بٹ خیلہ گندگی کے ڈھیر میں تبدیل ،نوٹس لینے کا مطالبہ

بٹ خیلہ گندگی کے ڈھیر میں تبدیل ،نوٹس لینے کا مطالبہ

بٹ خیلہ ( بیورو رپورٹ ) بٹ خیلہ نہرشہر یوں کی بے حسی جبکہ ٹی ایم اے محکمہ ایریگیشن اور انتظامیہ کی نا اہلی کی وجہ سے گند گی کے ڈھیر میں تبد یل ہو گئی ہے نہر کے دونوں کناروں پر آبادلوگوں اور دکانداروں نے اس میں کوڑے کرکٹ ڈالنا روز کا معمول بنالیاہے ماضی میں علاقے کی خوبصورتی میں اضا فہ کرنے والی یہ نہر اب شہر کے چہرے پر بد نما داغ کی مانند ہے جبکہ اس کا نیلگوں صاف شفاف پا نی نہ صرف گدلا بلکہ مضر صحت ہو چکاہے ماضی میں نہر کے دونوں کنارے پر سرسبزوشاداب گھاس ہوا کر تا تھا اور شام ڈھلتے ہی بچوں و نوجوانوں کی ٹولیاں یہاں بیٹھ کر خوش گپیوں میں مشغول ہواکر تیں تھیں تاہم بدلتے وقت کے ساتھ ساتھ جس طرح عوام کے ساتھ اپنے ماحول اور اردگرد کو صاف ستھرا رکھنے کیلئے وقت نہیں بالکل اسی طرح علاقے کی صفائی ستھرائی اور نہر کی نگرانی کے ذمہ دار ادارے یعنی ٹی ایم اے ایریگیشن اور مقا می انتظامیہ بھی عوام کی طرح بے حس ہو گئی ہے دریائے سوات سے اماندرہ ہیڈورکس سے نکلنے والی اس نہر میں اب پانی کم جبکہ گند گی و غلاظت ہو تی ہے قریبی اکثر گھروں کے گڑوں کے منہ بھی یہاں کھلتے ہیں جبکہ مقامی قصائی نے اسے انتڑیوں اور اوجڑیوں کا مسکن بنا دیا ہے اور رہی سہی کسرفروٹ و سبزی فروشوں نے اس میں اپنا گند ڈال کر پوری کر دی ہے یہاں یہ ا مر قبل ذکر ہے کہ نہر اور پانی کے ذخیروں کو آلودہ کرنا باقاعدہ جرم ہے اورمتعلقہ مجسٹریٹ زیر دفعہ133کے تحت تادیبی کاروائی کا مجاز ہے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر