گیس کی بندش کے خلاف چوبرجی کے مکینوں کااحتجاجی مظاہرہ

گیس کی بندش کے خلاف چوبرجی کے مکینوں کااحتجاجی مظاہرہ

لاہور( خبرنگار) صوبائی دارالحکومت کے اکثر علاقوں میں گزشتہ روز گیس کا پریشر کم رہا ہے ۔ گیس کی بندش کے خلاف چوبرجی کے ارد گرد کی آبادیوں کے مکینوں نے چوبرجی چوک میں مظاہرہ کیا۔ اس موقع پر مکینوں نے بڑے بڑے بینرز اور کتبے اٹھا رکھے تھے۔ مظاہرین کا کہنا تھا کہ سردی شروع ہوتے ہی گیس کا پریشر کم کر دیا گیا ہے جبکہ ان کی آبادیوں کے قریب ہی جی او آر اورشادمان میں گیس کا پریشر برقرار ہے جبکہ ان کی آبادیوں میں گیس بند کر دی گئی ہے۔ اس موقع پر مظاہرین نے کہا کہ چوبرجی کے ارد گرد ابادیوں سمیت سمن آباد اوراچھرہ تک گیس کا پریشر کم کر دیا گیا ہے اورابھی سردی شروع ہی نہیں ہوئی کہ کھانا تیار کرنے کے اوقات میں گیس کا پریشر ڈاؤن ہو جاتا ہے جس کے باعث کھانا تیار نہیں کر پاتے ہیں۔ اس موقع پر مکینوں نے علاقہ سے منتخب نمائندوں کے خلاف بھی نعرے بازی کی اور مکینوں کا کہنا تھا کہ منتخب نمائندوں کو بھی متعدد بار شکایات کرچکے ہیں ، لیکن کوئی ٹس سے مس نہ ہے اور گیس حکام بھی کوئی شکایت نہیں سن رہے ہیں۔ دوسری جانب مظاہرین کے احتجاج کے باعث چوبرجی اورمزنگ جانے والی سڑکوں پر ٹریفک کا نظام درہم برہم رہا اورمکینوں کو شدید دشواری کا سامنا کرنا پڑا جبکہ گیس کی بندش کے حوالے سے سوئی گیس کمپنی کے ڈپٹی چیف انجینئر خرم علی نے ’’ پاکستان‘‘ کوبتایا کہ چوبرجی اورمزنگ کی آبادیوں میں گیس کی لائنیں کئی سال پرانی اورکئی کئی فٹ گہری ہیں اور سردیوں میں گیس کی ڈیمانڈ بڑھنے پر مین آبادیوں سے آگے اندرون آبادیوں میں گیس کا پریشر پہنچ نہیں پا رہا ہے جس کے لئے گیس کمپنی کی ٹیمیں ہنگامی بنیادوں پر کام کر رہی ہیں اور ان آبادیوں کا مسئلہ جلد حل کردیا جائے گا۔

مزید : صفحہ آخر