میئرز کانفرنس کے خوش آئند فیصلے

میئرز کانفرنس کے خوش آئند فیصلے

  



پنجاب سے تعلق رکھنے والے میئر صاحبان کی کانفرنس میں آبادی کے تناسب سے سہولتوں کی فراہمی کو یقینی بنانے اور ترقیاتی منصوبوں کو بروقت مکمل کرنے کے عزم کا اظہار کیا گیا ہے۔ خصوصاً پینے کا صاف پانی، معیاری سڑکو ں کی تعمیر، ماحولیاتی آلودگی کو کم کرنے، سٹریٹ لائٹس اور سیوریج سسٹم کو بہتر بنانے اور صنعتوں کو فروغ دینے کے منصوبوں کو ترجیح دینے کا فیصلہ کیا گیا۔ میئرصاحبان کی کانفرنس بہاولپور میں منعقد ہوئی جس میں متعدد تجاویز بھی زیر غور آئیں۔ بلدیاتی نظام میں شہری مسائل کے حل کی ذمہ داری منتخب نمائندوں پر عائد ہوتی ہے۔ اس کے لئے ضروری ہے کہ ہر سطح پر منتخب نمائندے موجود ہوں اور انہیں اختیارات کے ساتھ مختص وسائل بھی حاصل ہوں ڈویژنل ہیڈ کوارٹر میں میئر ہی سب سے بڑا منتخب نمائندہ ہوتا ہے۔ یہ امر خوش آئند ہے کہ پنجاب میں میئرز کو اختیارات اور وسائل دیئے گئے تاکہ وہ فعال ہو کر شہری مسائل کو حل کر سکیں۔ دوسرے صوبوں میں ایسی آئیڈیل صورتحال نہیں ہے۔ عوامی حلقے بجا طور پر یہ توقع رکھتے ہیں کہ میئر صاحبان مسائل کو حل کرنے کے ساتھ ساتھ سہولتوں کی فراہمی کو بھی یقینی بنائیں گے۔میئرز کانفرنس کے اختتام پر مشترکہ اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ پنجاب لوکل گورنمنٹ ایکٹ پر عملدرآمد پر بھرپور توجہ دی جائے تاکہ لوگوں کو شہری مسائل سے نجات ملے اور ترقیاتی منصوبوں کو بروقت مکمل کرنے کی ہر ممکن کوشش کی جائے ۔ یہ بات تشویشناک ہے کہ ماضی میں مجرمانہ غفلت سے کام لیا جاتا رہا اور پینے کے صاف پانی کی فراہمی پر زیادہ توجہ نہیں دی گئی۔ اب ہر شہر اور قصبے میں پینے کا صاف پانی مطلوبہ مقدار میں دستیاب نہیں اور جو پانی مل رہا ہے، وہ پینے سے لوگ مختلف بیماریوں میں مبتلا ہو رہے ہیں۔ میئر صاحبان نے اس مسئلہ پر خصوصی توجہ دینے کا درست فیصلہ کیا ہے۔ دیگر مسائل میں ذرائع آمد و رفت اورسیوریج سسٹم کو معیاری بنانے کی ضرورت ہے۔ المیہ یہ ہے کہ لاہور جیسے شہر میں بھی اندرون شہر اور نواحی آبادیوں میں سڑکیں ٹوٹی پھوٹی ہیں۔ چند بڑی اور اہم سڑکوں پر ہی توجہ دی جاتی ہے۔ اسی طرح سیوریج سسٹم ناقص ہونے سے گندہ پانی سڑکوں اور گلیوں میں بہتا دکھائی دیتا ہے۔ گٹروں کے ڈھکن نہ ہونے سے چھوٹے بچے ان میں گر کر موت سے ہمکنار ہوتے رہتے ہیں جبکہ لوگ زخمی بھی ہوتے ہیں۔ میئرز کانفرنس میں سٹریٹ لائٹس کو بھی بہتر بنانے کے عزم کا اظہار کیا گیا ہے کیونکہ شہر کی بیشتر سڑکیں اندھیرے میں ڈوبی ہونے کی شکایات موجود ہیں۔ ترقیاتی منصوبوں اور عوام کو دی جانے والی دیگر سہولتوں کے معاملے میں کرپشن کی وجہ سے بیشتر رقوم کرپٹ مافیا ہضم کر لیتا ہے۔ اس پر سختی سے قابو پانے کی ضرورت ہے۔میئرز کانفرنس میں جس عزم کا اظہار کیا گیا ہے، اس کے مطابق عمل بھی ہونا چاہئے۔ توقع رکھنی چاہئے کہ آئندہ سال بھی میئرز کانفرنس منعقد کر کے اس پلیٹ فارم سے لوگوں کو بہتر طور پر سہولتیں مہیا کی جائیں گی۔

مزید : اداریہ