ٹرکوں ، ڈالوں کے ذریعے منتقل کیے جانیوالے سلنڈر چلتے پھرتے ’’بم‘‘ بن گئے

ٹرکوں ، ڈالوں کے ذریعے منتقل کیے جانیوالے سلنڈر چلتے پھرتے ’’بم‘‘ بن گئے

ملتان ( سٹاف رپورٹر )ایل پی جی غیر قانونی طورپر ری فل کرنے کی دکانوں پر ایک سلنڈرمیں 11سے 40کلو تک گیس ہوتی ہے ۔ہر دکان پر کئی کئی سلنڈر پڑے ہوتے ہیں۔ یہ سلنڈرٹرکوں اور ڈالوں پر غیر محفوظ طریقے سے منتقل کئے جاتے ہیں اس طرح یہ سلنڈرچلتے پھرتے بم ہیں (بقیہ نمبر50صفحہ7پر )

جن کی غیرقانونی طور پر منتقلی اور دکانوں پر رکھنا خوفناک رسک ہے ۔ ایل پی جی کی غیر قانونی ری فلنگ پرضابطہ فوجداری کی دفعہ285۔286 کے تحت پرچہ درج کیاجاتا ہے مگر یہ دکانیں پولیس اور سول ڈیفنس افسروں و اہلکاروں کے لئے کمائی کا ذریعہ بنی ہوئی ہیں ۔ضلع ملتان میں ایل پی جی کی غیر قانونی فلنگ کی دکانوں سے ماہانہ 10لاکھ روپے سے زائد منتھلی اکٹھی کی جا رہی ہے ۔ دکانداروں کا کہنا ہے کہ انہوں نے 2‘2ہزار روپے لے کر سول ڈیفنس والوں سے’’ اجازت نامہ‘‘لیا ہے جبکہ وہ باقاعدگی سے سول ڈیفنس اور پولیس والوں کو منتھلی دیتے ہیں ۔ منتھلی کی رقم 2سے5 ہزار روپے تک ہے ۔منتھلی کی رقم کا تعین کاروبار کے مطابقکیا گیا ہے ۔اس لئے وہ سرعام یہ دھندہ جاری رکھے ہوئے ہیں ۔

بم

مزید : ملتان صفحہ آخر