تیسرا فیض انٹرنیشنل فیسٹیول اختتام پذیر ہو گیا

تیسرا فیض انٹرنیشنل فیسٹیول اختتام پذیر ہو گیا

لاہور(فلم رپورٹر)فیض فاؤنڈیشن ٹرسٹ کے تحت 17 سے 19 نومبرتک تیسرا فیض انٹرنیشنل فیسٹیول گزشتہ روز اختتام پذیر ہوگیا۔لاہورآرٹس کونسل کے اشتراک سے الحمرا میں منعقد ہونے والے اس فیسٹیول میں پینل مباحثے‘ موسیقی‘ کتابوں کی رونمائی‘ لیکچرز‘ شاعری‘ فوٹو گرافی،آرٹ کی نمائش،بچوں کیلئے آرٹ اور کہانی لکھنے کے سیشن‘ثقافتی ورثے کے علم برداروں کی یادآوری‘ ڈانس‘ تھیٹراورسائنس کی ورکشاپس منعقد ہوئیں۔فیض احمدفیض کی صاحبزادیوں سلیمہ ہاشمی،منزہ ہاشمی اورنواسے عدیل ہاشمی نے اس فیسٹول کو آرگنائز کیا تھا۔منزہ ہاشمی نے بتایاکہ اس فیسٹیول میں بہت سے مندوبین اور فنکار وں نے شرکت کی جن میں نمایاں سیاستدان‘ موسیقار‘ فلم ساز‘ اداکار‘ ڈرامہ نگار‘ ڈانسر‘ لکھاری‘ شاعر‘ دانشور‘ صحافی‘ انسانی حقوق کے علمبردار اور تجزیہ نگار شامل تھے۔ فیسٹیول میں زہرہ نگاہ‘ پران نیول‘حارث خلیق‘ مستنصر حسین تارڑ‘اصغر ندیم سید‘ مشرف زیدی اور سلمان رشید کے سیشن بھی شامل تھے۔فلم سازی میں شان‘ جاوید شیخ‘ سرمد کھوسٹ‘ نبیل قریشی‘ جامی اور بلال سمیع جبکہ اداکاروں میں ماہرہ خان‘ ثمینہ پیرزادہ‘ سمعیہ ممتاز‘ عرفان کھوسٹ اور بہار بیگم‘ موسیقاروں اور نغمہ نگاروں میں عارف لوہار‘ ثریا ملتانیکر‘ راحت ملتانیکر‘ جواد احمد اور ارشد محمود شامل تھے۔ پرفارمنسز میں اجوکا تھیٹر کا ڈ رامہ، طرز آرکسٹرا کی کلاسیکل ایسٹرن موسیقی‘سنگت تھیٹر کے دو پنجابی کھیل‘زنبیل کی ڈرامائی کہانی‘اْستاد شفقت علی خان کے ساتھ کلاسیکی موسیقی کی ایک شام‘ لوک ورثہ کی طرف سے بچوں کے لوگ گیت‘ پیانو پر مغربی کلاسیکل موسیقی کے ساتھ عدیل ہاشمی کی شاعری کی ریڈنگ اور فرح یاسمین اور لاہور گرامر سکول کی ڈانس پرفارمنس شامل تھے۔ٹینا ثانی‘ طاہرہ سید‘بشری انصاری نے بھی پہلی بار فیسٹیول میں شرکت کی۔ فیسٹیول کے تین خصوصی پروگراموں میں برطانوی گلوکارہ تانیہ ویلز کی اردو گائیکی‘ ناہل ال حلابی اور نفیس احمد کا شامی اور پاکستانی موسیقی کا حسین امتزاج اور فلسطینی ماہر تعمیرات شاتھا صفی اور کامران لاشاری کے ساتھ گفتگو شامل تھی۔فیسٹول کے آخری روز شرکا ء کا کہنا تھا کہ یہ ایک انتہائی خوبصورت کاوش ہے اور اس کو مستقبل میں بھی جاری رہنا چاہیے۔

مزید : صفحہ آخر