ڈیرہ،سی آر بی میں میرٹ کی دھجیاں اڑا دی گئیں

ڈیرہ،سی آر بی میں میرٹ کی دھجیاں اڑا دی گئیں

  



ڈیرہ اسماعیل خان (بیورو رپورٹ)پاکستان تحریک انصاف کے دور میں محکمہ ایری گیشن سی آر بی سی ڈویژن ڈیرہ میں میرٹ کی دھجیاں اڑا دی گئیں ‘ عرصہ دراز سے محکمانہ ترقی کے منتظر میٹ ‘ ورک منشی ‘ بیلدار اور گیج ریڈر کو نظر انداز کر کے من پسند افراد کو ناجائز اور غیر قانونی ترقی دیدی گئی ‘ محکمہ اینٹی کرپشن ڈیرہ کو متعلقہ ایکسین کیخلاف اس غیر قانونی اقدام کرنے پر 85لاکھ روپے نذرانہ لیے جانے کے انکشاف پر تحریری درخواست دینے کے باوجود بھی کاروائی نہ ہو سکی ۔ محکمانہ ترقی کمیٹی (ڈی پی سی) کے اجلاس کے بغیر ترقی دینے پر ڈی جی اینٹی کرپشن خیبرپختونخواہ نے ایکشن لے لیا ‘ ڈی پی سی کے اجلاس میں شامل ا فسران کے عزیز و اقارب کو ترقی دینے کے لئے طلب کردہ کمیٹی کے اجلاس میں ایک اعلیٰ افسر کے اعتراض کے بعد منسوخ ہونے والے اجلاس کے باوجود بھی ایک شخص کو بیلدار بھرتی کر لیا گیا ‘ساؤتھ ایری گیشن خیبرپختونخواہ کے آفیسر کی آشیرباد کی بنا پر متعلقہ آفیسر کے خلاف کاروائی نہ ہوسکی متعلقہ آفیسر نے ایری گیشن میں تعینات اپنے رشتہ داروں سمیت ایری گیشن پہاڑ پور ڈویژن میں تبادلے کرا لئے اور متعلقہ ریکارڈ بھی اپنے ہمراہ لے گئے محکمہ اینٹی کرپشن ڈیرہ کے بارہا رابطہ کرنے کے باوجود بھی ایری گیشن حکام نے ریکارڈ حوالے نہیں کیا ہے ۔ تفصیلات کے مطابق اراضیات کو سیراب کرنے کیلئے محکمہ ایری گیشن کام کر تا ہے بھل صفائی جیسی مہم سمیت دیگر محکمے کی کارکردگی صرف فائلوں کی حد تک محدود رہ گئی ہے جبکہ موقع پر کچھ بھی نہیں ہوتا ہے آمدہ اطلاعات کے مطابق محکمہ ایری گیشن سی آر بی سی ڈویژن میں عرصہ 20سال سے کئی بیلداروں کو اعلیٰ افسران نے ترقی سے محروم کیا ہوا ہے اسی طرح عرصہ 14سال پہلے کئی افراد کو میٹ بھرتی کیا گیا قانونی طور پر میٹ کو ورک منشی پر ترقی دینے کیلئے دورانیہ بھی مکمل ہو چکا تھا اس سلسلے میں ایس سی ایری گیشن بنوں کو متاثرہ ملازمین نے تحریری طور پر اس ضمن میں آگاہ کیا ترقی دینے کی بجائے ان متاثرہ ملازمین کو شوکاز نوٹس جاری کر دیئے گئے اور ساتھ ہی اعلیٰ افسران تک رسائی کرنے پر انکوائریوں کا آغاز بھی کر دیا دوسری طرف ان افسران نے ڈی پی سی کا اجلاس کئے بغیر انتہائی جونیئر ملازمین کو ترقی دے دی جس کا محکمہ اینٹی کرپشن کو تاحال ریکارڈ نہیں مہیا کیا گیا ہے جن ملازمین کو ترقی دی گئی ان کی مدت ملازمت زیادہ سے زیادہ 1سال بتائی جاتی ہے اس سلسلے میں محکمہ اینٹی کرپشن کو دی جانے والی تحریری درخواست میں الزام لگایا گیا ہے کہ ترقی دینے کے سلسلے میں 85لاکھ روپے متعلقہ آفیسر نے وصول کئے ‘ محکمہ اینٹی کرپشن ڈیرہ کی جانب سے کوئی کاروائی نہ ہو نے پر ڈی جی اینٹی کرپشن خیبرپختونخواہ سے رابطہ کیا گیا جنہوں نے فوری طور پر انکوائری کا حکم دیدیا۔ انکوائری شروع ہونے پر متعلقہ محکمے نے ریکارڈ دینے سے یکسر انکار کر دیا ان کے مطابق متعلقہ ذمہ دار آفیسر اپنے تبادلے کے ہمراہ ریکارڈ لے گئے ہیں۔ جبکہ متعلقہ ایکسین اپنے عزیز و اقارب کے ہمراہ ایری گیشن پہاڑ پور میں تبادلے کرا چکے ہیں دوسری جانب حالیہ ڈی پی سی کے طلب کردہ اجلاس میں محکمہ ایری گیشن کے افسران کے عزیز و اقارب کو ترقی دینے کے انکشاف پر اجلاس میں شامل ایک آفیسر نے سیخ پا ہو کر اپنے دستخط کرنے سے انکار کر دیا جس کے بعد ڈی پی سی کا اجلاس منسوخ ہو گیا مگر اس کے باوجود بھی پروآ کے رہائشی کو بیلدار بھرتی کر دیا گیا ہے۔ ساؤتھ ایری گیشن خیبرپختونخواہ کے آفیسر کی قربت کی بنا پر تاحال مذکورہ آفیسر کیخلاف کاروائی سرخ فیتے کا شکار ہے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر