سٹاک مارکیٹ ہفتہ ، رفتہ کے دوران مایوس کن صورتحال رہی م انڈیکس 591پوائنٹس گرگیا

سٹاک مارکیٹ ہفتہ ، رفتہ کے دوران مایوس کن صورتحال رہی م انڈیکس 591پوائنٹس ...

کراچی (این این آئی)پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں گزشتہ ہفتہ بھی کاروباری لحاظ سے انتہائی مایوس کن رہا جس میں مجموعی طور پر کے ایس ای100انڈیکس میں 591پوائنٹس کی کمی ریکارڈ کی گئی جس کے نتیجے میں مارکیٹ کی سرمایہ کاری مالیت میں64ارب 57کروڑ 16لاکھ روپے کی کمی واقع ہوئی جب کہ حصص کی لین دین کے لحاظ سے کاروباری حجم بھی محدود رہا ۔ملک میں جاری سیاسی عدم استحکام اور بے یقینی کی کیفیت کے باعث پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں سرمایہ کاروں کی جانب سے نئی سرمایہ کاری سے گریز اور حصص کی فروخت کا رجحان غالب رہا جس کے نتیجے میں ابتدائی تین روز مندی چھائی رہی جب کہ آخری دو دنوں میں ریکوری بھی دیکھنے میں آئی لیکن مندی کے اثرات مکمل طور پرزائل نہ ہوسکے جب کہ کے ایس ای100انڈیکس کا41ہزارنفسیاتی حد بھی بحال نہ ہوسکا ۔گزشتہ ہفتے کے یومیہ کارکردگی رپورٹ کے مطابق کاروباری ہفتے کاآغاز پیر کو مندی سے ہوا جس کے نتیجے میں کے ایس ای100انڈیکس 195.81پوائنٹس کی کمی سے41239.89پوائنٹس کی سطح پر آگیااور 214کمپنیوں کے حصص کی قیمتیں گر گر گئیں جس کے نتیجے میں سرمایہ کاروں کو31ارب 4کروڑ90لاکھ روپے کا نقصان اٹھانا پڑا جب کہ حصص کی لین دین کے لحاظ سے کاروباری حجم بھی صرف 3ارب روپے مالیت کے 8کروڑ 74لاکھ شیئرز تک محدود رہا جس کے نتیجے میں سرمائے کا مجموعی حجم84کھرب 93ارب 53کروڑ 40لاکھ روپے سے گھٹ کر84کھرب 62ارب 48کروڑ 50لاکھ روپے ہوگیا۔اسی طرح منگل کو بھی مندی چھائی رہی جس کے نتیجے میں کے ایس ای100انڈیکس 41ہزار کی نفسیاتی حد سے گرتے ہوئے.11 296پوائنٹس کی کمی سے40943.78پوائنٹس کی سطح پر آگیا۔حصص کی فروخت کا دباؤ بڑھنے کے باعث207کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں کمی ریکارڈ کی گئی جس سے سرمایہ کاروں کو 45ارب45کروڑروپے سے زائد کا نقصان اٹھانا پڑا البتہ کاروباری حجم پیر کی نسبت60.20فیصد زائد رہا۔

بدھ کو بھی مندی کا رجحان جاری رہاجس کے نتیجے میں ایس ای 100انڈیکس 40900،40800 اور40700کی نفسیاتی حدوں سے گرتے ہوئے 280.99پوائنٹس کی کمی سے 40662.79پوائنٹس کی سطح پر آگیا،حصص کی فروخت کا دباؤ بڑھنے کے سبب 54.76فیصد حصص کی قیمتوں میں کمی ریکارڈ کی گئی جس سے سرمایہ کاروں کو 32ارب41کروڑروپے سے زائدکا نقصان ہوا جب کہ کاروباری حجم بھی گزشتہ روز کی نسبت35.48فیصد کم رہاالبتہ جمعرات کواتارچڑھاؤ کے بعد تیزی کا رجحان غالب رہااور تین روزہ مندی کے نتیجے میں حصص کی نچلی سطح پر آئی قیمتوں کا فائدہ اٹھاتے ہوئے سرمایہ کاروں نے خریداری کی جس کے سبب ایس ای 100انڈیکس کی40700 اور40800کی نفسیاتی حدیں بحال ہوگئیں اورانڈیکس 15.52پوائنٹس اضافے سے 40813.31پوائنٹس پر بندہوا۔اس دوران سرمایہ کاری مالیت میں25ارب98کروڑروپے سے زائدکااضافہ ہوا جبکہ کاروباری حجم بھی بدھ کی نسبت7.01فیصدزائد رہا ۔مارکیٹ کے اختتام پر کے ایس ای 100انڈیکس 15.52پوائنٹس اضافے سے 40813.31پوائنٹس پر بندہو کاروباری ہفتے کے آخری روز جمعہ کو کواتارچڑھاؤ کے بعدمعمولی تیزی غالب رہی جس کے نتیجے میں کے ایس ای31.09پوائنٹس اضافے سے 40844.40پوائنٹس کی سطح پر پہنچ گیا ،مارکیٹ کی سرمایہ کاری مالیت میں27ارب36کروڑروپے سیزائدکا اضافہ ہوا جب کہ کاروباری حجم بھی جمعرات کی نسبت19.55فیصدزائدرہا۔جس سے سرمایہ کاری کی مجموعی مالیت بڑھ کر 84کھرب28ارب96کروڑ24لاکھ30ہزار208روپے ہوگئی۔اسٹاک ماہرین کے مطابق ملک میں جاری مخصوص سیاسی حالات اور معاشی چیلنجز کے پیش نظر آئندہ ہفتہ بھی مارکیٹ میں اسی قسم کی اتار چڑھاؤ کا سلسلہ جاری رہنے اور مندی غالب رہنے کا امکان ہے ۔

مزید : کامرس