کابل ، طالبان کے حملوں ، جنگجوؤں کی جھڑپوں اور بم پھٹنے سے 21افراد ہلاک

کابل ، طالبان کے حملوں ، جنگجوؤں کی جھڑپوں اور بم پھٹنے سے 21افراد ہلاک

کابل(آئی این پی )افغانستان میں طالبان کے سیکورٹی چیک پوسٹوں پر حملوں میں 6پولیس اہلکار ہلاک اور 8زخمی ہوگئے جبکہ جھڑپوں میں 8شدت پسند بھی مارے گئے ،ادھر شمالی صوبہ قندوز میں بم پھٹنے سے 7طالبان جنگجو ہلاک اور 2دیگر زخمی ہوگئے،افغان اور غیر ملکی اسپیشل فورسز نے جنوبی صوبہ ہلمند میں طالبان کی جیل پر چھاپہ مار کر30 افراد کو بازیاب کروا لیا ،دوسری جانب افغان وزارت دفاع کے عہدیداروں نے اعتراف کیا ہے کہ طالبان عسکریت پسندوں نے اندھیرے میں دیکھنے والے آلات حاصل کیے ہیں تاہم حکام نے ان اطلاعات کی تصدیق کرنے سے گریز کیا ہے کہ طالبان کو یہ آلات مبینہ طور پر روس نے فراہم کیے ہیں۔افغان میڈیا کے مطابق مغربی صوبہ فراح میں طالبان نے سیکورٹی چیک پوائنٹس پر حملے کرکے 6پولیس اہلکاروں کو ہلاک کردیا جبکہ 8دیگر اہلکار زخمی ہوگئے۔سٹی پولیس کے ترجمان اقبال باہیر نے بتایا ہے کہ جھڑپوں کے دوران 8شدت پسند بھی مارے گئے۔جھڑپیں اس وقت شروع ہوئیں جب عسکریت پسندوں نے ضلع بالا بلوک کے علاقوں سربازار،وسات بازار،مندوائی اور فراح روڈ میں سیکورٹی چیک پوسٹوں پر حملے کیے۔ترجمان کا کہنا تھاکہ طالبان نے حملے کے دوران 2چیک پوسٹوں پر قبضہ کرکے اسلحہ اور گولہ بارودتحویل میں لے لیا۔طالبان ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ جنگجوؤں نے تین چیک پوسٹوں پر حملہ کرکے اسلحہ اور گولہ بارود اپنے قبضے میں لے لیا۔ادھر شمالی صوبہ قندوز میں بم پھٹنے سے 7طالبان جنگجو اس وقت ہلاک اور 2دیگر زخمی ہوگئے ۔افغان اور غیر ملکی اسپیشل فورسز نے جنوبی صوبے ہلمند میں طالبان کی جیل پر چھاپہ مار کر30 افراد کو بازیاب کروا لیا۔ حکام کا کہنا ہے کہ افغان اور غیر ملکی اسپیشل فورسز نے جنوبی صوبے ہلمند میں طالبان کی جیل پر چھاپہ مار کر کم از کم 30 افراد کو بازیاب کروا لیا ہے۔ جن افراد کو طالبان کی قید سے بازیاب کروایا گیا ان میں 12 سال سے کم عمر چار بچے اور دو پولیس اہلکار بھی شامل ہیں۔

مزید : علاقائی