ پورا کر دیا، ملک میں مقیم غیر ملکیوں کے چہرے خوشی سے کھِل اُٹھے

بالاآخر وہ خوشخبری آگئی جس کا انتظار تھا، سعودی حکومت نے وعدہ پورا کر دیا، ...
بالاآخر وہ خوشخبری آگئی جس کا انتظار تھا، سعودی حکومت نے وعدہ پورا کر دیا، ملک میں مقیم غیر ملکیوں کے چہرے خوشی سے کھِل اُٹھے

  

ریاض (مانیٹرگ ڈیسک ) تنخواہوں کی عدم ادائیگی کے باعث بد ترین عذاب میں مبتلاء غیر ملکی محنت کشوں کیلئے بہت بڑی خبر ہے کہ سعودی حکومت نے پرائیویٹ کمپنیوں کو 40 ارب ریال کے واجبات ادا کر دیے ہیں، جو کئی ماہ سے ادا نہیں ہوئے تھے اور غیر ملکی ملازمین کی تنخواہیں رکنے کی بنیادی ترین وجہ بنے ہوئے تھے ۔

عرب نیوز کی رپورٹ کے مطابق نائب ولی عہد سلطنت پرنس محمد بن سلمان کی جانب سے وعدہ کیا گیا تھا کہ پرائیویٹ کمپنیوں کو ان کے واجبات جلد ادا کیے جائیں گے ۔ سعودی حکومت نے اس عہد کو ایفا کرتے ہوئے اب پہلی بڑی ادائیگی کر دی ہے۔ رپورٹ کے مطابق تیل کی آمدنی میں غیر معمولی کمی کے نتیجے میں پرائیویٹ کمپنیوں کو واجبات کی ادائیگی میں تاخیر ہوئی تھی، جبکہ سعودی حکومت کی جانب سے متعدد منصوبوں پر عملدرآمد روکنے یا کم کرنے کا فیصلہ بھی اس کی اہم وجہ ثابت ہوا۔

رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ سعودی حکومت پرائیویٹ کمپنیوں کی بقیہ واجب الادا رقوم بھی اگلے چند ہفتوں کے دوران ادا کر دے گی، جس کے بعد ادائیگیوں کی شرح 80 فیصد تک پہنچ جائے گی۔ اس مقصد کیلئے مزید 100 ارب ریال جاری کیے جائیں گے۔ مملکت میں پھنسے ہزاروں غیر ملکیوں کیلئے اسے بہت بڑی خبر قرار دیا جارہا ہے کیونکہ اب یہ امید روشن ہو گئی ہے کہ ان کے رکے ہوئے واجبات ادا ہو جائیں گے۔

چینی اعتراض کے باوجود دلائی لامانے منگولیا کا دورہ شروع کر دیا

اب تک کی ادائیگی سے غیر ملکی کمپنیوں کے قابل زکر واجبات ادا ہو چکے ہیں جبکہ اگلے چند ہفتوں کے دوران 80 فیصد ادائیگی متوقع ہے۔ اس اقدام کے نتیجے میں معیشت کا پہیہ بھی پھر سے گھومنے لگے گا اور خصوصاً کنسٹرکشن انڈسٹری میں بلڈنگ میٹریل ، سیمنٹ ، ٹرانسپورٹ سے متعلقہ کام میں تیزی آئے گی۔ دیگر شعبوں میں بھی نئی ملازمتوں کا امکان پیدا ہو گیا۔متعدد رکے ہوئے منصوبوں پر بھی دوبارہ کام کا آغاز متوقع ہے، جس کے نتیجے میں پرائیویٹ کمپنیوں اور ان کے غیر ملکی ملازمین کے مسائل میں تیزی سے کمی آئے گی ۔

مزید : عرب دنیا