ختم نبوت میں ترمیم کے ذمہ داروں کوبے نقاب کیاجائے،یعقوب شیخ

ختم نبوت میں ترمیم کے ذمہ داروں کوبے نقاب کیاجائے،یعقوب شیخ

  



لاہور ( جنرل رپورٹر)نظریہ پاکستان رابطہ کونسل کے چیئرمین ،امیدوار این اے 120محمد یعقوب شیخ نے کہا ہے کہ عقیدہ ختم نبوت میں ترمیم کے ذمہ داروں کوبے نقاب کر کے سزا دی جائے۔ تعلیمی اداروں میں طلباء کی تعلیم و تربیت دین اسلام کی بنیاد پر ہونی چاہئے۔آسمانی نظام تعلیم کو اہمیت دینے سے دنیا میں تبدیلی آئے گی، ملک میں امن، عدل و انصاف اور رواداری کا قیام بہت ضروری ہے۔نوجوان نسل کو نظریہ پاکستان سے دور رکھنے کی کوششیں کامیاب نہیں ہوں گی۔این اے120میں تعلیم و صحت کی بنیادی سہولیات ناکافی ہیں۔حلقے کی محرومیوں کے خاتمے کیلئے کردار ادا کریں گے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے دفتر میں پی پی139سے آنے والے ایک وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر سید عبدالوحید شاہ بھی موجود تھے۔محمد یعقوب شیخ نے کہا کہ سیاست میں محمد رسول اللہ ﷺ ہمارے لئے بہترین نمونہ ہیں۔ہم نے خدمت کا کام بھی دین اورایمان کے جذبوں سے کیا ‘سیاست بھی اسی طرح کریں گے۔ نظریہ پاکستان کی بنیاد پر پوری قوم کو ایک پلیٹ فارم پر متحد کریں گے۔ نوجوان نسل کی جانب سب سے زیادہ توجہ دی جائے گی۔ نظریہ پاکستان کو نصاب تعلیم و نظام تعلیم میں شامل کیا جائے گا۔ہم ملک میں عدل و انصاف اور رواداری چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ جس پاکستان کا تصور علامہ اقبال نے پیش کیاتھا اور قائداعظم نے تحریک چلا کر پاکستان بنایا آج اسی تحریک کو آگے بڑھارہے ہیں۔جو جذبے پاکستان بنانے والوں کے تھے انہی جذبوں سے ملک کا دفاع کر یں گے۔ سیاست کے میدان میں موجود کمزوریوں کی اصلاح کی ضرورت ہے۔ہم امت کو جوڑیں گے اور اتحاد کی سیاست کریں گے یہی ہمارا نصب العین ہے۔محمد یعقوب شیخ نے کہاکہ73کے آئین میں واضح طور پر لکھا ہے کہ سب سے بالاتر قانون قر آن و سنت کا ہو گا لیکن حقیقت یہ ہے کہ حکمرانوں نے ہمیشہ اپنے مقاصد کیلئے دستو ر پاکستان کو استعمال کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان ایک نظریاتی ملک ہے۔آٹھ کروڑ طلبا تعلیمی اداروں میں زیر تعلیم ہیں ہم نصاب تعلیم اور نظام تعلیم میں نظریہ پاکستان کو شامل کریں گے۔ حکمرانوں نے وطن عزیزپاکستان کو آئی ایم ایف اور ورلڈ بنک کا غلام بنا رکھا ہے۔ ہم قوم کو متحد کر کے اس غلامی سے نجات دلائیں گے۔ ملک کی نظریاتی و جغرافیائی سرحدوں کے تحفظ کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1